Book Name:163 Madani Phool

مُوَاجَہَہ میں (یعنی چِہرے کے سامنے)  کھڑے ہو کر ہو اور اس (یعنی قبر والے) کی پائِنتی (پا۔اِن۔تِی یعنی قدموں ) کی طرف سے جائے کہ اس کی نگاہ کے سامنے ہو، سرہانے سے نہ آئے کہ اُسے سر اُٹھا کر دیکھنا پڑے(فتاوٰی رضویہ مخرّجہ ج ۹ص۵۳۲ ) خ  قبرستان میں ا ِس طرح کھڑے ہوں کہ قبلے کی طرف پیٹھ اورقبر والوں کے چہروں کی طرف منہ ہو اِس کے بعد کہئے: اَلسَّلامُ عَلَیْکُمْ یَا اَھْلَ الْقُبُوْرِ یَغْفِرُ اللہُ لَنَا وَلَکُمْ اَنْتُمْ لَـنَا سَلَفٌ وَّنَحنُ بِالْاَثَر ترجمہ:ایقَبْر والو! تم پر سلام ہو، اللہ عَزَّوَجَلَّ ہماری اور تمہاری مغفرت فرمائے، تم ہم سے پہلے آگئے اور ہم تمہارے بعد آنے والے ہیں (عا لمگیری ج ۵ ص ۳۵۰ ) خجو قبرستان میں داخل ہو کر یہ کہے: اللہُمَّ رَبَّ الاَْجْسَادِ الْبَالِیَۃِ وَالْعِظَامِ النَّخِرَۃِ الَّتِیْ خَرَجَتْ مِنَ الدُّنْیَا وَہِیَ بِکَ مُؤْمِنَۃٌ اَدْخِلْ عَلَیْہَا رَوْحًا مِّنْ عِنْدِکَ وَسَلاَمًا مِّنِّی ترجمہ: اے اللہ عَزَّوَجَل!(اے) گل جانے والے جِسموں اور بوسیدہ  ہڈّیوں کے رب!جو دنیا سے ایمان کی حالت میں رخصت ہوئے تو ان پر اپنی رحمت اور میرا سلام پہنچا دے۔  توحضرتِ سیِّدُنا آدم عَلَیْہِ السَّلام سے لے کر اس وقت تک جتنے مؤمن فوت ہوئے سب اُس (یعنی دُعا پڑھنے والے) کے لیے دعائے مغفِرت کریں گے (مُصَنَّف ابن اَبی شَیْبہج۸ ص ۲۵۷ )خشفیعِ مجرمان صَلَّی اللہُ تَعَالٰی علیہ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کا فرمانِ شَفاعت نشان ہے: جو شخص قبرستان میں داخِل ہُوا پھر اُس نے سُورَۃُ الْفَاتِحَۃِ ، سُورَۃُ الْاِخْلَاصاور سُورَۃُ التَّکَاثُر  پڑھی پھر یہ دُعا مانگی: یا اللہ عَزَّ وَجَلَّ! میں نے جو کچھ قراٰن پڑھا اُس کا ثواب اِس قبرستان کے مومن مرد وں اور مومِن عورَتوں کو پہنچا ۔ تو وہ تمام مومِن قِیامت کے روز اس (یعنی

 



Total Pages: 40

Go To