کیسا ہونا چاہئے؟

Image
انسان و مسلمان ہونے کےناطے ہمارا سب سے پہلا تعلق اپنے ربِّ کریم  سے ہے کیونکہ  وہی ہمارا خالق ومالک ہے۔ قراٰنِ پاک اور احادیثِ کریمہ میں کئی مقامات پر
Image
طالبِ علم کو چاہئے کہ استاد کی ہر بات توجہ سے سنے اور اچھی طرح سمجھنے کی کوشش کرے، ممکن ہو تو لکھ بھی لے، اگر استاد صاحب کی آواز صحیح طور پر آپ تک نہیں پہنچ رہی تو ادب و تعظیم کے ساتھ مناسب  انداز میں ان سے عرض کردے۔
Image
پیارے طلبۂ کرام! تعلیمی سال کے آغاز کے اعتبار سے طلبہ کی تین قسمیں بنتی ہیں:(1)پہلے سال میں داخلہ لینے والے (2)اگلے دَرَجات میں جانے والے (3)آخری دَرَجے میں جانے والے۔ ان تینوں اقسام کے حوالے سے چند مدنی پھول ملاحظہ کیجئے:
Image
نیا تعلیمی سال امنگوں اور حوصلوں کو جلا بخشنے والا ہوتا ہے۔ طلبہ اپنے پچھلے تعلیمی ریکارڈ سے کچھ بہتر کرنے کے جذبے سے سرشار ہوتے ہیں۔ بہتر مستقبل کی طرف پیش قدمی ان میں ایک نئی جان ڈال دیتی ہے اس لئے ان قیمتی لمحات کو ضائع نہیں کرنا چاہئے 
Image
طلبہ کو کچھ بھی ذہن نشین کروانے کے لئے سب سے زیادہ اہمیت اندازِ تفہیم کی ہے۔ یہی وہ ہُنَر ہے جو عملِ تعلیم کو پروان بھی چڑھاتا ہےاور اس کی کمی نقصان بھی پہنچاتی ہے۔ رسولِ اکرم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم بھی اپنی بات 
Image
قابل استاذ سیرتِ مصطفےٰ کی روشنی میں
Image
وہ جو نسلیں سنوارتے ہیں (قسط:01)
Image
کہتے ہیں کہ دوست دوست کے لئے آئینہ ہوتاہے