تذکرۂ صالحین

Image
مُحدِّث،مُفَسِّر، علّامہ جمالُ الدین ابوالْفَرَج عبدالرحمٰن بن جَوْزی علیہ رحمۃ اللہ القَوی تاریخِ اسلام کی ایک مایہ ناز شخصیت ہیں۔
Image
 بحیثیتِ مسلمان یہ بات قابلِ اِفْتِخار ہے کہ  ہماری تاریخ ایسی جلیل ا لقدر  شخصیات سے مُزَیَّن ہے جن کی علمی وَجاہَت کا شہرہ اَطرافِ عالَم میں پھیلا ہوا ہے ۔ ان ہی روشن و   تابَنْدہ  شخصیات میں  سے  ایک   دَرَخْشاں نام 
Image
 حضرت سیِّدنا حسن بَصْری علیہ رحمۃ اللہ القَوی ایک جلیل القدر تابِعی بُزُرگ ہیں۔ ایک روایت کے مطابق آپ کو 130 صحابۂ کرام علیہمُ الرِّضوان سے ملاقات کا شرف حاصل ہے۔
Image
بَرِّعظیم پاک وہند میں جِن مبارک ہَستیوں نے شب وروز کی کوششوں سے اسلام کی نورانی شمع روشن کی،شمعِ اسلام کی نُور بکھیرتی  کرنوں سے تاریک دلوں کو جگمگایا، بھٹکتے ذہنوں کو مرکزِ رُشد وہدایت 
Image
فرد پر خوف و ہراس چھایا ہوا تھا، کسی میں ہمت نہ تھی کہ آگے بڑھ کر ان خونخوار لٹیروں کا مقابلہ کرسکے، اس قافلے میں لگ بھگ 18سالہ ایک خوبرو نوجوان بھی تھا، جس کے چہرے پر نہ خوف تھا
Image
آپ کا نام ”محمد“ لقب ”جلالُ الدّین“ ہے جبکہ شہرت ”مولانا رُوم“کے نام سے ہے۔ آپ کی ولادت 6ربیعُ الاَوّل 604ہجری بمطابق 30 ستمبر 1207 عیسوی کو بَلْخ میں ہوئی۔
Image
اُستاذالعُلماءوالمحدّثین،رئیس الفُقہاء، حضرت علّامہ وصی احمد مُحَدِّث سُورتی قادری علیہ رحمۃ اللہ البارِی بَر صغیر کے ان عُلما میں سے ایک تھے جِنہوں نے جَہالت کی تَاریکیوں میں عِلم کے بے شُمار چراغ روشن کئے۔
Image
سرزمینِ ہند پر اللّٰہ تعالٰی نے جن اَولیائے کرام رَحِمَہُمُ اللہُ السَّلَام کو پیدا فرمایا اُن میں سے ایک سِلسِلۂ چشتیہ کے عظیم پیشوا اور مشہور ولیُ اللہ حضرت سیّدنا خواجہ نظامُ الدِین اَولیاء رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ بھی ہیں۔
Image
مدینۂ منورہ زَادَہَا اللہُ شَرَفاً وَتَعْظِیْماً میں کچھ غریب گھرانے تھے جن کے کھانے پینے کا انتظام راتوں رات ہو جاتا اور دینے والےکا پتا بھی نہیں چلتا تھا۔