DONATE NOW donation

Home Al-Quran Surah Ar Rahman Ayat 57 Translation Tafseer

رکوعاتہا 3
سورۃ ﳻ
اٰیاتہا 78

Tarteeb e Nuzool:(97) Tarteeb e Tilawat:(55) Mushtamil e Para:(27) Total Aayaat:(78)
Total Ruku:(3) Total Words:(387) Total Letters:(1589)
56-57

فِیْهِنَّ قٰصِرٰتُ الطَّرْفِۙ-لَمْ یَطْمِثْهُنَّ اِنْسٌ قَبْلَهُمْ وَ لَا جَآنٌّۚ(۵۶)فَبِاَیِّ اٰلَآءِ رَبِّكُمَا تُكَذِّبٰنِۚ(۵۷)
ترجمہ: کنزالعرفان
ان جنتوں میں وہ عورتیں ہیں کہ شوہر کے سوا کسی کو آنکھ اٹھا کر نہیں دیکھتیں ،جنہیں ان کے شوہروں سے پہلے نہ کسی آدمی نے چھوا اور نہ کسی جن نے۔ توتم دونوں اپنے رب کی کون کون سی نعمتوں کو جھٹلاؤ گے؟


تفسیر: ‎صراط الجنان

{فِیْهِنَّ قٰصِرٰتُ الطَّرْفِ: ان جنتوں  میں وہ عورتیں  ہیں  کہ شوہر کے سوا کسی کو آنکھ اٹھا کر نہیں  دیکھتیں ۔} اس آیت کا خلاصہ یہ ہے کہ ان جنتوں  کے محلات میں  جنّتی مَردوں  کے لئے ایسی بیویاں  ہوں  گی جو اپنے شوہر کے علاوہ کسی اور کی طرف آنکھ اٹھا کر نہیں  دیکھیں  گی اور ان میں  سے ہر ایک اپنے شوہر سے کہے گی: مجھے اپنے رب عَزَّوَجَلَّ کی عزت و جلال کی قسم! جنت میں  مجھے کوئی چیز تجھ سے زیادہ اچھی نہیں  معلوم ہوتی، تو اس خدا عَزَّوَجَلَّ کی حمد ہے جس نے تمہیں  میرا شوہر بنایا اور مجھے تمہاری بیوی بنایا ۔اور وہ بیویاں  ایسی ہوں  گی کہ انہیں  ان کے جنتی شوہروں  کے علاوہ نہ کسی آدمی نے چھوا ہوگا اور نہ ہی کسی جن نے ۔ ان بیویوں  سے مراد حورِعِین ہیں  کیونکہ وہ جنت میں  پیدا کی گئی ہیں ، اس لئے ان کے شوہروں  کے سوا انہیں  کسی نے نہیں  چھوا۔بعض مفسرین نے فرمایا ان سے مراد دنیا کی عورتیں  ہیں، انہیں  دوبارہ کنواریاں  پیدا کیا جائے گا اور اس پیدائش کے بعد انہیں  ان کے شوہروں  کے علاوہ کسی اور نے نہ چھوا ہو گا۔( روح البیان، الرحمٰن، تحت الآیۃ: ۵۶، ۹ / ۳۰۷-۳۰۸، خازن، الرحمٰن، تحت الآیۃ: ۵۶، ۴ / ۲۱۴، ملتقطاً)

 آیت ’’ فِیْهِنَّ قٰصِرٰتُ الطَّرْفِ‘‘سے حاصل ہونے و الی معلومات:

            اس آیت سے چند باتیں  معلوم ہوئیں ۔

(1)… تقویٰ اور شرم و حیا عورت کابہت بڑا کمال ہے۔

(2)… اجنبی عورت کا متقی پرہیز گار مرد سے بھی پردہ ہے کیونکہ جنت میں  سب متقی ہوں  گے، مگر ان سے بھی پردہ ہو گا۔

(3)… پردہ اللہ تعالیٰ کی وہ نعمت ہے جو جنت میں  بھی ہو گی۔

(4)…حوریں  پیدا ہو چکی ہیں  اور جنت کی تمام نعمتوں  کی طرح وہ بھی موجود ہیں ۔

(5)… حضرت آدم عَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام اگرچہ جنت میں  رہے اور وہاں  کی نعمتیں  کھائیں ، مگر آپ عَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام حوروں  کی طرف مائل نہ ہوئے کیونکہ حوریں  صرف جزا کے طور پر ملیں  گی ۔

{فَبِاَیِّ اٰلَآءِ رَبِّكُمَا تُكَذِّبٰنِ: توتم دونوں  اپنے رب کی کون کون سی نعمتوں  کو جھٹلاؤ گے؟} یعنی اے جن اور انسان کے گروہ!اللہ تعالیٰ نے تمہاری طبیعت کے موافق تمہارے لئے بیویاں  بنائیں  اور وہ تمہارے علاوہ کسی اور کی طرف نہیں  دیکھتیں  تو تم اللہ تعالیٰ کا انکار کس طرح کرتے ہو اور تم دونوں  اپنے رب عَزَّوَجَلَّ کی کون کون سی نعمتوں  کو جھٹلاؤ گے؟( تفسیر سمرقندی، الرحمٰن، تحت الآیۃ: ۵۷، ۳ / ۳۱۰)

 

Reading Option

Ayat

Translation

Tafseer

Fonts Setting

Download Surah

Related Links