پتھر سے نکلنے والی اونٹنی/ بچو!ان سے بچو/ غریب کا گدھا/ مدنی منّوں کی کاوشیں

اللہ پاک نے قومِ ثَمُود کی ہِدایت کےلئے اپنے نبی حضرتِ سیّدنا صالح علیہ الصلوۃ والسلام کو بھیجا۔ قومِ ثَمُود کو اللہ کریم نے اتنی طاقت عطا فرمائی تھی کہ وہ پہاڑوں (Mountains) کو تراش کر گھر بنالیا کرتے تھے۔ حضرتِ سیّدُنا صالح علیہ السلام نے جب اپنی قوم کو کفر و شرک سے بچنے کا فرمایا اور ایمان لانے کی دعوت دی تو اُنہوں نے آپ سے ایک معجزہ طلب کیا، وہ یہ تھا کہ آپ ہمارے سامنے پہاڑ کی اِس چٹّان سے ایک ایسی اونٹنی(Camel) نکالئے جس میں فلاں فلاں  صفات ہوں، چنانچہ آپ علیہ السلام نے دُعا مانگی اور چٹان سے ویسی ہی اونٹنی نکل آئی جیسی وہ چاہتے تھے، اونٹنی نے باہر آکرایک بچّہ بھی پیدا کیا۔ یہ معجزہ دیکھ کر کچھ لوگ ایمان لے آئے مگر باقی نہ لائے۔ اِس بستی میں ایک ہی تالاب تھا، آپ علیہ الصلوۃ والسلام نے قوم سے فرمایا کہ ایک دن تالاب سے اونٹنی  پانی پیے گی اور دوسرے دن قوم پیا کرے گی، اِس کے علاوہ تم لوگ اونٹنی کو نہ مارنااور  نہ ہی قتل کرنا، ورنہ عذاب آجائے گا۔ چند دن تو یہ معاملہ چلتا رہا مگر اِس کے بعد قَیدار نام کے ایک آدمی نے بستی والوں کےکہنے پر بُدھ کے دن اونٹنی کو قتل کردیا۔ آپ علیہ السلام نے قوم سے فرمایا: تم سب تین دن بعد ہلاک ہوجاؤ گے، پہلے دن تمہارے چہرے پیلے، دوسرے دن لال اور تیسرے دن کالے ہوجائیں گے۔ چنانچہ ایسا ہی ہوا  اور اتوار کے دن دوپہر کے قریب ایک خوفناک آواز آئی جس سے بستی والوں کے دل پھٹ گئے۔اس کے بعد شدید زلزلہ (Earth Quake) آیا اور پوری آبادی تباہ ہوگئی اور سب  ہلاک ہوگئے۔ حضرت سیّدنا صالح علیہ الصلوۃ والسلام ایمان لانے والے  چند افراد کے ساتھ پہلے ہی بستی سے روانہ ہوکر جنگل کی طرف جاچکے تھے، اس لئے یہ حضرات محفوظ رہے۔(ماخوذ از صراط الجنان،ج3،ص360-361۔ عجائب القرآن، ص103- 104)اِس بستی کے آثار آج بھی ’’مَدائن صالح(عرب شریف)‘‘ میں موجود ہیں۔

اونٹنی کی خصوصیات٭یہ اونٹنی جنّت میں جائے گی۔ (غمز العیون البصائر،ج3،ص239) ٭اس اونٹنی کو قراٰن مجید میں اللہ کریم نے اپنی اونٹنی فرمایا ہے۔ (پ8، الاعراف:73) ٭یہ اونٹنی ایک دن میں تالاب کا ساراپانی پی جاتی تھی۔ (عجائب القرآن، ص104ملخصاً) ٭جس دن اس اونٹنی کے پینے کی باری ہوتی اس دن یہ اتنا دودھ (Milk) دیتی تھی کہ پورے قبیلے کو کافی ہوجاتا تھا۔ (صراط الجنان،ج3،ص361) ٭اس کا سینہ 60 گز کا تھا۔ (صراط الجنان،ج7،ص141) ٭قیامت کے دن حضرتِ سیّدنا  صالح علیہ السلام اسی اونٹنی پر سوار ہوکر میدانِ محشر  میں تشریف لائیں گے۔ (تاریخ دمشق،ج10،ص459)

