میرے شہا تم ہو

حمد و مناجات

نعت / استغاثہ

منقبت

اللہ ہمیں کردے عطا قفلِ مدینہ

زہے عزّت و اِعتلائے محمد

میرے شہا تم ہو

اللہ ہمیں کردے عطا قُفلِ مدینہ

ہر ایک مسلماں لے لگا قُفلِ مدینہ

زہے عزّت و اِعتلائے محمد

کہ ہے عرشِ حق زیرِ پائے محمد

امامِ اہلِ سنت کون ہے؟ میرے شہا تم ہو

یہ بیڑہ سنیوں کا اور اس کے ناخدا تم ہو

اکثر مِرے ہونٹوں پہ رہے ذکرِ محمد

اللہ زباں کا ہو عطا قُفلِ مدینہ

خدا کی رِضا چاہتے ہیں دو عالَم

خدا چاہتا ہے رِضائے محمد

وہ جس کی ذات پر ہے فخر اگلوں اور پچھلوں کو

بفضلِ حق وہی حقانیت کے رہنما تم ہو

گر دیکھے گا فِلمیں تو قیامت میں پھنسے گا

آنکھوں پہ مِرے بھائی لگا قفلِ مدینہ

عجب کیا اگر رحم فرمالے ہم پر

خدائے محمد برائے محمد

محافظ تھا جو ناموسِ رسالت کا زمانے میں

جسے یہ فخر تھا کہ ہوں میں عبدالمصطفیٰ، تم ہو

بولوں نہ فضول اور رہیں نیچی نگاہیں

آنکھوں کا زَباں کا دے خدا قفلِ مدینہ

دمِ نَزْع جاری ہو میری زباں پر

محمد محمد خدائے محمد

شریعت میں امامت کا رہا سہرا تمہارے سر

جو ہے اہلِ طریقت کے لئے قبلہ نُما تم ہو

آئیں نہ مجھے وسوسے اور گندے خیالات

دے ذِہْن کا اور دل کا خدا قفلِ مدینہ

عصائے کلیم اژدہائے غضب تھا

گِروں کا سَہارا عصائے محمد

وہ جس کے زُہد و تقویٰ کو سراہا شان والوں نے

کہا یوں پیشواؤں نے ہمارا پیشوا تم ہو

رفتار کا گُفتار کا کردار کا دے دے

ہر عُضْو کا دے مجھ کو خدا قفلِ مدینہ

خدا اُن کو کس پیار سے دیکھتا ہے

جو آنکھیں ہیں محوِ لقائے محمد

تمہی تو قافلہ سالار ہو نُوری جماعت کے

ہدایت کی کسوٹی دورِ حاضر میں شہا تم ہو

دوزخ کی کہاں تاب ہے کمزور بدن میں

ہر عُضْو کا عطّاؔر لگا قفلِ مدینہ

رضاؔ پُل سے اب وجد کرتے گزریے

کہ ہے رَبِّ سَلِّم دعائے محمد

حدائق جس نے بخشش کے بسائے حبِ نبوی سے

مدینے کا وہ بلبل، طُوطیٔ نغمہ سرا تم ہو

وسائلِ بخشش (مُرَمَّم)،ص93

از شیخِ طریقت امیرِ اہلِ سنتدَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ

حدائقِ بخشش،ص65

از امامِ اہلِ سنت امام احمد رضا خانرحمۃ اللہ علیہ

مناقبِ رضا،ص21

از علامہ عبدالحکیم اختر شاہجہانپوریرحمۃ اللہ علیہ

Share

Articles

Comments


Security Code