اہم نوٹ



”ہر کام اللہ کی مرضی سے نہیں ہوتا“ کہنا کیسا؟

سُوال:کیا فرماتے ہیں علمائے دین و مُفتیانِ شرعِ متین اس مسئلے کے بارے میں کہ زید  نے اپنے دوست بکر سے کہا:”یہ چیز تمہیں نہیں مل سکتی۔“ بکر نے جواب دیا:”اللہ چاہے گا تو مل جائے گی۔“ زید نے کہا:”ہر کام اللہ کی مرضی سے نہیں ہوتا، کچھ کاموں میں بندوں کا بھی اختیار ہوتا ہے۔“ سوال یہ پوچھنا ہے کہ بکر کا یہ جواب کیسا ہے؟


شیخِ طریقت، امیرِ اَہلِ سنّت، بانیِ دعوتِ اسلامی حضرت علامہ مولانا ابو بلال محمد الیاس عطّاؔر قادری رضوی دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ نے دعوتِ اسلامی کی علمی وتحقیقی مجلس اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَہ کے قیام کا بنیادی مقصد امامِ اَہلِ سُنَّت، اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان علیہ رحمۃ  الرَّحمٰن کی تصانیف کو  جدید اُسلوب میں شائع کرنا بھی بیان فرمایا  ہے۔ اِسی لئے اِبتدا سے ہی اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَہ میں ایک شعبہ ” کُتُبِ اعلیٰ حضرت“ قائم ہے۔ جس نے اعلیٰ حضرت علیہ رحمۃ ربِّ العزّت کی کئی کُتُب پر کام کیا ہے  انہی کُتُب میں سے ایک جَدُّالْمُمْتَار بھی ہے۔


”خیبر“ ایک بڑے شہر کا نام ہے جو مدینۂ منوّرہ  زاد ہَااللہ شرفاً وَّ تعظیماً سے (شمال مغرب میں) تقریباً169کلومیٹر کی دوری پر واقع ہے۔ یہ جگہ کھجور کے درختوں اور ہرے بھرے کھیتوں سے بھرپور تھی، یہاں بہت سے مضبوط قلعے بھی بنے ہوئے تھے۔ (سیرت حلبیہ،ج3،ص45)

 


رِشتہ دیکھنے کا کام بڑی احتیاط سے کرنا چاہئے لیکن بعض لوگوں کا انداز سامنے والے کے لئے تکلیف دہ ہوجاتا ہے مثلاً جو عورتیں رشتہ دیکھنے جاتی ہیں کبھی لڑکی کو چَلا کر دیکھیں گی کہ کہیں لنگڑاتی تو نہیں، دھوپ میں لے جاکر اس کے گورے رنگ کے اصلی ہونے کا یقین کریں گی، بعض تو حد ہی کردیتی ہیں کہ منہ کھلوا کر دانت چیک کرتی ہیں۔

 


صالحین سے مخلوق کی محبت

ارشادِ باری تعالٰی ہے:(اِنَّ الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا وَ عَمِلُوا الصّٰلِحٰتِ سَیَجْعَلُ لَهُمُ الرَّحْمٰنُ وُدًّا(۹۶)) ترجمہ:بیشک وہ جو ایمان لائے اور نیک اعمال کئے عنقریب رحمٰن ان کے لیے محبت پیدا کردے گا۔(پ16،مریم:96)

تفسیر: اس آیتِ مبارَکہ کی تفسیر میں اکثر مفسّرین نے بخاری و مسلم کی ذیل میں درج حدیثِ پاک بیان فرمائی ہے

اللّٰہ تعالٰی سے مُعافی مانگنے کا بہترین وقت/ مدینے شریف یا اجمیر شریف کی انگوٹھی پہننا کیسا؟/ بطخ  کھانا کیسا؟

اللّٰہ تعالٰی سے مُعافی مانگنے کا بہترین وقت

سوال: اللّٰہ تعالٰی سے مُعافی مانگنے کے لئے سب سے بہترین وقت کونسا ہے؟

جواب:اگر بتقاضائے بَشَرِیَّت کوئی گناہ سَرزَد ہوجائے تو اُسی وقت توبہ کرنا واجب ہے اور اللّٰہ تعالٰی سے معافی مانگنے کا بہترین وقت بھی یہی ہے کہ گناہ ہوتے ہی فوراً توبہ کرلی جائے۔

تذکرۂ حضرت سیدنا عمار  بن یاسر رضیَ اللہُ تعالٰی عنہما

ایک صحابی رضیَ اللہُ تعالٰی عنہفرمانے لگے:میں نے رسولُ اللّٰہ صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کی ہمراہی میں شیطان اور انسان سے جنگ لڑی ہے ، کسی نے حیرت سے پوچھا: انسان سے جنگ لڑی ہے یہ تو سمجھ میں آتا ہے مگر شیطان سے کس طرح جنگ لڑی؟ ارشاد فرمایا:ایک مرتبہ ہم نے دورانِ سفر کسی جگہ پڑاؤ کیا  تو میں نے اپنا مشکیزہ اٹھایا اور پانی بھرنے کےلئے چل پڑا ، مجھے دیکھ کر نبی کریم صلَّی اللہُ تعالٰی علیہِ واٰلہٖ وسَلَّم نے فرمایا: کوئی تمہارے  پاس آئے گا اور پانی بھرنے سے روکے گا۔

جذباتیت

انسانی جسم سر سے لے کر پاؤں تک بے شمار نعمتوں کا مجموعہ ہے، رنگوں اور مناظرِ قدرت کو دیکھتی آنکھیں، ہرآواز اور آہٹ کو سنتے کان، غم اور خوشی کے جذبات رکھنے والا دل اور لفظوں کے موتی بکھیرتی زبان اَلغَرض ہر نعمت بڑی عظیم ہے۔ یونہی رب عَزَّ  وَجَلَّنے ہر  انسان کو مختلف خوبیاں عطا فرمائی ہیں لیکن  ان سب میں سے افضل خوبی عقل ہے۔(فیض القدیر،ج5،ص566،  تحت الحدیث: 7901)

ماہنامہ صفر المظفر کی ویڈیوز لائبریری



ماہنامہ صفر المظفر کی بُک لائبریری