DONATE NOW donation

Home Al-Quran Surah Ghafir Ayat 22 Translation Tafseer

رکوعاتہا 9
سورۃ ﳩ
اٰیاتہا 85

Tarteeb e Nuzool:(60) Tarteeb e Tilawat:(40) Mushtamil e Para:(24) Total Aayaat:(85)
Total Ruku:(9) Total Words:(1345) Total Letters:(5040)
21-22

اَوَ لَمْ یَسِیْرُوْا فِی الْاَرْضِ فَیَنْظُرُوْا كَیْفَ كَانَ عَاقِبَةُ الَّذِیْنَ كَانُوْا مِنْ قَبْلِهِمْؕ-كَانُوْا هُمْ اَشَدَّ مِنْهُمْ قُوَّةً وَّ اٰثَارًا فِی الْاَرْضِ فَاَخَذَهُمُ اللّٰهُ بِذُنُوْبِهِمْؕ -وَ مَا كَانَ لَهُمْ مِّنَ اللّٰهِ مِنْ وَّاقٍ(۲۱)ذٰلِكَ بِاَنَّهُمْ كَانَتْ تَّاْتِیْهِمْ رُسُلُهُمْ بِالْبَیِّنٰتِ فَكَفَرُوْا فَاَخَذَهُمُ اللّٰهُؕ-اِنَّهٗ قَوِیٌّ شَدِیْدُ الْعِقَابِ(۲۲)
ترجمہ: کنزالعرفان
تو کیا انہوں نے زمین میں سفر نہ کیا تو دیکھتے کہ ان سے پہلے لوگوں کا کیسا انجام ہوا ؟ وہ پہلے لوگ قوت اور زمین میں چھوڑی ہوئی نشانیوں کے اعتبار سے ان سے بڑھ کر تھے تو اللہ نے انہیں ان کے گناہوں کے سبب پکڑلیا اور ان کیلئے اللہ سے کوئی بچانے والا نہ تھا۔ یہ گرفت اس لیے ہوئی کہ ان کے پاس ان کے رسول واضح نشانیاں لے کر آئے پھر (بھی) انہوں نے کفر کیا تو اللہ نے انہیں پکڑلیا، بیشک اللہ قوت والا، سخت عذاب دینے والا ہے۔


تفسیر: ‎صراط الجنان

{اَوَ لَمْ یَسِیْرُوْا فِی الْاَرْضِ: تو کیا انہوں  نے زمین میں  سفر نہ کیا۔} اس آیت اور اس کے بعد والی آیت کا خلاصہ یہ ہے کہ جب کفار ِمکہ تجارت کے لئے یمن اور شام کی طرف سفر کرتے ہیں  تو کیا ا س دوران انہوں  نے دیکھا نہیں  کہ ان سے پہلے جن لوگوں  نے اللہ تعالیٰ کے رسولوں  کو جھٹلایا تھا ان کا کیساانجام ہوا؟وہ لوگ قوت اور زمین میں  چھوڑی ہوئی نشانیوں  مثلاًقلعے ، محل ، نہریں  ، حوض اور بڑی بڑی عمارتوں کے اعتبار سے ان کفارِ مکہ سے بڑھ کر تھے،اس کے باوجود اللہ تعالیٰ نے انہیں  ان کے گناہوں  کے سبب پکڑلیا اور انہیں  اللہ تعالیٰ کے عذاب سے بچانے والا کوئی نہ تھا۔ اِس زمانے کے کافر یہ حالات دیکھ کر کیوں  عبرت حاصل نہیں  کرتے ؟ اور کیوں  نہیں  سوچتے کہ پچھلی قومیں  ان سے زیادہ قوی ، توانا اور ثَروَت و اِقتدار والی ہونے کے باوجود اس عبرت ناک طریقہ سے کیوں  تباہ کر دی گئیں ؟ان لوگوں  کی یہ گرفت اس لیے ہوئی کہ ان کے پاس ان کے رسول اللہ تعالیٰ کی وحدانیّت اور اپنی رسالت کی صداقت پر دلالت کرنے والی واضح نشانیاں  اور معجزات لے کر آئے پھر بھی انہوں  نے کفر کیا تو اللہ تعالیٰ نے انہیں  اپنے عذاب سے پکڑ لیا، بیشک اللہ تعالیٰ قوت والا اور شرک کرنے والوں  کو سخت عذاب دینے والا ہے۔لہٰذااے کافرو !تم عقل مندی کاثبوت دو اور میرے رسول صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی بات مانواورانہیں  ایذا مت دوورنہ تمہاراانجام بھی سابقہ لوگوں  جیساہوگااورتمہیں  بھی اللہ تعالیٰ کے عذاب سے کوئی نہیں  بچاسکے گا۔ (روح البیان،المؤمن،تحت الآیۃ:۲۱-۲۲،۸ / ۱۷۲-۱۷۳، تفسیرکبیر،المؤمن،تحت الآیۃ:۲۱-۲۲، ۹ / ۵۰۵، ملتقطاً)

Reading Option

Ayat

Translation

Tafseer

Fonts Setting

Download Surah

Related Links