اسلامی عقائد و معلومات

Image
امام زرقانی رحمۃ اللہ علیہ (وفات:1122ھ) فرماتے ہیں: ہمارے نبیِّ مُکرّم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم غیب جانتے ہیں(مزید فرماتے ہیں: قراٰنِ پاک میں) جہاں (علمِ غیب کی) نفی ہے وہ علمِ ذاتی کی ہے جو بے واسطہ ہوتا ہے لیکن حضرت سیّدِ عالَم
Image
قراٰن و حدیث سے ہمارے پیارے نبی صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کے علمِ غیب شریف کا بیان  پچھلے شماروں میں ہوچکا۔اب علما و اولیا اور محدثینِ کرام کے اقوال و تصریحات کی روشنی میں مصطفےٰ کریم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کے ثبوتِ علمِ غیب کے نور سے اپنے دِل و دِماغ کو پُرنور کیجئے 
Image
علمِ غیب کی تعریف اور حضور نبیِّ کریم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کو اللہ کریم کی بارگاہ سے علمِ غیب عطا ہونے کا بیان قراٰنِ پاک کی آیات کی روشنی میں گزشتہ شمارےمیں گزرا،آئیے! اب پیارے نبی صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کے علمِ غیب کا بیان احادیثِ مبارکہ کی روشنی میں  پڑھئے اور
Image
امام حسین بن مسعود بَغَوی (سالِ وفات: 510ھ) نے تفسیر ِمعالمُ التنزیل،243/4 پر، امام عبدالرّحمٰن ابنِ جوزی (سالِ وفات:597ھ) نے تفسیر ِزاد المسیر،جز اوّل، 304/4 پر ،علامہ ثناء اللہ نقشبندی (سالِ وفات: 1225ھ) نے تفسیرِ مَظہری، 123/9 پر
Image
غیب کی تعریف غیب کے (لفظی) معنی ہیں: غائب یعنی چُھپی ہوئی چیز۔ غیب وہ ہے جو ہم سے پوشیدہ ہو اور ہم اپنے حَوّاسِ خَمسہ یعنی دیکھنے، سُننے، سونگھنے، چکھنے اور چُھونے سے نہ جان سکیں اور غور و فکر سے عَقل اُسے معلوم نہ کرسکے۔(ملخص از تفسیرِ بیضاوی،ج 1،ص114 وغیرہ)
Image
 ہمارے پیارے نبی صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کی شفاعتیں کئی طرح کی ہوں گی چنانچہ حضرت علّامہ شیخ عبدُالحقّ مُحَدِّث دِہلَوی علیہ رحمۃ اللہ القَوی شفاعت کی قسمیں بیان کرتے ہوئے فرماتے ہیں: شَفاعت کی پہلی قسم شَفاعَتِ عُظْمیٰ ہے۔
Image
اللہ پاک نے ہمارے پیارے نبی صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم  کو بے شمُار کمالات سے نوازا ہے۔
Image
عقیدہ عرش ایک عظیم، بلند، نورانی مخلوق ہے ۔عرش و کرسی پر ایمان لانا واجب ہے۔
Image
پُل صراط کا منظر نبیِّ پاک صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّمنے فرمایا: جہنَّم پر ایک پُل ہے جو بال سے زِیادہ باریک اور تلوار سے زیادہ تیز ہے