تذکرۂ صالحات

Image
پیارے آقا، مدینے والے مصطفےٰ صلَّی اللہ  علیہ واٰلہٖ وسلَّم  کی چچی جان اور حضرت سیّدُنا  علی المرتضی شیرِ خدا رضی اللہ عنہ کی والدہ ماجدہ حضرت سیّدتُنا  فاطمہ بنت اسد رضی اللہ عنہا تاریخ اسلام  کی ایک اہم ہستی ہیں ۔ آپ رضی اللہ  عنہا کے والد کا نام اسد بن ہاشم بن 
Image
نبیِّ کریم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کے ساتھ نکاح سے چند روز پہلے آپ رضی اللہ عنہا نے ایک خواب دیکھا جس کے متعلق آپ خود ارشاد فرماتی ہیں:گویا کہ ایک چاند مدینۂ منوّرہ زادہَا اللہ شرفاً وَّ تعظیماً 
Image
 اُمُّ المؤمنین حضرت سیّدَتُنا خدیجۃُ الکبریٰ رضی اللہ عنہا کے بعد سب سے پہلے قبولِ ایمان کا شرف پانے والی جلیلُ القدر صحابیہ ”حضرت سیّدَتُنا اُمِّ فَضل لُبابہ رضی اللہ عنہا“ ہیں۔
Image
اُمُّ المؤمنین حضرت سیّدَتُنا خدیجۃُ الکبریٰ رضی اللہ عنہا کے انتقال کے بعد حضرت سیّدَتُنا خَولہ بنتِ حکیم رضی اللہ عنہا مکّۂ مکرّمہ کے ایک معزز گھرانے کی صاحبزادی کے لئے رسولُ اللہ صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کا پیغامِ نکاح لے کر گئیں، 
Image
ایک دن حُضور نبیِّ کریم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم حضرت اُمِّ سُلیم رضی اللہ عنہا کے گھر تشریف لائے اور ایک مَشکیزے سے پانی پیا، حضرت اُمِّ سُلیم رضی اللہ عنہا نے مَشکیزے کے اُس حصّے کو کاٹ کر بطورِ تبرک 
Image
حضرت حنّہ رضی اللہ عنہا کے ہاں اولاد نہ تھی۔ ایک روز آپ نے درخت کے سائے میں ایک چڑیا دیکھی جو اپنے بچّے سے پیار کر رہی تھی اور اسے دانہ کھلا رہی تھی۔ یہ منظر دیکھ کر آپ کا دل بَھر آیا اور بارگاہِ الٰہی میں اولاد کی دعا کی
Image
نیکی،اچّھا سلوک،بھلائی،مہربانی،عطا،عنایت اورنوازش جیسی تمام خوبیوں کو کسی ایک لفظ سے تعبیر کرنا ہو تو اُسے احسان کہہ سکتے ہیں۔حضورِاکرم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کے اپنے اُمّتیوں پر بے شمار احسانات ہیں،اسی طرح حضورِ اکرم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی مقدّس و پاکیزہ بیویوں 
Image
وہ شخصیات جنہوں نے سرکارِ مکّۂ مکرّمہ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی شفقتوں اور آپ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کے فیض ِصحبت سے وافر حصہ پایا ان میں سے ایک نام حضرت سیّدتُنا اُمِّ ہانی رضی اللہُ عنہا کا بھی ہے۔نام و نسب آپ رضی اللہُ عنہا 
Image
حضرت سیّدتنا  اُمِّ حَرام بنتِ مِلْحان رضی اللہ عنہا