کتاب زندگی

Image
مہینے کے آخری دن تھے ، سلمان گھر پہنچا تو چھوٹے بیٹے فاروق کو پھر بُخار تھا
Image
ماہنامہ فیضانِ مدینہ کے قارئین!
Image
ستاذ صاحب(Teacher) نے وائٹ بورڈ پر ایک لائن کھینچی اورطَلَبہ(Students) سے پوچھنے لگے:آپ میں سے کون اس لائن کو چُھوئے اور مٹائے بغیر چھوٹا کرسکتا ہے؟ایک طالبِ عِلْم نے فوراً عرض کی:
Image
ایک دن بادشاہ (King)نے بڑا عجیب وغریب حکم دیا: ملک بھر سے بے وقوفوں کو اکٹّھا کیاجائے، ان میں سے جو سب سے بڑا بے وقوف (Fool)ہوگا اُسے انعام دیا جائے گا۔
Image
ایک ٹیچر نے اپنی کلاس کے 60اسٹوڈنٹس کو ایک ایک غُبارے (Balloon)میں ہوا بھرنے کا کہا، پھر ہر غُبارے پر اس طالبِ علم کا نام لکھوا کر تمام غُبارے ایک کمرے  میں ڈَلوا دئیے پھر اسٹوڈنٹس سے مخاطِب ہوا:
Image
جامعۃُ المدینہ کے چوتھے دَرَجے (کلاس)میں فِقْہ (شَرْعی مسائل) کا پیریڈ جاری تھا، سبق ختم ہوا تو طَلَبہ نے ”اُستاذ صاحب“ سے درخواست کی کہ اگلا پیریڈ شُروع ہونے میں  چند منٹ باقی ہیں، لہٰذا کچھ سبق ”کتابِ زندگی“