DONATE NOW donation

Home Al-Quran Surah Al Anbiya Ayat 68 Translation Tafseer

رکوعاتہا 7
سورۃ ﰑ
اٰیاتہا 112

Tarteeb e Nuzool:(73) Tarteeb e Tilawat:(21) Mushtamil e Para:(17) Total Aayaat:(112)
Total Ruku:(7) Total Words:(1323) Total Letters:(4965)
68

قَالُوْا حَرِّقُوْهُ وَ انْصُرُوْۤا اٰلِهَتَكُمْ اِنْ كُنْتُمْ فٰعِلِیْنَ(۶۸)
ترجمہ: کنزالعرفان
بولے: ان کو جلادو اور اپنے خداؤں کی مدد کرو اگر تم کچھ کرنے والے ہو۔


تفسیر: ‎صراط الجنان

{قَالُوْا حَرِّقُوْهُ:کہا: ان کو جلادو۔} جب حجت تمام ہو گئی اور وہ لوگ جواب سے عاجز آگئے تو کہنے لگے: اگر تم اپنے خداؤں  کی کچھ مدد کرنا چاہ رہے ہو تو ان کا انتقام لے کر ان کی مدد کرو اور حضرت ابراہیم عَلَیْہِ  الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامکو جلا دو کیونکہ یہ بڑی ہولناک سزا ہے۔ چنانچہ نمرود اور اس کی قوم حضرت ابراہیم عَلَیْہِ  الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کو جلا ڈالنے پر متفق ہو گئی اور انہوں  نے آپ کو ایک مکان میں  قید کر دیا اور کوثیٰ بستی میں  ایک عمارت بنائی اور ایک مہینہ تک پوری کوشش کر کے ہرقسم کی لکڑیاں  جمع کیں  اور ایک عظیم آ گ جلائی جس کی تپش سے ہوا میں  پرواز کرنے والے پرندے جل جاتے تھے اور ایک منجنیق ( یعنی پتھر پھینکنے والی مشین) کھڑی کی اور آپ کو باندھ کر اس میں  رکھااور آگ میں  پھینک دیا۔ اس وقت آپ عَلَیْہِ  الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کی زبانِ مبارک پر تھا حَسْبِیَ  اللہ وَ نِعْمَ الْوَکِیْل، یعنی مجھے  اللہ کافی ہے اور وہ کیا ہی اچھا کارساز ہے۔ جبریل ِامین عَلَیْہِ  السَّلَامنے آپ سے عرض کی: کیا کچھ کام ہے ؟ آپ عَلَیْہِ  الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامنے فرمایا ’’تم سے نہیں ۔ حضرت جبریل عَلَیْہِ  السَّلَام نے عرض کی: تو اپنے ربّ عَزَّوَجَلَّسے سوال کیجئے۔آپ عَلَیْہِ  الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامنے فرمایا’’ سوال کرنے سے اس کا میرے حال کو جاننا میرے لئے کافی ہے۔( مدارک، الانبیاء، تحت الآیۃ: ۶۸، ص۷۲۱)

            حضرت ابراہیمعَلَیْہِ  الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامنے یہ سمجھا تھا کہ امتحان کے وقت دعا کرنی بھی مناسب نہیں  کہ کہیں  یہ بے صبری میں  شمار نہ ہوجائے۔ یہ انہی کامرتبہ تھا، ہمیں  بہرحال مصیبت و بلا کے وقت دعا کرنے کا حکم ہے۔

 

 

Reading Option

Ayat

Translation

Tafseer

Fonts Setting

Download Surah

Related Links