Book Name:Shan e Sahaba

سب صَحابہ کا وَسیلہ سیِّدا                   کیجئے رَحمت اے نانائے حُسین

(وسائل بخشش،ص۱۶۸)

صَلُّو ْا عَلَی الْحَبِیْب!                                          صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

راہِ ہدایت کے دَرَخْشَنْدہ ستارے

       میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! معلوم ہواکہ ہمیں نبیِّ کریم ، رَء ُوْفٌ رَّحیم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ سے مَحَبَّت رکھتے ہوئے ،آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کی ذاتِ پاک پر دُرُودشریف کی کثرت کے ساتھ ساتھ آپ کے تمام صحابۂ کرام عَلَیْہِمُ الرِّضْوَان  سے بھی مَحَبَّت رکھنی چاہیے،معاذاللہ عَزَّ  وَجَلَّ کہیں ایسا نہ ہو کہ بعض صحابۂ کرام عَلَیْہِمُ الرِّضْوَان سے تو بے پناہ عِشق ومَحَبَّت کااِظہارہواور باقی اَصحابِ رسول کے لئے دل میں عَداوت بھری ہواگر ایسا ہوا تو بُغْض کے سبب اللہعَزَّ  وَجَلَّ اور اس کے رسولصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی لَعْنت ہو گی۔ جیسا کہ

لَعْنتِ خُداوندی کا مُسْتَحِق

       حضرت عُوَیْم بِن سَاعِدَہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُسے روایت ہے کہ سرکارِ نامدار، مدینے کے تاجدار صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا اِرْشادِخُوشبودار ہے : ’’بے شک اللہعَزَّ  وَجَلَّ نے مجھے مُنْتَخَب فرمایا اور میرے لئے میرے اَصحاب کو پسند فرمایا ،پھر ان میں سے میرے وزیر، مُعاوِن اور رِشتے دار بنائے ،فَمَنْ سَبَّہُمْ فَعَلَیْہِ لَعْنَۃُ اللّٰہِ وَالْمَلَائِکَۃِ وَالنَّاسِ اَجْمَعِیْنَ پس جو انہیں گالی دے گا ، اس پر اللہ عَزَّ  وَجَلَّ ،اس کے فِرِشتوں اورتمام لوگوں کی لَعْنت ہے، لَایَقْبَلُ اللّٰہُ مِنْہُ یَوْمَ الْقِیَامَۃِ صَرْفًا وَّلَا عَدْلًا ،روزِ قیامت اللہ عَزَّ  وَجَلَّ نہ اس کا کوئی فَرض قَبول فرمائے گانہ نفل ۔ ‘‘(الصواعق المحرقہ،ص۴)

       مزیدفرمایا :میرے صحابہ کے بارے میں اللہ عَزَّ  وَجَلَّ  سے ڈرتے رہو ’’ میرے بعدا نہیں (اپنی