Book Name:Hajj o Umrah Ka Mukhtasar Tariqa

یاد رکھئے ! سرکارِنامدار صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ اپنے مزارِپُرانوار میں عین حیاتِ ظاہِری کی طرح زندہ ہیں اور آپ کو بھی دیکھ رہے ہیں بلکہ آپ کے دل میں جو خیالات آرہے ہیں اُن پربھی مُطَّلع یعنی آگاہ ہیں  ۔ خبردار !جالی مبارک کو بوسہ دینے یا ہاتھ لگانے سے بچئے کہ یہ خِلافِ ادب ہے کہ ہمارے ہاتھ اِس قابِل ہی نہیں کہ جالی مبارک کو چھُو سکیں  ۔ لہٰذا چارہاتھ (یعنی تقریباًدوگز)دور ہی رہیے ۔ کیا یہ کم شَرَف ہے کہ اللہ عَزَّ وَجَلَّ کے پیارے حبیب صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے آپ کو اپنے مُواجَھَۂ اقدس کے قریب بلایااوریقینا رحمتِ عالم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی نگاہِ کرم اب خُصوصیت کے ساتھ آپ کی طرف ہے ۔    ؎

دیدارکے قابل توکہاں میری نظرہے

یہ تیری عنایت ہے کہ رُخ تیراادھرہے

سرکارصلَّی اللّٰہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلِّم کی خدمت میں سلام عرض کرنے کاطریقہ

            اب ادب وشوق کے ساتھ درد بھری مُعْتَدِل(یعنی درمیانی) آواز میں ان الفاظ کے ساتھ سلام عرض کیجئے :

اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ اَیُّھَاالنَّبِیُّ وَرَحْمَۃُ اللّٰہِ وَبَرَکَاتُہٗ ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَارَسُوْلَ اللّٰہِ ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَاخَیْرَ خَلْقِ اللّٰہِ ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَاشَفِیْعَ الْمُذْنِبِیْنَ ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ وَعَلٰی اٰلِکَ وَاَصْحَابِکَ وَاُمَّتِکَ اَجْمَعِیْنَ  ۔

صِدّیقِ اکبر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی خدمت میں سلام

            پھر مشرِق کی جانب (یعنی اپنے سیدھے ہاتھ کی طرف) آدھے گز کے قریب ہٹ کر(قریبی چھوٹے سوراخ کی طرف) حضرت سیِّدُناصدّیقِ اکبر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے چہرۂ انور کے سامنے دست بستہ کھڑے ہو کریوں سلام عرض کیجئے :

اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَا خَلِیْفَۃَ رَسُوْلِ اللّٰہِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَا وَزِیْرَرَسُوْلِ اللّٰہِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَاصَاحِبَ رَسُوْلِ اللّٰہِ فِی الْغَارِوَرَحْمَۃُ اللّٰہِ وَبَرَکَاتُہٗ  ۔

فاروقِ اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی خدمت میں سلام

پھراتناہی جانبِ مشرِق مزیدسَرَک کر حضرتِ سیِّدُنا فاروقِ اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے رُوبُروعرض کیجئے :

اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَااَمِیْرَالْمُؤْمِنِیْنَ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَامُتَمِّمَ الْاَرْبَعِیْنَ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ یَاعِزَّالْاِسْلَامِ وَالْمُسْلِمِیْنَ وَرَحْمَۃُ اللّٰہِ وَبَرَکَاتُہٗ ط

دوبارہ ایک ساتھ شیخین کی خدمت میں سلام

            پھربالِشت بھَر جانِبِ مغرِب یعنی اپنے اُلٹے ہاتھ کی طرف سَرَک جایئے اور دونوں چھوٹے سُوراخوں کے درمیان کھڑے ہوکرایک ساتھ صِدّیق اکبر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ اور فاروقِ اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی خدمت میں اس طرح سلام عرض کیجئے : ۔

اَلسّلَامُ عَلَیکُمَا یَاخَلِیْفَتَیْ رَسُوْلِ اللّٰہ ط اَلسَّلَامُ عَلَیْکُمَایَاوَزِیْرَیْ رَسُولِ اللّٰہ ط  اَلسّلَامُ عَلَیْکُمَا یَا ضَجِیْعَیْ رَسُوْلِ اللّٰہ وَرَحْمَۃُ اللّٰہِ وَبَرَکَاتُہٗ ط اَسْئَلُکُمَا الشَّفَاعَۃَعِنْدَ رَسُوْلِ اللّٰہِ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَعَلَیْکُمَا وََبَارَِکَ وَسَلَّم ط یہ تمام حاضِریاں قبولیتِ دعا کے مقامات ہیں  ۔

دعا کے لیے جالی مبارک کو پیٹھ نہ کیجئے

            جب جب سُنہری جالیوں کے پاس حاضِری نصیب ہو اِدھراُدھرہرگزنہ دیکھئے اورخاص کرجالی شریف کے اندردیکھناتوبُہت ہی جُراء ت ہے ، قبلے کی طرف پیٹھ کئے کم ازکم چارہاتھ جالی مبارَک سے دُورکھڑے رہئے اورمُوَاجَہَہ شریف کی طرف رخ کرکے سلام عرض کیجئے ۔ دُعاسُنہری جالیوں کی طرف رُخ کرکے ہی مانگئے کہیں ایسا نہ ہوکہ آپ کعبے کو منہ کرلیں اورکعبے کے کعبے کو پیٹھ ہو جائے ۔

مَدَنی اِلتِجا:دَورانِ طواف بلکہ مسجدَینِ کریمین میں اپنے موبائل فون بند رکھئے ۔ مَسئلہ: فون کی میوزیکل ٹیون مسجد کے باہَر بھی ناجائز وگناہ ہے اس سے ہمیشہ کے لیے توبہ کرلیجئے  ۔

مہکتامَدَنی پھول:حجِ مبرور (یعنی مقبول حج)کی نشانی ہی یہ ہے کہ پہلے سے بہتر ہوکرپلٹے ۔ (فتاوٰی رضویہ ج۲۴ ص۴۶۷)

قابل توجہ

            جس پر حج فرض ہوگیا اُس پراورجونفلی حج کرنے جائے اُس پر بھی فرض ہے کہ وہ حج کے ضروری مسائل جانتاہو ۔ یہ چندورقی رسالہ صرف ’’اشارات‘‘ پرمبنی اورقطعاً نامکمَّل ہے ، جنہوں نے حج کے تفصیلی احکام سیکھ لئے ہیں صرف ان ہی کے لئے یہ رسالہ کارآمدہے ، لہٰذاحج کے احکام جاننے کے لیے ’’رفیق الحرمین‘‘ کا ضَرور مُطالعہ فرمائیے نیزضَرورت کے مسائل علمائے کرام سے معلوم کرتے رہیے ۔  

 



Total Pages: 17

Go To