جہری نمازوں میں عورت کا جہراًقراءت کرنا

عورت کا مخصوص ایّام میں ایصال ثواب کرنا

سوال:کیا فرماتے ہیں علمائےدین و مفتیانِ شرعِ متین اس مسئلہ کے بارے میں کہ کیا عورت اپنےمخصوص ایّام میں ایصالِ ثواب اور دَم کرسکتی ہے؟

بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ

اَلْجَوَابُ بِعَوْنِ الْمَلِکِ الْوَھَّابِ اَللّٰھُمَّ ھِدَایَۃَ الْحَقِّ وَالصَّوَابِ

اپنے کسی نیک عمل کا ثواب کسی دوسرے کو پہنچانا ایصالِ ثواب ہے، اس کے لیے طہارت شرط نہیں، عورت حیض و نفاس کی حالت میں بھی ایصالِ ثواب کرسکتی ہے۔ البتہ ہمارے ہاں ایصالِ ثواب کا ایک معروف معنیٰ یہ ہے کہ سورۂ فاتحہ وغیرہ پڑھ کر کسی کو ثواب پہنچایا جائے، اس صورت میں تفصیل یہ ہے کہ عورت ان ایّام میں قرآنِ پاک کی تلاوت نہیں کرسکتی، اس کے علاوہ ذکر و دُرود وغیرہ پڑھ کر ایصالِ ثواب کرنا چاہے تو کرسکتی ہے اور اس میں بہتر یہ ہے کہ وضو یا کم از کم کلّی کرکے پڑھے۔ یہی تفصیل دَم سے متعلق ہے کہ قرآنِ پاک کی آیت تلاوت کرکے دَم کرنا جائز نہیں، اس کے علاوہ اوراد و وظائف پڑھ کر دَم کرنا جائز ہے۔

تنبیہ:عورت حیض و نفاس کی حالت میں مطلقاً قرآنِ پاک کی تلاوت نہیں کرسکتی، لیکن تلاوت ِ قر آن کی نیت نہ ہو،بلکہ حمد وثنا یادعا کے طور پر پڑھنا چاہے تووہ آیات کہ جن میں حمد و ثنا یا دعاکی نیت ممکن ہے انہیں اس نیت سے پڑھ سکتی ہے، پھر اس حمد و ثنا کا ثواب کسی کو ایصال کرنا چاہے یا اس حمد و ثنا کی برکت سے شفا وغیرہ حاصل ہو، اس نیت سے کسی پر دَم کرنا چاہے تو یہ بھی جائز ہے۔ البتہ حروفِ مقطعات یا وہ آیات کہ جن میں اللہ عَزَّوَجَلَّ نے متکلِّم کے صیغے سے اپنی حمد فرمائی ہے انہیں بعینہٖ اسی صیغہ کے ساتھ پڑھنا یا جن سورتوں کے شروع میں” قُلْ“ہے،انہیں قُلْ کے ساتھ پڑھنا، حمد وثنا اور دعا کی نیت سے بھی جائز نہیں کہ ان میں یہ نیت ممکن نہیں ہے۔

وَاللہُ اَعْلَمُ عَزَّوَجَلَّ وَ رَسُوْلُہٗ اَعْلَم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم

کتبــــــــــــــــــــــہ

مفتی فضیل رضا عطّاری

جہری نمازوں میں عورت کا جہراً قراءت کرنا

سوال:کیافرماتے ہیں علمائے کرام اس مسئلہ کے بارے میں کہ جس طرح منفرد شخص کو اختیار ہوتا ہے کہ جہری نمازوں میں وہ جہر (یعنی بُلند آوازسے قراء ت)کرسکتا ہے تو کیا عورت کو بھی اختیار ہے کہ وہ بھی اکیلے نماز پڑھتے ہوئے جہری نمازوں میں جہراً قراءت(یعنی بُلند آوازسے قرا ء ت) کر سکتی ہے ؟

بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ

اَلْجَوَابُ بِعَوْنِ الْمَلِکِ الْوَھَّابِ اَللّٰھُمَّ ھِدَایَۃَ الْحَقِّ وَالصَّوَابِ

عورت کو جہری نماز میں بھی قراءت میں جہر کرنا منع ہےکیونکہ مرد اورعورتوں کی نماز میں کئی امور میں فرق کتبِ فقہ میں مذکور ہے اِنہی فرق والے احکام میں سے ایک حکم یہ بھی ہے کہ عورت جہری نمازوں میں بھی جہر نہیں کرے گی ۔

