جن کے لئے  فرشتے دعائے رحمت کرتے ہیں

اللہکریم کے کچھ خوش نصیب بندے وہ ہیں جو ایسے اعمال سَر اَنجام دیتے ہیں جن کی وجہ سے اللہ پاک کے معصوم فرشتے ان کے لئے رَحمت و مغفِرت کی دعائیں کرتے ہیں۔ ذیل میں چنداحادیثِ مبارَکہ بیان کی گئی ہیں ، اِن میں ایسے اعمال مذکور ہیں جن کی ادائیگی پر اللہ پاک کے معصوم فرشتے دعائے رحمت فرماتے ہیں :

نَماز کا انتظار کرنا:نبیِّ کریم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم نے ارشاد فرمایا : تم میں سے کسی شخص کا نَماز کے انتظار میں بیٹھے رہنا ، نَماز ہی میں ہونا ہے ، جب تک وہ بے وضو نہ ہو تو فرشتے اس کے لئے دُعا کرتے رہتے ہیں کہ اے اللہ! اسے بخش دے ، اے اللہ! اس پر رحم فرما۔                                             (مسلم ، ص261 ، حدیث : 1511)

اگلی صَف میں جانےوالے:رسولِ اکرم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم نے ارشاد فرمایا : اللہ پاک اور اس کے فرشتے ان لوگوں پر دُرود بھیجتے ہیں جو اگلی صفوں سے ملتے ہیں اور اللہ پاک کو اس قدم سے زیادہ کوئی قدم محبوب نہیں جس قدم سے انسان صَف سے ملے۔                                                 (ابوداؤد ، 1 / 227 ، حدیث : 543)

حکیمُ الاُمّت حضرت مفتی احمد یار خان نعیمی رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں : یعنی اگلی صَف کے نمازیوں کے لیے فرشتے دعائے رحمت کرتے ہیں اور اللہ تعالیٰ نزولِ رحمت فرماتا ہے۔ معلوم ہوا کہ پیاری جگہ جانے کے لیے قدم بھی اللہ کو پیارے ہیں ، خوش نصیب ہیں وہ جو ان قدموں سے حَرَمَین شریفَیْن جائیں۔                                

(مراٰۃ المناجیح ، 2 / 186ملتقطاً)

دُرودِپاک پڑھنے والے:نبیِّ رحمت صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم نے ارشاد فرمایا : جو شخص مجھ پر دُرود بھیجتا ہے تو جب تک وہ دُرود بھیجتا رہتا ہے فرشتے اس کے لئے دعائے رَحمت کرتے رہتے ہیں اب بندے کی مرضی ہے کم پڑھے یا زیادہ۔                      (ابن ماجہ ، 1 / 490 ، حدیث : 907)

روزہ اِفطارکروانا:نبیِّ مُکَرَّم ، نُورِ مُجسَّم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم نے فرمایا : جس نے روزے دار کو حلال کھانے یا پانی سے افطار کروایا تو فرشتے رَمَضان کی ساعتوں میں اس کے لئے رحمت کی دعا کرتے ہیں اور جبریلِ امین علیہ السَّلام شبِ قدر میں اس کے لئے دعائے رحمت کرتے ہیں۔               (معجمِ کبیر ، 6 / 261 ، حدیث : 6162)

مریض کی عیادت کرنا:حضرت سیّدُنا علیُّ المرتضیٰ کَرَّمَ اللہ وجہَہُ الکریم سے روایت ہے کہ میں نے اللہ پاک کے پیارے نبی ، محمدِعربی صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کو یہ فرماتے ہوئے سنا : جو مسلمان کسی مسلمان کی بیمار پُرسی کے لئے صبح کو جاتا ہے تو ستر (70) ہزار فرشتے شام تک اس کے لئے رحمت کی دُعا کرتے رہتے ہیں اور اگر شام کو بیمار پُرسی کے لئے جاتا ہے تو ستر(70) ہزار فرشتے صبح تک اس کے لئے دعائے رحمت کرتے رہتے ہیں اور جنّت میں اس کے لئے ایک باغ تیار ہوجاتا ہے۔             (ترمذی ، 2 / 290 ، حدیث : 971)

علمِ دین کی جستجو میں نکلنا:نبیِّ رحمت ، شفیعِ اُمّت صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم نے فرمایا : جو صبح کے وقت اللہ پاک کی رضا کے لئے علم کی جستجو میں نکلتا ہے تو اللہ پاک  اس کے لئے جنّت کا ایک دروازہ کھول دیتاہے اور فرشتے اس کے لئے اپنے پربچھا دیتے ہیں اور آسمانوں کے فرشتے اور سمندر کی مچھلیاں اس کے لئے دُعائے رحمت کرتے ہیں۔                           (شعب الایمان ، 2 / 263 ، حدیث : 1699)

 

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*ذمہ دار شعبہ ماہنامہ  فیضانِ مدینہ ، کراچی

 

Share

Articles

Comments


Security Code