Book Name:ALLAH Pak Kay Piyaray Naam

محمد نام والے کو عذاب دینے سے مجھے حیا آتی ہے۔ ([1])

آنکھوں کا تارا نامِ مُحَمَّد                 دِل کا اُجالا نامِ مُحَمَّد

شیدا نہ کیوں ہوں اس پر مسلماں           ربّ کو ہے پیارا نامِ مُحَمَّد

پائیں مرادیں دونوں جہاں میں            جس نے پُکارا نامِ مُحَمَّد

روزِ قیامت میزان و پُل پر                 دے  گا  سہارا  نامِ  مُحَمَّد([2])

صَلُّوْا عَلَی الْحَبیب!                                               صَلَّی اللّٰہُ عَلٰی مُحَمَّد

2-        اللہ پاک کو اَسْماءِ حُسنیٰ کے ذریعے ہی پُکارو!

 اے عاشقانِ رسول !   اَسْماءِ حُسنیٰ والی آیت جو ابتدا میں ہم نے سُنی ، اس میں اَسْماءِ حُسنیٰ کا ذِکْر کرکے اللہ پاک نے فرمایا :

فَادْعُوْهُ بِهَا۪-  (پارہ : 9 ، سورۃالاعراف : 180)                

ترجمہ کنز العرفان : تَو اسے ان ناموں سے پُکارو

یعنی جب اللہ پاک کے سارے نام اچھے ہی اچھے ہیں تو اللہ پاک کو انہی اچھے ناموں سے پُکارو! انہی اچھے ناموں کے ذریعے اللہ پاک سے دُعا مانگا کرو...! ([3])

اپنے اَعْضاء کو کارآمد بنانے کا طریقہ

مشہور مُفَسِّرِ قرآن ، حکیم الاُمَّت مفتی احمد یار خان نعیمی رَحمۃُ اللہِ عَلَیْہ فرماتے ہیں : اس (اَسْماءِ حُسنیٰ) والی آیتِ کریمہ سے پچھلی آیت (یعنی سورۂ اعراف کی آیت : 79) میں کُفَّار کا ذِکْر ہے اور اُس میں بتایا گیا ہے کہ کافِروں کے پاس دِل تو ہے مگر بےکار ہے کیونکہ وہ دِل سے


 

 



[1]...الاسنی فی شرح اسماءالحسنیٰ و صفاتہ ، صفحہ : 50-51۔

[2]...قبالۂ بخشش ، صفحہ : 133-134۔

[3]...تفسیرِ نعیمی ، پارہ : 9 ، سورۂ اعراف ، زیرِ آیت : 180 ، جلد : 9 ، صفحہ : 387۔