تذکرۂ صالحین

Image
مدینۂ منورہ زَادَہَا اللہُ شَرَفاً وَتَعْظِیْماً میں کچھ غریب گھرانے تھے جن کے کھانے پینے کا انتظام راتوں رات ہو جاتا اور دینے والےکا پتا بھی نہیں چلتا تھا۔
Image
برِّ عظیم  پاک و ہند میں اشاعت ِ اسلام کے لئے  صوفیائے کرام کا کردار نہایت  اَہمیت کا حامل ہے ، صوفیائے کرام  کے حُسنِ اخلاق و تبلیغِ اسلام کی بدولت اس خِطّے میں اسلام کا اُجالا پھیلا
Image
آپ  رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ  حفظِ قراٰن اور ابتدائی تعلیم حاصل کرنے کے بعد مدینۃُ الاولیا ملتان تشریف لے گئے اور قراٰن و حدیث، فقہ و کلام اور دیگر علومِ مُرَوَّجہ پر عبور حاصل کیا۔
Image
عشقِ رسول  رَبّ کریم  کی بہت بڑی نعمت اور ایمان کو  کامل کرنے کے لئے اولین شرط ہے ،جسے یہ  نعمت ملی وہ مخلوقِ  خدا کامحبوب بن گیا۔اِنہی عاشقانِ رسول میں سے ایک
Image
 مُصنِّفِ بہارِ شریعت حضرتِ علّامہ مولانا الحاج مفتی محمد امجد علی اَعظمی رَضَوی علیہ رحمۃ اللہ القَوی 1300؁ ھ مطابق 1882؁ء میں مشرقی یوپی(ہند)کے قصبے مدینۃُ العُلَماء گھوسی میں پیدا ہوئے۔
Image
قراٰنِ پاک کے بعدسب سے صحیح ترین کتاببخاری شریفہےجسے احادیثِ مبارکہ کا مستند ترین مجموعہ ہونے کی وجہ سے عالمگیر شہرت  حاصل  ہے۔
Image
 بدایوں شریف کو جن ہستیوں کے مقام پیدائش ہونے کا شرف حاصل ہے ا ن میں ایک ذات مشہورمُفسِّرقراٰن،حکیم الامت حضرت علامہ مفتی احمد یار خان نعیمی علیہِ رحمۃُ اللہِ الْقَوی کی بھی ہے۔
Image
جن اولیائے کرام  کی برکت سے صوبۂ سندھ کفر و شرک کےاندھیروں سے پاک ہوا،مظلوموں کو ظلم سے نجات نصیب ہوئی اور سندھ کو ”بابُ الاسلام“کہا گیا
Image
نام ونسب:آپ  کانام”جعفر“ اورکُنیّت”ابوعبداللہ“ہے ۔آپ کی ولادت 80 ہجری میں ہوئی،آپ کے دادا شہزاد ۂ امام حسین حضرت سیّدناامام زَیْنُ الْعَابِدِین علی اَوسط اور والد امام محمد باقِر ہیں