وَاللہُ اَعْلَمُ عَزَّوَجَلَّ وَ رَسُوْلُہٗ اَعْلَم صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم

مُجِیْب مُصَدِّق

ابو الحسن جمیل احمد غوری عطّاری مفتی فضیل رضا عطّاری

Share

جہری نمازوں میں عورت کا جہراًقراءت کرنا

پیاز چھیلنے (Peel) کے طریقے

ہنڈیا کی تیاری میں پیاز (Onion) کا استعمال بہت اہم ہے، لیکن پیاز کاٹنے کے دوران آنکھوں میں آنے والے پانی کے سبب اسےکاٹنا مشکل سمجھا جاتا ہے۔٭پیاز کاٹنے میں آنسو نہ آئیں اس کےلئے پیاز کو چند گھنٹوں کے لئے فریج میں رکھ دیں پھر نکال کر کاٹنے سے آنسو نہیں آئیں گے یا کم آئیں گے۔ ایک طریقہ یہ بھی ہےکہ پیاز کو پانی کے برتن میں رکھ کر کاٹیں۔٭پیاز کو احتیاط سے چھیلیں صرف چھلکے والی ایک تہہ اُتاریں، عام طور پر اس میں بہت بے احتیاطی ہوتی ہے اور پیاز ضائع ہو جاتی ہے۔ پیاز کو درمیان (Center) سے کاٹ کر اُوپری کاغذی تہہ ہٹادیں ۔

پیاز محفوظ(Preserve)کرنے کے طریقے

پیاز چھیلنے کے بعد، دھو کر باریک کاٹ کر جیسے بَگھار (تڑکا لگانے) کے لئے کاٹتے ہیں، اسٹیل کے برتن میں پھیلا کر دھوپ میں 2سے 3دن کے لئے رکھ دیں۔ اب اس کو اچھی طرح خشک ہو کر کڑک ہونے دیں، پھر اس کو خشک مسالا پیسنے والی مشین میں پیس کر اچھی طرح آٹا چھاننے والی چھنّی سے چھان لیں۔ چھاننے کے بعد جو موٹی پیاز رہ جائے اس کو دوبارہ پیس لیں اور کسی شیشے کی بوتل میں بھر کر رکھ لیں،کھانا جلدی تیار کرنے اور عمدہ بنانے میں استعمال کریں۔ ٭اگر کسی کھانے کو بگھار دیناہوتو پیاز کو صرف چند گھنٹے ہی دُھوپ میں رکھیں، پھر پیاز کو گرم تیل میں براؤن کر لیں ۔٭بگھارکی ہوئی پیاز کومحفوظ کرنا چاہیں تو کوکنگ آئل (Cooking Oil) میں اچھی طرح براؤن کرکے باریک پِیس کر کسی بوتل میں بھر کر رکھ لیں(ورنہ خراب ہونے کااندیشہ ہے( بغیر فریج کے بھی رکھ سکتے ہیں۔ جلد کھانا بنانے کے لئے استعمال کریں۔٭بغیر چِھلی ہوئی پیاز کو خُشک جگہ پر رکھیں ایسی جگہ کا انتخاب کریں جو ہَوادار ہو،کم روشنی والی جگہ زیادہ بہتر ہے۔ اس بات کا خاص خیال رہے کہ آلو (Potato) اور پیاز ایک ہی جگہ نہ رکھیں ورنہ پیاز جلد خراب ہو سکتے ہیں۔ ٭پیاز کو پلاسٹک کی تھیلی میں رکھنے سے بھی گُریز کریں۔ ٭چھلی ہوئی پیاز کو ریفریجریٹر میں10سے14دن تک Air Tight Bag میں محفوظ رکھ سکتے ہیں۔جبکہ کٹی ہوئی پیاز کو 7سے10دن تک محفوظ کیا جا سکتا ہے۔پَکی ہوئی پیاز (Cooked Onion) کو فِریزَرْ میں Air Tight Bag میں تین مہینے تک محفوظ کیا جا سکتا ہے۔

اللہ کریم ہمیں وقت کا دُرست استعمال کرنے اور اپنا وقت اللہ پاک کو راضی کرنے والے کاموں میں صرف کرنے کی سعادت عطا فرمائے۔اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم

ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

٭…اُمِّ انس عطاریہ

Share

Articles

Comments


Security Code