DONATE NOW donation

Home Al-Quran Surah Al Mursalat Ayat 25 Translation Tafseer

رکوعاتہا 2
سورۃ ﴑ
اٰیاتہا 50

Tarteeb e Nuzool:(33) Tarteeb e Tilawat:(77) Mushtamil e Para:(29) Total Aayaat:(50)
Total Ruku:(2) Total Words:(198) Total Letters:(824)
25-28

اَلَمْ نَجْعَلِ الْاَرْضَ كِفَاتًاۙ(۲۵)اَحْیَآءً وَّ اَمْوَاتًاۙ(۲۶)وَّ جَعَلْنَا فِیْهَا رَوَاسِیَ شٰمِخٰتٍ وَّ اَسْقَیْنٰكُمْ مَّآءً فُرَاتًاؕ(۲۷)وَیْلٌ یَّوْمَىٕذٍ لِّلْمُكَذِّبِیْنَ(۲۸
ترجمہ: کنزالعرفان
کیا ہم نے زمین کو جمع کرنے والی نہ بنایا۔ زندوں اور مردوں کو۔اور ہم نے اس میں اونچے اونچے مضبوط پہاڑبنادیئے اور ہم نے خوب میٹھے پانی سے تمہیں سیراب کیا ۔اس دن جھٹلانے والوں کے لئے خرابی ہے۔


تفسیر: ‎صراط الجنان

{اَلَمْ نَجْعَلِ الْاَرْضَ كِفَاتًا: کیا ہم نے زمین کو جمع کرنے والی نہ بنایا۔} اس آیت اور ا س کے بعد والی دو آیات کا خلاصہ یہ ہے کہ ہم نے زمین کو تمام زندہ اور مُردہ لوگوں  کو جمع کرنے والی بنایا ہے کہ زندہ لوگ اس کی پُشت پر مکانات اور محلات میں  رہتے ہیں  اور مردہ لوگ اس کے اندر اپنی قبروں  میں  رہتے ہیں  اور ہم نے زمین میں  اونچے اونچے پہاڑ بنادیئے اور ہم نے زمین میں  چشمے اور پانی نکلنے کے مقامات پیدا کرکے خوب میٹھے پانی سے تمہیں  سیراب کیا اور یہ تمام باتیں مُردوں  کو زندہ کرنے سے زیادہ عجیب ہیں  لہٰذا جو ان چیزوں  پر قادر ہے وہ دوبارہ زندہ کرنے پر بھی قادر ہے۔( خازن،المرسلات،تحت الآیۃ:۲۵-۲۷،۴ / ۳۴۴، روح البیان،المرسلات،تحت الآیۃ:۲۵-۲۷،۱۰ / ۲۸۵-۲۸۶،ملتقطاً)

{وَیْلٌ یَّوْمَىٕذٍ لِّلْمُكَذِّبِیْنَ: اس دن جھٹلانے والوں  کے لئے خرابی ہے۔} یعنی قیامت کے دن ان لوگوں  کی خرابی ہے جنہوں  نے ان چیزوں  کا مُشاہدہ کرنے کے باوجود اللّٰہ تعالیٰ کی وحدانیَّت اور مُردوں  کے زندہ ہونے کا انکار کیا۔( تفسیر سمرقندی، المرسلات، تحت الآیۃ: ۲۸، ۴ / ۴۳۶)

Reading Option

Ayat

Translation

Tafseer

Fonts Setting

Download Surah

Related Links