ہماری کمزوریاں

Image
کم وبیش 12سو سال پہلے کے بُزرگ حضرت سیّدنا معروف کرخی رحمۃُ اللہِ علیہ کچھ لوگوں کے ساتھ دریائے دجلہ کے کنارے جا رہے تھے
Image
ایک بوڑھے آدمی نے ڈاکٹر سے کہا کہ میری نگاہ کمزور ہوگئی ہے ،
Image
کہتے ہیں : ایک شخص نے صابن کا کاروبار شروع کیا ، کچھ ہی عرصے میں اس کی پراڈکٹ مقبول ہوگئی ، گاہگوں کی ڈیمانڈ پوری کرنے کے لئے چھوٹی سی فیکٹری میں ڈبل شفٹ میں کام ہونے لگا۔
Image
بنی اِسرائیل کا ایک شخص جو بہت گناہ گار تھا ایک مرتبہ بہت بڑے عابد (یعنی عبادت گزار) کے پاس سے گزرا جس کے سر پر بادَل سایہ کیا کرتے تھے۔
Image
بحری جہاز کے کیپٹن کی سلیکشن کے لئے انٹرویو کا سلسلہ جاری تھا ، سلیکشن کمیٹی  کا سربراہ ہر امیدوار سے ایک سُوال ضرور پوچھتا کہ 
Image
خودکشی یا کسی کو ناحق قتل کرنا دونوں ہی ناجائز و حرام ہیں۔ یہ افسوس ناک واقعہ دل میں پیدا ہونے والی نفرت وعداوت کا نتیجہ ہے ،
Image
نبیِّ کریم  صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم  نے فرمایا : اسلام پانچ چیزوں پر قائم کیا گیا ،
Image
ہر شخص کا کسی شے کو دیکھنے ، پرکھنے اور اس کے بارے میں سوچنے کا انداز دوسرے سے مختلف ہوتا ہے کیونکہ ہرانسان کی عمر ، تعلیم ، تجربہ اور مہارت الگ ہوتی ہے ،
Image
سَر راشد ایک مشہور اسکول میں سینئر ٹیچر تھے ، ان کی کلاس میں ایک نیا اسٹوڈنٹ شکیل داخل ہوا جس کے والد اس شہر میں ٹرانسفر ہوکر آئے تھے۔