Book Name:Wasail e Bakhshish

مَیلے منصوبے عَدُوکے خاک میں   مل جائیں  سب

دے تحفُّظ یاخدا اشرار([1])سے ملتان میں 

 

یارسولَ اللّٰہکے نعروں   کی ہر سُو د ھوم ہے

چار سو رحمت کے بادَل چھاگئے ملتان میں 

درگہ و دربار ہو یا کوچہ و بازار ہو

جس طرف دیکھو عِمامے ہیں   ہرے ملتان میں 

گھر میں   چُوہے بھی توگُھستے ہیں   ٹھگوں  سے ہوشیار!

اپنی چیزوں   کی حفاظت بھی رہے ملتان میں 

نکھرا نکھرا ہے سماں   ہر سَمت ہے چھائی بہار

یاں   خَزاں   کا کام کیا کیسے رہے ملتان میں 

اولیا کا ہے مدینہ رَحمتیں   ہیں   ہر قدم

کوئی بھی محروم پھر کیوں   کر رہے ملتان میں 

اِنْ شَاءَ اللّٰہمیں   بھی جاؤں   گا مِرے اَحباب بھی

تم نہیں   چلتے ہو کیوں   بھائی ارے ملتان میں 

ہرطرف کہتے پھرو ایک ایک کو دعو ت یہ دو

اجتماعِ پاک میں   آپ آئیے ملتان میں 

 

نیّتیں   کر لو، کریں   گے اِنفِرادی کوششیں   

اور ملیں   گے بڑھ کے خود ہر ایک سے ملتان میں 

سب کرو نیّت، کریں   گے قافلو ں   میں   ہم سفر

اب بہت سارے بنیں   گے قافِلے ملتان میں 

’’مجلسِ شوریٰ‘‘ کا جو بھی ہے وفادار اے خدا

 



[1]     شریر کی جمع ۔



Total Pages: 406

Go To