تاجروں کےلئے

Image
پیارے اسلامی بھائیو! قراٰنِ مجید میں ہر چیز کا بیان موجود ہے ، ارشادِ باری تعالیٰ ہے : (وَ نَزَّلْنَا عَلَیْكَ الْكِتٰبَ تِبْیَانًا لِّكُلِّ شَیْءٍ) ترجَمۂ کنزُ العرفان :
Image
آج کل ہر کوئی یہ چاہتا ہے کہ میرا کاروبار خوب پھلے پھولے۔ کاروبار کی کامیابی کے جہاں اور اسباب ہیں وہاں ”وعدے“ کی پاسداری بھی بڑی اہمیت کی حامل ہے۔
Image
منافع حاصل کرنے کی نیت سے مال کی خرید و فروخت کرنا ”تجارت“ ہے۔ مسلمانوں کی کثیر تعداد روزی کمانے کے لیے ”تجارت“ کو ذریعہ بناتی ہے اور ہمارے بزرگانِ دین
Image
دینِ اسلام نے جہاں ہمارے خاندانی،مُعاشرتی،اَخلاقی نظام کو بہتر بنانے میں ہماری رہنمائی کی ہے وہیں معاشی وتجارتی مُعاملات کوبحسن وخوبی انجام دینے کیلئے بھی کئی زَرّیں اُصول عطا فرمائے ہیں۔
Image
اپنے اور اپنے بال بچوں کی کفالت کے لیے بقدرِ ضرورت حلال روزی کمانا فرض ہے۔ حلال روزی کمانے کے بہت سے ذَرائع ہیں جن میں سے ایک بہترین ذَرِیعہ ”تجارت“ ہے۔
Image
رسولِ کریم ، رؤف رّحیم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم ہر ہر معاملہ میں کامل و اکمل ہیں ، آپ صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم نے زندگی کے ہر شعبے میں ہماری راہنمائی فرمائی ہے
Image
تجارت کو اپنا ذریعۂ معاش بنانے والے صحابۂ کرام علیہمُ الرّضوان میں امیرُ المؤمنین حضرت عمر فاروقِ اعظم رضی اللہُ عنہ کے شہزادے حضرت عبدا للہ رضی اللہُ عنہ بھی شامل ہیں ،
Image
حضرت زاہر بن حرام رضی اللہُ عنہ ایک بَدوی یعنی دیہات کے رہنے والے صحابی ہیں۔