بزرگان دین کے مبارک فرامین

Image
رَجَب المُرَجَّب کی15تاریخ کو عاشقانِ صحابہ و اہلِ بیت آپ رحمۃُ اللہ علیہ کے ایصالِ ثواب کے لئے کھیر پوریوں کی نیاز کا اہتمام کرتے ہیں جسے عرفِ عام میں ” کونڈوں کی نیاز “ سے جانا جاتا ہے۔
Image
کیا تمہیں معلوم ہے کہ تم ایک مقررہ مدت میں صبح و شام بسر کر رہے ہو ! اُس بات میں کوئی بھلائی نہیں جس سے اللہ پاک کی رضا مقصود نہ ہو۔اُس مال میں کوئی بھلائی نہیں جسے راہِ خدا میں خرچ نہ کیا جائے ۔
Image
ولیُّ اللہ کی اگر عزت میں اضافہ ہوتو اس کی عاجزی بڑھ جاتی ہے ، اگر مال میں اضافہ ہو تو اس کی سخاوت بڑھ جاتی ہے اور اگر عمر زیادہ ہو تو ( عملِ آخرت کی ) کوششیں بڑھ جاتی ہیں۔
Image
اے اللہ کے بندے ! تو دوسروں کی وعظ و نصیحت کے آسرے پر رہنے کے بجائے خود بھی اپنے نفس کو نصیحت کر کیونکہ دوسروں کی نصیحت تیرے ظاہر کے اعتبار سے ہوگی
Image
مذکورہ پانچ روایات میں حضورِ اکرم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کے مزارِ اقدس سے باہر آنے اور میدانِ محشر میں تشریف لانے کا ذکر ہے۔ شفیعِ محشر کی میدانِ محشر میں آمد
Image
عورت گھر میں ایسی ہے جیسے چمن میں پھول اور پھول چمن میں ہی ہر ابھرا رہتا ہے اگر توڑ کر باہر لایا گیا تو مرجھا جائے گا۔ اسی طرح عورت کا چمن اس کا گھر
Image
مُتکبّر انسان کی عبادت قابلِ قبول نہیں ہوتی ، تکبّر اللہ پاک کی ناراضی کا سبب اور ایمان کےلئے نقصاندہ ہے ، تکبر انسان کو اللہ پاک کی معرفت سے محروم رکھتا اور ذلیل و خوار کرتا ہے ۔
Image
اکثر لوگ اپنے نسب پر فخر کرتے ہیں ، گویا کہ قیامت کا انہیں کچھ ڈر نہیں ہوتا اور وہ یہ نہیں جانتے کہ اعمالِ صالحہ کے بغیر کوئی چارہ نہیں ۔ سالک کو چاہئے
Image
جس قوم کو کثیر مال دیا جاتاہے تو ان کے درمیان بغض و عداوت ڈال دی جاتی ہے۔