یا رَبّ! پھر اوج پر یہ ہمارا نصیب ہو/ ماہِ طیبہ نَیّرِ بطحا  صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم/ آبروئے مومناں احمد رضا خاں قادری

حمد /مناجات

یا رَبّ! پھر اوج پر یہ ہمارا نصیب ہو

یا رَبّ! پھر اَوج پر یہ ہمارا نصیب ہو

سُوئے مدینہ پھر ہمیں جانا نصیب ہو

مکّہ بھی ہو نصیب مدینہ نصیب ہو

دشتِ عرب  نصیب ہو صَحرا نصیب ہو

حج کا سفر پھر  اے مِرے مولیٰ نصیب ہو

عَرَفات کا مِنیٰ کا نَظارہ نصیب ہو

مکّے میں اُن کی جائے وِلادت پہ یاخُدا

پھر چشمِ اشکبار جَمانا نصیب ہو

کردوں میں کاش!جالیوں پر اپنی جاں فِدا

رَوضے کا ان کے جس گھڑی جلوہ نصیب ہو

ہِجرِ رسول میں ہمیں یا رَبِّ مصطفٰے

اے کاش!پُھوٹ پُھوٹ کے رونا نصیب ہو

عطّارؔ کی ہو حاضِری ہر سال یا خدا

آخِر کو طیبہ میں اسے مرنا نصیب ہو

وسائلِ بخشش مُرَمَّم،ص89

از شیخِ طریقت امیرِ اہلِ سنت  دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ

 


 

Share

یا رَبّ! پھر اوج پر یہ ہمارا نصیب ہو/ ماہِ طیبہ نَیّرِ بطحا  صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم/ آبروئے مومناں احمد رضا خاں قادری

نعت/ و استغاثہ

ماہِ طیبہ نَیّرِ بطحا  صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

ماہِ طیبہ نَیّرِ بطحا صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

تیرے دَم سے عالَم چمکا صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

تُو ہے نائبِ ربِّ اکبر،پیارے ہر دم تیرے در پر

اہلِ حاجت کا ہے میلہ صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

ہر شے میں ہے تیرا جلوہ ،تجھ سے روشن دین و دنیا

بانٹا تُو نے نور کا باڑا صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

تُو چاہے وہ جو ربّ چاہے،رَبّ چاہے وہ جو تو چاہے

چاہا تیرا رَبّ کا چاہا صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

جتنےسلاطیں پہلےآئے،سکّےان کےہوگئےکھو ٹے

جاری رہے گا سکّہ تیرا صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

رافع تم ہو دافع تم ہو،نافع تم ہو شافع تم ہو

رنج و غم کا پھر کیا کھٹکا صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

حاضرِ در ہے نوریؔ مُضْطَر،آپکا یہ مَورُوثی ثناگر

ابنِ رضا ہے خواہاں رضا کا صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم

سامان ِبخشش،ص95

از مفتیٔ اعظم ہند مولانا مصطفٰے رضا خان عَلَیْہِ رَحمَۃُ الرَّحْمٰن

 


 

Share

یا رَبّ! پھر اوج پر یہ ہمارا نصیب ہو/ ماہِ طیبہ نَیّرِ بطحا  صَلَّی اللہُ عَلَیْکَ وَسَلَّم/ آبروئے مومناں احمد رضا خاں قادری

منقبت

آبروئے مومناں احمد رضا خاں قادری

آبروئے مومناں احمد رضا خاں قادری

رَہنمائے گمرہاں احمد رضا خاں قادری

علم میں بَحْرِ رَواں احمد رضا خاں قادری

دین میں گَوہرِ فشاں احمد رضا خاں قادری

تیرا علم و فضل و شان و شوکت و جاہ و حشم

شَشْ جِہت پر ہے عَیاں احمد رضا خاں قادری

ہے عرب کے عالِموں کا مَدْح خواں سارا جہاں

اور وہ تیرے مَدْح خواں احمد رضا خاں قادری

روز افزوں حشر تک یارَبّ ترقّی پر رہے

لہلہاتا بوستاں احمد رضا خاں قادری

تیرے صدقہ میں خدا چاہے تو پائینگے غلام

کَل وہاں باغِ جِناں احمد رضا خاں قادری

دے مبارکباد انکو قادری رضوی جمیلؔ

جن کے مرشد ہیں میاں احمد رضا خاں قادری

قبالۂ بخشش،ص190

از مدّاحُ الحبیب مولانا جمیل الرحمٰن قادری رضوی عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللّٰہ ِ الْقَوِی

Share

Comments


Security Code