مُعاف فضل و کرم سے ہو ہر خطا یا رب/بِحَمْدِاللہ عَبْدُاللہ کا نورِ نظر آیا/منانا جشنِ میلادُ النّبی ہر گز نہ چھوڑیں گے

مُعاف فضل و کرم سے ہو ہر خطا یا رب

مُعاف فضل و کرم سے ہو ہر خطا یا رب

ہو مغفِرت پئے سلطانِ انبیا یارب

بِلا حساب ہو جنّت میں داخِلہ یارب

پڑوس خُلْد میں  سَروَر کا ہو عطا یا رب

نبی کا صَدْقہ سدا کیلئے تُو راضی ہو

کبھی بھی ہونا نہ ناراض  یا خدا یارب

تِرے حبیب اگر مسکراتے آجائیں

تو بِالیقین اٹھے قَبْر جگمگا یارب

ہمارے دل سے نکل جائے اُلْفتِ دنیا

دے دل میں عشقِ محمدمِرےرچا یارب

نبی کی دید ہماری ہے عید یا اللہ

عطا ہو خواب میں دیدارِ مصطفےٰ یا رب

تُلیں نہ حَشْر میں عطّارؔ کے عمل مولیٰ

بِلا حساب ہی تُو اس کو بخشنا یارب

وسائلِ بخشش(مُرَمَّم)،ص79

از شیخِ طریقت امیرِ اہلِ سنتدَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ

 


 

بِحَمْدِاللہ عَبْدُاللہ کا نورِ نظر آیا

بِحَمْدِاللہ عَبْدُاللہ کا نورِ نَظَر آیا

مبارَک آمِنہ کا نورِ دل لختِ جگر آیا

ربیعِ پاک تجھ پر اہلِ سنّت کیوں نہ قرباں ہوں

کہ تیری بارہویں تاریخ وہ جانِ قمر آیا

علومِ اوّلین و آخِریں ہیں جس کے سینے میں

خبر ہے ذَرّہ ذَرّہ کی جسے وہ باخبر آیا

شبِ میلادِ اقدس تھی مسرّت ذرّہ ذرّہ کو

مگر ابلیس اپنے ساتھیوں میں نوحہ کر آیا

حکومت ایسی نافذ  ہے کہ ان کا حکم پاتے ہی

علی کے واسِطے مغرب سے سورج لوٹ کر آیا

کہو ہر روز کتنی بار تم یاد اس کی کرتے ہو

خیالِ اُمّتِ عاصی جسے آٹھوں پہر آیا

جمیلِؔ قادری جب سَبز گُنبد ان کا دیکھوں گا

تو سمجھوں گا مری نخلِ تمنّا میں ثَمر آیا

قبالہءِبخشش،ص36

از مداح الحبیب مولاناجمیل الرحمٰن قادری رضویعَلَیْہِ رَحمَۃُ  اللہ القوی

 


 

منانا جشنِ میلادُ النّبی ہر گز نہ چھوڑیں گے

منانا جشنِ میلادُ النّبی ہر گز نہ چھوڑیں گے

جُلوسِ پاک میں جانا کبھی ہرگز نہ چھوڑیں گے

لگاتے جائیں گے ہم یا رسولَ اللہ کے نعرے

مچانا مرحبا کی دھوم بھی ہرگز نہ چھوڑیں گے

منائیں گے خوشی ہم حَشْر تک جشنِ ولادت کی

سجاوٹ اور کرنا روشنی ہرگز نہ چھوڑیں گے

اگرچہ جان بھی اس راہ میں قربان ہوجائے

مگر نعتِ نبی پڑھنا کبھی ہرگز نہ چھوڑیں گے

نبی کے نام پر سو جان سے قربان ہوجائیں

غلامانِ نبی ذکرِ نبی ہرگز نہ چھوڑیں گے

جو کوئی جس کا کھاتا ہے اُسی کے گیت گاتا ہے

نبی کے گیت گانا ہم کبھی ہرگز نہ چھوڑیں گے

تسلّی رکھ نہ ہو مایوس قَبْر و حَشْر میں عطّارؔ

تجھے تنہا رسولِ ہاشمی ہرگز نہ چھوڑیں گے

وسائلِ بخشش (مُرَمَّم)،ص414

از شیخِ طریقت امیرِ اہلِ سنت  دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ

 

Share

Articles

Comments


Security Code