حکایت سے حاصل ہونے والے مدنی پھول

پیارے مَدَنی مُنّو اور مُنِّیو! ٭چٹان سے نکلنے والی یہ اونٹنی حضرتِ سیّدنا صالح علیہ السلام کا معجزہ تھی۔  ٭ اللہ کے محبوبوں سے نسبت رکھنے والی چیزیں بھی اللہ کی محبوب ہوتی ہیں اور ان کی توہین سے اللہ ناراض ہوتا ہے۔  ٭اللہ والوں سے نسبت رکھنے والی چیزوں مثلاً ان کے گھر، لباس اور استِعمال کی چیزوں کا احتِرام کرنا چاہئے۔ ٭اللہ والوں کے احکامات پر عمل کرنے میں بھلائی ہی بھلائی ہوتی ہے۔

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

٭ ذمّہ دارشعبہ فیضانِ امیرِ اہلِ سنّت،المدینۃ العلمیہ،باب المدینہ کراچی

Share

پتھر سے نکلنے والی اونٹنی/ بچو!ان سے بچو/ غریب کا گدھا/ مدنی منّوں کی کاوشیں

ٹیچرکی پیٹھ پیچھے نقل اُتارنا: اچّھے کاموں میں اچّھے لوگوں کی نقل(Copy) کرنا بہت اچھی بات ہے، جیسے ہم امّی ابّو کو نماز پڑھتے دیکھیں تو ہمیں بھی اپنے پیارے اللہ  کریم کو راضی کرنے کیلئے نماز سیکھ کرابھی سے پڑھنے کی عادت ڈالنی چاہئے تاکہ  بڑے ہو کر ہم بھی پکّے نمازی بن جائیں۔ لیکن ہر چیز کی نقل اُتارنا اچّھی بات نہیں ہے۔ کچھ گندے بچّے ٹیچر کے جانے کے بعد کلاس رُوم میں ٹیچر کی نقلیں اُتارتے ہیں، ٹیچر کی سِیٹ پر بیٹھ جاتے ہیں، ٹیچر کی طرح شکلیں بناتے ہیں، اُن کی جیسی باتیں کرتے ہیں اور ٹیچر کا مذاق اڑاتے ہیں۔ یہ بہت بُری حرکتیں ہیں اور ٹیچر کی بے ادبی ہے۔ یاد رکھیں! جو بچّے اپنے ٹیچرز کا ادب نہیں کرتے وہ بڑے ہو کر اچّھے آدمی نہیں بنتے، اس لئے ہمیں اپنے ٹیچر کی نقلیں نہیں اُتارنی چاہئیں، اُن کا ادب کرنا چاہئے اور ان کی بات ماننی چاہئے۔ دوسروں سے چیزیں مانگنا:دوسروں کے آگے ہاتھ پھیلانا اور مانگ مانگ کر چیزیں کھانا بہت خراب عادت ہے، سمجھدار بچّے اپنے پیسوں سے ہی چیزیں کھاتے ہیں، دوسروں سے کبھی کوئی چیز نہیں مانگتے۔ پنسل، ریزر، شارپنر، اسکیل وغیرہ بھی اپنا لے کر آیا کریں، دوسروں سے مانگ مانگ کر استعمال نہ کریں۔ ہوم ورک کرنے کے بعد اپنی چیزیں اِدھر اُدھر نہ پھینکیں، بلکہ اچّھی طرح سنبھال کر رکھیں تاکہ  گم ہوجانے کی وجہ سے دوسروں سے مانگنی  نہ پڑے۔  مانگنے والا بچّہ کسی کو اچھا نہیں لگتا،ایسے بچّے سے کوئی دوستی بھی نہیں کرتا۔دُعا: یااللہ! ہمیں با ادب اور اچّھا بچّہ بنا! مانگ مانگ کر چیزیں کھانے اور استعمال کرنے سے بچا۔

اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم

Share

پتھر سے نکلنے والی اونٹنی/ بچو!ان سے بچو/ غریب کا گدھا/ مدنی منّوں کی کاوشیں

ایک غریب آدمی کا گدھا(Donkey) گھاس کم ملنے اور  کام زیادہ کرنےکی وجہ سے بہت کمزور ہو گیا تھا۔ ایک دن وہ گدھا حکومتی گھوڑوں(Horses)کےباندھنےکی جگہ جا پہنچا۔ جب اُس نے دیکھا کہ کئی لوگ اِن گھوڑوں کی خدمت میں لگے ہیں، اِنہیں وقت پرگھاس دیتے،اِن کی مالش کرتے، لید اور پیشاب صاف کرتے ہیں اور یہ گھوڑے خُوب موٹے تازے ہیں، تو کہنے لگا: اے اللہ! میں تو بھوک  کی وجہ سے کمزور ہوگیا ہوں جبکہ یہ گھوڑے طرح طرح کی حکومتی خدمات کی وجہ سے موٹے تازے ہیں  اور یہ  کہتا ہوا چلا گیا۔

کچھ دِنوں بعد یہ حکومتی گھوڑے فو جیوں کی سواری کے لئے جنگ  میں بھیجے گئے۔ جب گھو ڑے جنگ سے واپس آئے اوراس گدھے کا وہاں سے گزر ہوا تواس نے دیکھا کہ گھوڑوں کے  جسموں پر تِیروں اور تلواروں کے زخم ہیں، خون بہہ رہا ہے، جس کی وجہ سے وہ بہت تکلیف میں ہیں،یہ دیکھ کر گدھا کہنے لگا: اے اللہ ! مجھےکم گھاس پر گزارا کرنا اور بھوک برداشت کرنا منظور ہے لیکن ان زخموں کے ساتھ  یہ  عیش و آرام نہیں چاہئے۔ (مثنوی کی حکایات ،ص 319 تا 321 ملخصاً)  

پیارے مَدَ نی مُنّو اور مَدَنی مُنّیو! اس کہانی سے یہ سبق ملا کہ ہم بھی دوسرے بچّوں کے پاس اچھے کپڑے یامہنگے کھلونے وغیرہ دیکھ کر   اپنے والدین سے  اُن جیسی چیزیں دلانے کی ضد نہ کریں، اللہ پاک ہمیں جس حال میں بھی رکھےخوش رہیں اوراللہ پاک کا شکر ادا کرتے رہیں  کیونکہ اگر ہم شکر ادا کریں گے تو اللہ  پاک ہمیں اور نعمتیں بھی عطا فرمائے گا ۔اللہ  پاک ہمیں شکر ادا کرنے کی توفیق عطافرمائے۔ اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

٭ماہنامہ فیضان مدینہ،باب المدینہ کراچی

Share

پتھر سے نکلنے والی اونٹنی/ بچو!ان سے بچو/ غریب کا گدھا/ مدنی منّوں کی کاوشیں

پیارے مدنی منّو اور مدنی منّیو! آپ بھی اس طرح کی پیاری پیاری ڈیزائننگ بنا کر ’’ماہنامہ فیضانِ مدینہ‘‘ کے نیچے دیئے گئے ایڈریس پر بذریعہ ڈاک بھیجئے یا اچھی اچھی سی تصاویر بنا کر واٹس ایپ یا ای میل کیجئے۔ منتخب تصاویر شائع کی جائیں گی۔

Email: Mahnama@dawateislami.net

WhatsApp: +923012619734

ڈاک کا پتا: ’’ ماہنامہ فیضانِ مدینہ‘‘ عالمی مدنی مرکز فیضانِ مدینہ پرانی سبزی منڈی کراچی

Share

Articles

Comments


Security Code