Book Name:Chal Madina ki Saadat mil gayi

کی سعادت حاصل ہوئی جس میں امیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکاسنّتوں بھرابیان بنام  ’’ شہزادیٔ کونین کی سادگی ‘‘ سننے کی سعادت نصیب ہوئی۔اس بیان میں آپ دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہنے شہزادیٔ کونین، والدہ ٔحسنین سیّدہ فاطمۃُالزَّہرارضی اللہ تعالی عنہاکی سادہ زندگی اور پردے کی پابندی کاذکرفرمایاجسے سن کرمیرے دل میں یہ احساس پیداہواکہ مجھے بھی پردے کی پابندی کرنی چاہیے۔میں نے بیان کے دوران ہی یہ عہدکرلیاکہ میں آج ہی سے مَدَنی برقع کی پابندی شروع کرتی ہوں ، وہ دن اورآج کادن میں نے اپنے اوپرمَدَنی برقع کولازم کرلیا۔اَلْحَمْدُلِلّٰہ عَزَّ وَجَلَّ تادم تحریرحلقہ مشاورت کی خادمہ کی حیثیت سے دعوتِ اسلامی کے مَدَنی کاموں کی خدمت سرانجام دے رہی ہوں

اللّٰہ عَزَّ وَجَلَّ  کی امیرِاَہلسنّت پَررَحمت ہواوران کے صد قے ہماری مغفِرت ہو

صَلُّواعَلَی الْحَبِیب!                           صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد

 {4} مجھے وضوکرنابھی نہیں آتاتھا

        پنجاب (پاکستان) کے شہرکہروڑپکامیں مُقیم ایک اسلامی بہن کابیان ہے:  میری اصلاح کاسبب کچھ اس طرح ہواکہ دعوتِ اسلامی کے مَدَنی ماحول سے وابستہ چندمبلِّغہ اسلامی بہنیں دعوت اسلامی کے زیراہتمام ہونے والے ہفتہ وار سنّتوں بھرے اجتماع کی دعوت دینے کے لئے میرے گھرآئیں ، انہوں نے انفرادی کوشش کرتے ہوئے مجھے اجتماع میں شرکت کرنے کی دعوت پیش کی۔میں نے اجتماع کانام پہلی مرتبہ سناتودل



Total Pages: 27

Go To