Book Name:Kamyab Talib e Ilm kaun?

۱۳۔ مسائل القر آن ص۲۹۰پر ہے ، ہر نماز کے بعد ذیل میں دی ہو ئی دعا اوّل  وآخِر دُرود شریف کے ساتھ ایک بار پڑھ لیں ـ۔

اِنْ شَآءَ اللہ  عَزَّ وَجَلَّ  بال بچے سنّتوں کے پابند بنیں گے اور گھر میں مَدَنی ماحول قائم ہو گا ۔

(اَللّٰھمّٰ)رَبَّنَا هَبْ لَنَا مِنْ اَزْوَاجِنَا وَ ذُرِّیّٰتِنَا قُرَّةَ اَعْیُنٍ وَّ اجْعَلْنَا لِلْمُتَّقِیْنَ اِمَامًا(۷۴)۱۹، الفرقان ۷۴)

ترجمہ کنز الایمان :  اے ہمارے ربّ ہمیں دے ہماری بیبیوں اور ہماری اولاد سے آنکھوں کی ٹھنڈک اور ہمیں پرہیز گاروں کا پیشوا بنا۔

۱۴۔ نافرمان بچّہ یا بڑا جب سویا ہوتواس کے سرہانے کھڑے ہو کر ذیل میں دی ہوئی آیات صرف ایک بار اتنی آواز سے پڑھیں کہ اس کی آنکھ نہ کھلے۔ (مدّت۱۱تا۲۱دن)

بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط بَلْ هُوَ قُرْاٰنٌ مَّجِیْدٌۙ(۲۱) فِیْ لَوْحٍ مَّحْفُوْظٍ۠(۲۲)

(ترجمہ کنز الایمان : بلکہ وہ کمال شرف والا قرآن ہے لوح محفوظ میں ) ۳۰ ا لبروج ۲۱، ۲۲)(اوّل، آخر، ایک مرتبہ درود شریف)

(۱۵) نیز نافرمان اولاد کو فرماں بردار بنانے کے لیے تاحصولِ مراد نمازِ فجر کے بعد آسمان کی طرف رخ کر کے’ ’ یَاشَھِیْدُ‘‘ ۲۱ بار پڑھیں (اوّل وآخر، ایک بار درود شریف)۔

مدنی التجا :  نافرمانوں کو فرماں بردار بنانے کے لیے اَور اد شروع کرنے سے قبل سیدنا امام احمد رضا خانعَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن کے ایصال ثواب کے لیے ۲۵ روپے کی دینی کتابیں تقسیم کر دیں ۔   

مَدَنی گزارش

       طالبُ العلم کو چاہئے کہ’’ اپنی اور ساری دنیا کے لوگوں کی اصلاح کی کوشش ‘‘ کے لئے عاشقانِ رسول کے ہمراہ راہِ خدا عَزَّ وَجَلَّ  میں سفر کرتا رہے ۔اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  عَزَّ وَجَلَّ ! دعوت ِ اسلامی کے سنتوں کی تربیت کے مدنی قافلے 3دن ، 12 دن ، 30 دن اور 12 ماہ کے لئے راہِ خدا عَزَّ وَجَلَّ میں سفر کی سعادت حاصل کرتے رہتے ہیں ۔ ان مدنی قافلوں کی برکت سے ہمیں اپنے طرزِزندگی پر دیانت دارانہ غوروفکر کا موقع میسر آئے گا ، اپنی آخرت کو بہتر سے بہتر بنانے کی خواہش دل میں پیدا ہوگی، جس کے نتیجے میں اب تک کئے جانے والے گناہوں کے ارتکاب پر ندامت محسوس ہوگی اور توبہ کی توفیق ملے گی ۔

        ان قافلوں میں مسلسل سفر کرنے کے نتیجے میں فضول گوئی کی جگہ زبان سے درود ِ پاک جاری ہوجائے گا ، یہ تلاوت قرآن ، حمد ِ الٰہی  عَزَّ وَجَلَّ  اور نعت ِرسول صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہِ وَسَلَّمَکی عادی بن جائے گی ، دنیا کی محبت سے ڈوبا ہوا دل آخرت کی بہتری کے لئے بے چین ہوجائے گا ، ہمارا سراپا اپنے پیارے آقا صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہِ وَسَلَّمَکی سنتوں کا آئینہ دار بن جائے گا ، اسلاف ِ کرام رَحِمَھُمُ اللّٰہُکے نقش ِ قدم پر چلنے کی تڑپ نصیب ہوگی ، مکۃ المکرمہ ومدینۃ المنورہ کے مقدس سفر کی تڑپ نصیب ہوگی ، وقت کی دولت کو محض دنیا کمانے کے لئے صرف کرنے کی بجائے اپنی آخرت کی بہتری کے لئے خدمت ِ دین میں صرف کرنے اور علمِ دین پھیلانے کا شعور نصیب ہوگا۔  اِنْ شَآءَ اللہ   عَزَّ وَجَلَّ

تمت بالخیر واَلْحَمْدُلِلّٰہِ رب العالمین   

ماخذ ومراجع

 (۱)    ترجمہ کنزالایمان،                                                                                                                                                                                                           ضیاء القرآن پبلی کیشنز ، لاہور پاکستان

 (۲)    تفسیر کبیر                                                                                                                                                                                                                                                                    دار احیاء الترا ث العربی بیرو ت

 (۳)    صحیح البخاری                                                                                                                                                                                                               دار الکتب العلمیۃ ، بیروت

(۴)    صحیح مسلم                                                                                                                                                                                                                              دار ا بن حزم ، بیرو ت

(۵)    المسندللامام احمد بن حنبل(علیہ الرحمۃ )                                                                                                دار الفکر ، بیروت

(۶)    جامع الترمذی                                                                                                                                                                                                                   دار الفکر ، بیروت

(۷)    سنن ابی داؤد                                                                                                                                                                                                                                 دار احیاء التراث العربی ، بیروت

 (۸)    سنن ابن ماجہ                                                                                                                                                                                                                    دار المعر فہ ، بیروت

 (۹)    المعجم الکبیر                                                                                                                                                                                                                             دار احیاء التراث العربی ، بیروت

 (۱۰)    مشکوۃ المصابیح                                                                                                                                                                                                      دار الفکر ، بیروت

 (۱۱)    کنزالعمال                                                                                                                                                                                                                                         دار الکتب العلمیۃ ، بیروت

 (۱۲)    فردو س الاخبار                                                                                                                                                                                                            دار الفکر ، بیروت

 (۱۳)    مراۃ المناجیح                                                                                                                                                                                                                   ضیاء القرآن پبلی کیشنز ، لاہور ،

 (۱۴)    القول البدیع                                                                                                                                                                                                                        دار الکتب العلمیۃ، بیروت

 (۱۵)    تذکرۃ الاولیاء                                                                                                                                                             



Total Pages: 22

Go To