DONATE NOW donation

Home Al-Quran Surah Fussilat Ayat 35 Translation Tafseer

رکوعاتہا 6
سورۃ ﳪ
اٰیاتہا 54

Tarteeb e Nuzool:(61) Tarteeb e Tilawat:(41) Mushtamil e Para:(24-25) Total Aayaat:(54)
Total Ruku:(6) Total Words:(898) Total Letters:(3325)
35

وَ مَا یُلَقّٰىهَاۤ اِلَّا الَّذِیْنَ صَبَرُوْاۚ-وَ مَا یُلَقّٰىهَاۤ اِلَّا ذُوْ حَظٍّ عَظِیْمٍ(۳۵)
ترجمہ: کنزالعرفان
اور یہ دولت صبرکرنے والوں کو ہی ملتی ہے اوریہ دولت بڑے نصیب والے کو ہی ملتی ہے۔


تفسیر: ‎صراط الجنان

{وَ مَا یُلَقّٰىهَاۤ اِلَّا الَّذِیْنَ صَبَرُوْا: اور یہ دولت صبرکرنے والوں  کو ہی ملتی ہے۔} یعنی برائیوں  کو بھلائیوں  سے ٹال دینے جیسی عظیم خصلت کی دولت ان لوگوں  کو ہی ملتی ہے جو تکلیفوں  اور مصیبتوں  وغیرہ پر صبر کرتے ہیں  اور یہ دولت اسے ہی ملتی ہے جو بڑے نصیب والا ہے۔( خازن، فصلت، تحت الآیۃ: ۳۵، ۴ / ۸۶، تفسیرکبیر، فصلت، تحت الآیۃ: ۳۵، ۹ / ۵۶۵، ملتقطاً)

اچھے اَخلاق والا ہونا بہت بڑی نعمت ہے :

            اس آیت سے معلوم ہو اکہ اچھے اَخلاق والاہونااللہ تعالیٰ کی بہت بڑی نعمت ہے۔اس لئے ہر ایک کو چاہئے کہ وہ اچھے اخلاق اپنانے کی کوشش کرے ،ترغیب کے لئے یہاں  اچھے اخلاق کے 4فضائل ملاحظہ ہوں ،

(1)…حضرت ابو ہریرہ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے،نبی اکرم صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے ارشاد فرمایا: ’’مومنوں  میں  زیادہ کامل ایمان والا وہ ہے جو اَخلاق کے اعتبار سے ان میں  سب سے اچھا ہے۔( ابو داؤد، کتاب السنّۃ، باب الدلیل علی زیادۃ الایمان ونقصانہ، ۴ / ۲۹۰، الحدیث: ۴۶۸۲)

(2)…حضرت اسامہ بن شریک رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُ فرماتے ہیں  :رسولِ کریم صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ منیٰ کی مسجد میں  تھے تو ان کے پاس کچھ دیہاتی لوگ آئے اور انہوں  نے عرض کی:انسان کو عطا کی جانے والی بہترین چیز کون سی ہے؟ ارشاد فرمایا’’اچھا خُلق۔( معجم الاوسط، باب الالف، من اسمہ: احمد، ۱ / ۱۱۷، الحدیث: ۳۶۷)

(3)…حضرت ابو ہریرہ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے ،سرکارِ دو عالم صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے ارشاد فرمایا: ’’اچھا خلق خطا کو اس طرح مٹا دیتا ہے جیسے سورج جمے ہوئے پانی کو پگھلا (کر اس کا جمنا ختم کر) دیتا ہے۔( شعب الایمان، السابع والخمسون من شعب الایمان۔۔۔ الخ، ۶ / ۲۴۷، الحدیث: ۸۰۳۶)

(4)…حضرت انس رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے،سیّد المرسَلین صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے ارشاد فرمایا: ’’اللہ تعالیٰ نے جس شخص کی صورت اور اَخلاق کو اچھا بنایا اور اسے اسلام (قبول کرنے) کی توفیق دی اسے وہ جنت میں  داخل فرما دے گا۔( جامع الاحادیث، قسم الاقوال، حرف المیم، المیم مع النون، ۷ / ۱۹۴، الحدیث: ۲۱۸۳۶)

            اللہ تعالیٰ مسلمانوں  کو اچھے اَخلاق والا اور با عمل بننے کی توفیق عطا فرمائے ،اٰمین۔

 

Reading Option

Ayat

Translation

Tafseer

Fonts Setting

Download Surah

Related Links