کیسا ہونا چاہئے؟

Image
مؤمنِ کامل کے اوصاف کو عمَلی جامہ پہنانا حُسنِ معاشرت کا بہترین ذریعہ ہے
Image
مسلمان پر اپنے ساتھ ساتھ اپنے اہلِ خانہ کی اصلاح کی بھی ذمّہ داری عائد ہے، مسلمان کو چاہئے کہ دین و دنیا کے ہر معاملے میں حسبِ استطاعت خود کو، اپنے بچّوں اور ماتحتوں (Subordinates) کو شریعت
Image
مسلمان کو چاہئے کہ مرنے سے پہلے ہی اللہ کریم کا دیا ہوا مال راہِ خدا میں بھی خرچ کرے۔ کیونکہ مسلمان کا ایمان ہے کہ  قِیامت ضرور آئے گی اور قیامت کا دن بڑی ہیبت والا ہوگا، اس دن مال کسی کو بھی فائدہ نہ دے گا، 
Image
مسلمان کو چاہئے کہ ہر معامَلے میں اللہ و رسول کے احکام کو ترجیح دے، نیکی و بھلائی اور احکامِ خداوندی کی اِشاعت و نَفاذ میں کسی طرح کی مَلامت وغیرہ کاخوف نہ رکھّے، قراٰنِ کریم میں ارشاد ہوتا ہے:
Image
سلمان نہ تو اللہ کی نعمتوں کو ضائع کرتا اور اسراف و فضول خرچی کرتاہے اور نہ ہی کنجوسی و بخل سے کام لیتاہے بلکہ اعتدال میں رہتاہے۔ اللہ پاک کا فرمان ہے:
Image
انسان و مسلمان ہونے کےناطے ہمارا سب سے پہلا تعلق اپنے ربِّ کریم  سے ہے کیونکہ  وہی ہمارا خالق ومالک ہے۔ قراٰنِ پاک اور احادیثِ کریمہ میں کئی مقامات پر
Image
طالبِ علم کو چاہئے کہ استاد کی ہر بات توجہ سے سنے اور اچھی طرح سمجھنے کی کوشش کرے، ممکن ہو تو لکھ بھی لے، اگر استاد صاحب کی آواز صحیح طور پر آپ تک نہیں پہنچ رہی تو ادب و تعظیم کے ساتھ مناسب  انداز میں ان سے عرض کردے۔
Image
پیارے طلبۂ کرام! تعلیمی سال کے آغاز کے اعتبار سے طلبہ کی تین قسمیں بنتی ہیں:(1)پہلے سال میں داخلہ لینے والے (2)اگلے دَرَجات میں جانے والے (3)آخری دَرَجے میں جانے والے۔ ان تینوں اقسام کے حوالے سے چند مدنی پھول ملاحظہ کیجئے:
Image
نیا تعلیمی سال امنگوں اور حوصلوں کو جلا بخشنے والا ہوتا ہے۔ طلبہ اپنے پچھلے تعلیمی ریکارڈ سے کچھ بہتر کرنے کے جذبے سے سرشار ہوتے ہیں۔ بہتر مستقبل کی طرف پیش قدمی ان میں ایک نئی جان ڈال دیتی ہے اس لئے ان قیمتی لمحات کو ضائع نہیں کرنا چاہئے