Book Name:Naik Bannay aur Bananay kay Tariqay

دعادافع بلا ہے

            مکی مدنی سرکار صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ   کا فرمان مشکبارہے:  ’’   بَلا اترتی ہے پھر دعا اُس سے جاملتی ہے پھر دونوں قیامت تک جھگڑا کرتی رہتی ہیں ،  یعنی دعا اُس  ’’      بَلا ‘‘  کو اترنے نہیں دیتی۔ ‘‘  (المستدرک للحاکم ج۲ص۱۶۲حدیث۱۸۵۶)

عبادات میں دعا کا مقام

      حضرت سیدنا ابوذَرغِفَاری رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ ارشاد فرماتے ہیں :  ’’ عبادات میں دعا کی وہی حیثیت ہے جو کھانے میں نمک کی۔ ‘‘  (مصنف ابن ابی شیبۃ ج۷ ص۴۰حدیث۴)

دعا کے تین فائدے

        اللہ عَزَّوَجَلَّ کے پیارے محبوب صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  ارشاد فرماتے ہیں : ’’ جو مسلمان ایسی دُعا کرے جس میں گناہ اور قطع رحمی کی کوئی بات شامل نہ ہو تو اللہ عَزَّوَجَلَّ اُسے تین چیزوں میں سے کوئی ایک ضرور عطا فرماتا ہے: یا  {1}  اُس کی دُعا کا نتیجہ جلد ہی اس کی زندگی میں ظاہر ہوجاتا ہے، یا  {2}  اللہ  عَزَّوَجَلَّکوئی مصیبت اس بندے سے دُورفرمادیتا ہے، یا  {3}  اُس کیلئے آخِرت میں بھلائی جمع کی جاتی ہے۔ ‘‘ (المستدرک للحاکم ج۲ص۱۶۳حدیث ۱۸۵۹)

            ایک اور روایت میں ہے کہ ’’  بندہ(جب آخِرت میں اپنی دعاؤ ں کا ثواب دیکھے گاجو دنیا میں مُسْتَجاب (یعنی مَقبول ) نہ ہوئی تھیں تو) تمنّا کرے گا،کاش !  دنیا میں میری کوئی دعا قَبول نہ ہوتی۔‘‘ (المستدرک للحاکم ج۲ص۱۶۵ حدیث ۱۸۶۲)

            میٹھے میٹھے اِسلامی بھائیو! دیکھا آپ نے! دُعارائِگاں تو جاتی ہی نہیں ،  اِس کا دنیا میں اگر اثر ظاہر نہ بھی ہو تو آخِرت میں اَجر و ثواب مِل ہی جائے گا لہٰذا دُعامیں سُستی کرنا مناسب نہیں ۔

مدنی قافلے کے جدول میں شامل دعائیں

 {1} جنازہ دیکھ کر پڑھئے

سُبْحٰنَ الْحَیِّ الَّذِیْ لَا یَمُوْتُ

ترجمہ: وہ ذات پاک ہے جوزندہ ہے اُسے کبھی موت نہیں آئے گی۔            (احیاء العلوم ج۵ ص۲۶۶ ملخصًا)

 {2}   قبرستان میں داخل ہوتے وقت کی دعا

اَلسَّلَامُ عَلَیْکُمْ یَآ اَھْلَ الْقَبُوْرِ یَغْفِرُ اللّٰہُ لَنَا وَ لَکُمْ اَنْتُُُمْ سَلَفُنَا وَ نَحْنُ بِالْاَثَرِ

ترجمہ: اے قبر والو!  تم پر سلام ہو، اللّٰہ تعالٰی ہماری اور تمہاری مغفرت فرمائے اور تم ہم سے پہلے پہنچ گئے اور ہم پیچھے آنے والے ہیں ۔             (الحصن الحصین  ص۱۱۵)

 {3}   قبر پر مٹی ڈالتے وقت کی دعا

مِنْهَا خَلَقْنٰكُمْ وَ فِیْهَا نُعِیْدُكُمْ وَ مِنْهَا نُخْرِجُكُمْ تَارَةً اُخْرٰى

ترجمہ: ہم نے زمین ہی سے تمہیں بنایا اور اسی میں تمہیں پھر لے جائیں گے اور اسی سے تمہیں دوبارہ نکالیں گے۔                          (الفتاوی الھندیۃ ج۱ص۱۶۶)

 {4}   بیت الخلامیں داخل ہونے سے پہلے کی دُعا

اَللّٰھُمَّ اِنِّیْٓ اَعُوْذُ بِکَ مِنَ الْخُبُثِ وَالْخَبَآئِثِ

 ترجمہ: اے  اللہ  ! عَزَّوَجَلَّ میں ناپاک جن اور جنیوں سے تیری پناہ مانگتاہوں ۔ (صحیح البخاری ج۴ ص۱۹۵حدیث۶۳۲۲)

                        چونکہ پاخانے میں گندے جنات رہتے ہیں ،  اس لئے یہ دعا پڑھنی چاہئے۔   (مراٰۃ المناجیح ج۱ص۲۵۹)

{5}  بیت الخلا سے باہر آنے کے بعد کی دعا

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ الَّذِیْٓ اَذْھَبَ عَنِّی الْاَذٰی وَعَافَانِیْ

ترجمہ: اللّٰہتعالیٰ کاشکرہے جس نے مجھ سے اذیت دورکی اورمجھے عافیت دی۔

                                                                    (مصنف ابن ابی شیبۃ  ج۷ ص۱۴۹حدیث۲)

 {6}   شیطان سے بچنے کا عمل

لَآ اِلٰـہَ اِلَّا اللّٰہُ وَحْدَہٗ لَا شَرِیْکَ لَہٗ  لَہُ الْمُلْکُ وَ لَہُ الْحَمْدُ وَ ہُوَ عَلٰی کُلِّ شَیْئٍ قَدِیْرٌ

 ترجمہ: اللّٰہ عزَّوَجَلَّ کے سوا کوئی معبود نہیں وہ تنہا ہے، اس کا کوئی شریک نہیں اس کے لئے ملک وحمد ہے اور وہ ہر شے پر قادر ہے۔

            حضرت ابوہریرہ رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ سے مروی ہے کہ نبی مُکَرَّم صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کا فرمانِ عالیشان ہے: ’’ جس نے یہ کلمات دن میں سو بار کہے تواس کایہ عمل دس غلام آزادکرنے کے برابر ہوگااوراس کے نامۂ اعمال میں سو نیکیاں لکھی جائینگی اوراس کے سوگناہ معاف کردیئے جائیں گے اوریہ کلمات اس دن شام تک شیطان سے اس کی حفاظت کریں گے اورکوئی شخص اس سے بہترعمل لے کر نہیں آئے گامگروہ جس نے اس سے زیادہ یہ عمل کیا۔ ‘‘  (صحیح  البخاری  ج ۲  ص ۴۰۲  حدیث ۳۲۹۳)

 



Total Pages: 194

Go To