DONATE NOW donation

Home Al-Quran Surah Al Kahf Ayat 27 Translation Tafseer

رکوعاتہا 12
سورۃ ﰌ
اٰیاتہا 110

Tarteeb e Nuzool:(69) Tarteeb e Tilawat:(18) Mushtamil e Para:(15-16) Total Aayaat:(110)
Total Ruku:(12) Total Words:(1742) Total Letters:(6482)
27

وَ اتْلُ مَاۤ اُوْحِیَ اِلَیْكَ مِنْ كِتَابِ رَبِّكَۚ- لَا مُبَدِّلَ لِكَلِمٰتِهٖۚ-وَ لَنْ تَجِدَ مِنْ دُوْنِهٖ مُلْتَحَدًا(۲۷)
ترجمہ: کنزالعرفان
اور اپنے رب کی کتاب سے اس وحی کی تلاوت کرو جو آپ کی طرف بھیجی گئی ہے ۔اس کی باتوں کو کوئی بدلنے والا نہیں اور تم ہرگز اس کے سوا کوئی پناہ نہ پاؤ گے۔


تفسیر: ‎صراط الجنان

{وَ اتْلُ: اور تلاوت کر۔} جب اللّٰہ تعالیٰ نے اصحابِ کہف کے واقعے پر مشتمل آیات نازل فرما دیں  تو ا س آیت میں  آپنے حبیب صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کو حکم دیا کہ آپ قرآنِ پاک کی تلاوت کرتے رہیں  اور کفار کی ان باتوں  کی پروا نہ کریں  کہ آپ اس کے علاوہ کوئی اور قرآن لے آئیں  یا اسے تبدیل کر دیں ۔ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ کی باتوں  کو بدلنے پر کوئی قادر نہیں ۔(ابوسعود، الکہف، تحت الآیۃ: ۲۶-۲۷، ۳ / ۳۷۶-۳۷۷)

قرآنِ مجید کی تلاوت کرنی چاہئے اگرچہ سمجھ میں  نہ آئے:

            ا س آیتِ مبارکہ میں  تلاوت کا بیان اصحاب ِ کہف کے واقعے کے اختتام کے طور پر ہے لیکن قرآنِ پاک کے عمومی الفاظ کا اعتبار کرتے ہوئے یہ بھی معلوم ہوتا ہے کہ مُطْلَقاً بھی قرآنِ پاک کی تلاوت کرنی چاہیے، سمجھ میں  آئے یا نہ آئے۔

Reading Option

Ayat

Translation

Tafseer

Fonts Setting

Download Surah

Related Links