نمکین حُسن والےمحبوب صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم

حُسن کھاتا ہے جس کے نمک کی قسم

وہ مَلیحِ دِل آرا ہمارا نبی

ذِکر سب پِھیکے جب تک نہ مذکور ہو

نمکین حسن والا ہمارا نبی

(حدائقِ بخشش ، ص139)

الفاظ ومعانی: مَلیح : نمکین ، حَسین۔    دِل آرا : دل دار ، پیارا۔ پِھیکے : بےذائقہ ، بےنمک۔ مذکور : ذِکْر کردَہ ، ذِکْرکیاگیا۔

شرح:اعلیٰ حضرت ، امامِ اہلِ سنّترحمۃ اللہ علیہنےاِن اَشعار میں حُسنِمصطفےٰصلَّی اللہ  علیہ واٰلہٖ وسلَّم کابیان بڑےدلنشین انداز میں فرمایاہے۔ چنانچہ مذکورہ اَشعارکامفہوم یہ ہےکہ حُسن وجمال (Beauty)خود بھی جس حسین وجمیل پر فِداہوکراُس کےنمک کی قسمیں کھاتاہےاوراپنےتعارف(Introduction) میں جس کواَعلیٰ مثال  کےطورپرپیش کرتاہے ، وہ حسین  کوئی اور نہیں بلکہ وہ نمکین حُسن والے ہمارے پیارے پیارے آخری نبی صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم ہی ہیں۔ بلاتشبیہ جس طرح کھانےمیں سارے مسالے (Spices) ڈال دیئےجانے کےباوجوداُس کی لذّت اور ذائقہ نمک کےڈالےجانےپرموقوف ہوتاہے ، یوں ہی حُسن و جمال کے سارےتذکرےاُس وقت تک بےمزہ   ہی رہتے ہیں جب تک   کہ ہمارےنبیِّ کریمصلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کےملاحت  والے(نمکین)حُسن  کاتذکرہ نہ کرلیاجائے۔

نمکین حُسن والے محبوب صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم: صحابیِ رسول حضرت ِسیِّدناابوطُفیلرضی اللہ عنہ رسولُاللہ صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ و سلَّم کے حُسنِ ملاحت کا بیان فرماتے ہیں : کَانَ اَبْیَضَ مَلِیْحًا مُقَصَّدًا یعنی آپ صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم گورےنمکین حُسن والے میانہ قَد تھے۔    (مسلم ، ص981 ، حدیث : 6072)

حُسن کی اَقسام:حکیمُ الاُمّت حضرت مفتی اَحمد یار خان نعیمی رحمۃاللہ علیہ  اس حدیثِ پاک کے تحت حُسن کی دو اَقسام بیان فرماتے ہیں کہ حُسن دو قسم  کاہوتاہے : مَلیح اورصَبیح ، ملیح جس کا ترجمہ ہےنمکین حُسن۔ اگرچہ صَباحت بھی حُسن ہے ، مگرملاحت حُسن کا اعلیٰ درجہ ہے۔ اس میں فرق بیان سے معلوم نہیں ہوسکتا ، بلکہ اس کی چھانٹ (یعنی شناخت) عاشق کی نگاہ کرتی ہےاس کےبیان سے زبان قاصرہے۔ پھرمفتی صاحب اعلیٰ حضرترحمۃ اللہ علیہ کے ذکرکردَہ  دوسرےشعر کو نقل کرنے کے بعد فرماتے ہیں : یوں سمجھوکہ سفید رنگ  صبیح ہے اور سفیدی میں سُرخی کی جھلک ہو اور اس میں کشش ہو کہ دِل اُدھر کھچےاور دِیدہ(آنکھ)اس کے دیدار سے سیر(سیراب)نہ ہو ، وہ ملیح ہےیعنی نمکین حُسن ہے ، حضور(صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم)ایسے ہی حَسین تھے۔ (مراٰۃالمناجیح ، 8 / 51)

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*مُدَرِّس جامعۃالمدینہ ،  فیضانِ اولیا ، کراچی

 

Share

Articles

Comments


Security Code