بزرگان دین کے مبارک فرامین

Image
(1)اِرشاد ِامیرُ المؤمنین حضرتِ سَیّدُنا عمر فاروقِ اعظم رضی اللہ تعالٰی عنہ:”تو بہ کر نے والوں کی صحبت میں بیٹھو کہ وہ سب سے زیادہ نرم دل ہوتے ہیں۔‘‘(مصنف ابن ابی شیبہ،ج19،ص145، حدیث:35606)
Image
ارشادِ سَیِّدُنا وَہْب بن مُنَبِّہ رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ: شیطان کو اولادِ آدم میں زیادہ سونے اور زیادہ کھانے والا سب سے زیادہ پسند ہے۔(حلیۃ الاولیاء، ج 4،ص61)
Image
(1)ارشادِسَیِّدُناسلیمان علیہ السَّلام: اے بیٹے! زیادہ غُصّہ کرنے سے بچ کیونکہ زیادہ غُصَّہ کرنا بُردبار (برداشت کرنے والے) آدمی کے دل کوکمزورکردیتاہے۔(الزواجر عن اقتراف الکبائر،ج1،ص 106)
Image
 (1)ارشادِ سیدنا محمد بن علی باقر علیہ رحمۃُ اللہ الغَافِر:”تمہارے بھائی کے دل میں تمہاری کتنی مَحبَّت ہے اس کا اندازہ تم اس بات سے لگاؤ کہ اپنے بھائی کی تمہارے دل میں کتنی مَحبَّت ہے۔“
Image
(1)ارشادِ امیرالمؤمنین سیّدنا علی المرتضیٰ کرَّم اللہُ تعالٰی وجھَہُ الکرِیم:(عید کے دن فرمایا) ہر وہ دن جس میں اللہ عَزَّوَجَلَّ کی نافرمانی نہ کی جائے ہمارے لئے عید کا دن ہے۔(قوت القلوب،ج2،ص38)
Image
(1)عمل سے بڑھ کر اس کی  قبولیت کا اہتمام کرو اس لئے کہ تقویٰ کے ساتھ کیا گیا تھوڑا عمل بھی بہت ہوتا ہے اور جو عمل  مقبول ہوجائے  وہ کیونکر تھوڑا ہوگا۔(حلیۃ الاولیاء،ج1، ص117،رقم:232)
Image
(1)ارشادِ سَیِّدُنا سلیمان بن داؤدعَلٰی نَبِیِّنَاوَعَلَیْہِما الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام: جھگڑے سے بچنا! کیونکہ اس میں کوئی فائدہ نہیں بلکہ یہ بھائیوں کے درمیان دشمنی کو بھڑکاتا ہے۔(تاریخ دمشق، ج22، ص286)
Image
(1)ارشادِ مولامشکل کُشا علیُّ المرتضیٰ کَرَّمَ اللہُ وَجْہَہُ الْکَرِیْم: دنیا میں تمہارے لئے سب سے اچھی چیز وہ ہے جس کے ذریعے تم اپنی آخرت سنوارو۔(احیاء العلوم،ج5، ص135)
Image
(1)ارشادِ صدّیقِ اکبررَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ:اے لوگو!بھلائی کا حکم دو،بُرائی سے منع کرو، تمہاری زندَگی بخیرگزرے گی۔ (تفسیرِ کبیر،ج3، ص316)