Book Name:Hazrat Sayyiduna Saad bin abi Waqas

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

حضرتِ سیِّدُنا سعد بن ابی وقاص رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ

دُرُود شریف کی فضیلت

با کمال فرشتہ:

شیخ طریقت، امیر اہلسنت، بانیٔ دعوتِ اسلامی حضرت علامہ مولانا ابوبلال محمد الیاس عطار قادری رضوی ضیائی دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ کی مشہورِ زمانہ کتاب’’فیضانِ سنّت‘‘ جلداول صفحہ ۱۷۷ پر ہے :  سرکارِ مدینہ، قرارِ قلب وسینہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم   کا فرمانِ شفاعت نشان ہے :  بے شک اللہتعالیٰ نے ایک فِرِشتہ میری  قَبْر پر مُقَرّر  فرمایا ہے جسے تمام مخلوق کی آوازیں سننے کی طاقت عطا فرمائی ہے، پس قیامت تک جوکوئی مجھ پر دُرُودِ پاک پڑھتا ہے تو وہ مجھے اُس کا اور اُسکے باپ کا نام پیش کرتے ہوئے یوں کہتا ہے :  فُلاں بن فُلاں نے آپ (صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم ) پر دُرُودِ پاک پڑھا ہے۔([1])

میں قُرباں اِس ادائے دَسْتْ گیری پر مِرے آقا

مدد کو آ گئے جب بھی پکارا یا رسولَ اللہ

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                    صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

سُبْحٰنَ اللہِ عَزَّ وَجَلَّ! دُرُود شریف پڑھنے والا کس قَدر بَخْتْوَر ہے کہ اُس کا نام بمع ولدیت بارگاہِ رسالت صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم میں پیش کیا جاتا ہے۔ یہاں یہ نکتہ بھی اِنتہائی



[1]    مجمع الزوائد،  الحدیث : ۱۷۲۹۱، ج۱۰، ص ۲۵۱



Total Pages: 25

Go To