Book Name:Ghos-e-Pak Ka Khandan

کرے(یعنی نیکی کی دعوت دے اور بُرائی سے مَنْع کرے۔)

ہمارے معاشرے میں عام طور پر یہ آخری صورت بکثرت پائی جاتی ہے(یعنی معلوم ہے کہ وہ مانیں گے نہیں مگر نہ ماریں گے اورنہ گالیاں دیں گے)، اس پر عمل کر کے ثواب کمانا چاہیے، مزید اس کا فائدہ یہ بھی ہوگا کہ جب بُرائی کے خلاف بولنے والے بڑھیں گے تو بُرائیاں ختم ہونا شروع ہوجائیں گی  اورہرگھر اَمن کا گہوارہ بننا شروع ہو جائے گا،ہر طرف سُنّتوں کی مدنی بہاریںآ جا جائیں گی،نفرتوں کی دِیواریں محبتوں کی فضاؤں میں تبدیل ہونا شروع ہو جائیں گی،کئی  کئی سالوں سے بچھڑے ہوئے خاندان آپس میں مِل جائیں گے، رُوٹھے ہوئے مَان جائیں گے،صحابہ و اہلبیت رَضِیَ اللہُ عَنْہُمْ اَجْمَعِیْنْ کے مبارک دَور کی یادتازہ ہو جائے گی۔

مجھے  تم  ایسی دو  ہمّت  آقا،                                                  دُوں سب کو نیکی کی دعوت آقا

بنا دو مجھ کو بھی نیک خصلت،                                                   نبیِّ   رَحمت   شفیعِ   اُمّت

(وسائلِ بخشش مرمم،ص۲۰۸)

صَلُّو ْا عَلَی الْحَبِیْب!                                  صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

والدہ محترمہ کے اوصاف

      میٹھےمیٹھےاسلامی بھائیو!ہم حضور غوثِ پاک رَحْمَۃُ اللّٰہِ عَلَیْہ کے والدِ محترم رَحْمَۃُ اللّٰہ ِ عَلَیْہ   کی سیرت کے بارے میں سُن رہے تھے۔آئیے!اب حضور غوثِ پاک رَحْمَۃُ اللّٰہِ عَلَیْہ کی والدۂ ماجدہ رَحْمَۃُ اللّٰہ ِ عَلَیْہا کے بارے میں بھی کچھ سنتے ہیں۔یاد رہے!حضورغوثِ پاکرَحْمَۃُ اللّٰہِ عَلَیْہکی والدہ ماجدہ اُمُّ الخیر حضرت سَیِّدَتُنا فاطمہرَحْمَۃُ اللّٰہ ِ عَلَیْہا(اپنے)وقت کی انتہائی نیک سیرت خاتون اورتقویٰ و پرہیزگاری کی پیکر تھیں ۔(سیرتِ غوث  اعظم،ص۵۱ ملخصاً)آپ  رَحْمَۃُ اللّٰہ ِ عَلَیْہا دیگر بہت سی بہترین خوبیوں سے بھی آراستہ تھیں