حمدونعت و منقبت

Image
ہمارے دل سے زمانے کے غم مِٹا یارب/قمر کے دو کیے انگلی سے طاقت اس کو کہتے ہیں/واہ کیا مرتبہ اے غوث ہے بالا تیرا
Image
مُعاف فضل و کرم سے ہو ہر خطا یا رب/بِحَمْدِاللہ عَبْدُاللہ کا نورِ نظر آیا/منانا جشنِ میلادُ النّبی ہر گز نہ چھوڑیں گے
Image
حُبِّ دنیا سے تُو بچا یارب -عرشِ حق ہے مسندِ رفعت رسول اللہ کی- واہ کیا بات اعلیٰ حضرت کی
Image
یا خدا میری مغفرت فرما/اے شَہَنشاہِ مدینہ اَلصَّلوٰۃُ وَالسَّلَام./باغِ جنّت کے ہیں بہرِ مَدْح خوانِ اہلِ بیت
Image
یا خدا حج پہ بُلا آکے میں کعبہ دیکھوں/ چمک تجھ سے پاتے ہیں سب پانے والے/ ضیاء پیر و مرشد مرے رہنما ہیں
Image
مِٹا دے ساری خطائیں مِری مٹا یاربّ/ نہ ہو آرام جس بیمار کو سارے زمانے سے/ انبیا کو بھی اَجَل آنی ہے
Image
یا رَبّ! پھر اوج پر یہ ہمارا نصیب ہو/ ماہِ طیبہ نَیّرِ بطحا  صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم/ آبروئے مومناں احمد رضا خاں قادری
Image
محبت میں اپنی گُما یا الٰہی/ ارادے گُدگُداتے ہیں/ یا علیَّ الْمرتضیٰ مولیٰ علی مشکلکُشا
Image
اللہ کوئی حج کا سَبَب اب تو بنادے/ سرور کہوں کہ مالک و مولیٰ کہوں تجھے/ ہمارے آقا ہمارے مولیٰ امامِ اعظم ابوحنیفہ