DONATE NOW donation

Home Al-Quran Surah At Tur Ayat 11 Translation Tafseer

رکوعاتہا 2
سورۃ ﳸ
اٰیاتہا 49

Tarteeb e Nuzool:(76) Tarteeb e Tilawat:(52) Mushtamil e Para:(27) Total Aayaat:(49)
Total Ruku:(2) Total Words:(342) Total Letters:(1309)
9-12

یَّوْمَ تَمُوْرُ السَّمَآءُ مَوْرًاۙ(۹)وَّ تَسِیْرُ الْجِبَالُ سَیْرًاؕ(۱۰)فَوَیْلٌ یَّوْمَىٕذٍ لِّلْمُكَذِّبِیْنَۙ(۱۱)الَّذِیْنَ هُمْ فِیْ خَوْضٍ یَّلْعَبُوْنَۘ(۱۲)
ترجمہ: کنزالعرفان
جس دن آسمان سختی سے ہلے گا۔اور پہاڑ تیزی سے چلیں گے۔ تو اس دن جھٹلانے والوں کی خرابی ہے۔ وہ جو شغل میں پڑے کھیل رہے ہیں ۔


تفسیر: ‎صراط الجنان

{ یَوْمَ تَمُوْرُ السَّمَآءُ مَوْرًا: جس دن آسمان سختی سے ہلے گا۔} اس آیت اور ا س کے بعد والی آیت کا خلاصہ یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ نے عذاب نازل ہونے کا وقت بیان کرتے ہوئے ارشاد فرمایا کہ وہ عذاب ا س دن ضرور واقع ہو گا جس دن آسمان چکی کی طرح گھومیں  گے اور اس طرح ڈولنے لگیں  گے جس طرح کشتی اپنے سواروں  کے ساتھ ڈولتی ہے اور ایسی حرکت میں  آئیں  گے کہ اُن کے اَجزاء بکھر جائیں  گے اور پہاڑ تیزی سے ایسے چلیں  گے جیسے کہ غبار ہوا میں  اُڑتا ہے اور یہ قیامت کے دن ہوگا۔( خازن، الطور، تحت الآیۃ: ۹-۱۰، ۴ / ۱۸۶-۱۸۷، جلالین، الطور، تحت الآیۃ: ۹-۱۰، ص۴۳۵، ملتقطاً)

{ فَوَیْلٌ یَّوْمَىٕذٍ:تو اس دن خرابی ہے۔} اس آیت اور اس کے بعد والی آیت کا خلاصہ یہ ہے کہ جس دن وہ عذاب واقع ہو گا تو اس دن ان لوگوں  کے لئے خرابی ہے جو دنیا میں  اللہ تعالیٰ کے رسولوں  کو جھٹلاتے رہے اور وہ اپنے کفر و باطل کے شغل میں  پڑے کھیلتے رہے۔( ابو سعود، الطور، تحت الآیۃ: ۱۱-۱۲، ۵ / ۶۳۶، جلالین، الطور، تحت الآیۃ: ۱۱-۱۲، ص۴۳۵، ملتقطاً)

Reading Option

Ayat

Translation

Tafseer

Fonts Setting

Download Surah

Related Links