Book Name:Karamaat e Farooq e Azam رضی اللہ تعالیٰ عنہ

حضرتِ سیِّدُنا فاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ رات کو اُٹھ کر نَمازیں ادا فرماتے، اس کے بعد جب رات کا آخِری وَقت آجاتاتو اپنے گھروالوں کو بیدار کرکے فرماتے کہ نماز پڑھو۔پھر یہ آیتِ مُبارَکہ تلاوت کرتے :

وَاۡمُرْ اَہۡلَکَ بِالصَّلٰوۃِ وَ اصْطَبِرْ عَلَیۡہَا ؕ لَا نَسْـَٔلُکَ رِزْقًا ؕ نَحْنُ نَرْزُقُکَ ؕ وَالْعَاقِبَۃُ لِلتَّقْوٰی ﴿۱۳۲۱۶،طٰہٰ:۱۳۲)

ترجَمۂ کنز الایمان:اور اپنے گھر والوں کو نماز کا حکم دے اور خود اس پر ثابت رہ کچھ ہم تجھ سے روزی نہیں مانگتے ہم تجھے روزی دیں گے اور انجام کا بَھلا پرہیزگاری کے لئے۔

(مؤطا امام مالک ج۱ص۱۲۳حدیث ۲۶۵)

امیرُالْمُؤمِنِین،امامُ العادِلین، حضرتِ سیِّدُنا عُمَرفاروقِ اَعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ کے نَمازیوں کی خبر گیری کرنے کی ایک روایت اور مُلاحَظہ فرمایئے نیز اِ س کے مطابِق عمل کا ذِہن بنایئے چُنانچِہ امیرُالْمُؤمِنِینفاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ نے صُبْح کی نَماز میں حضرتِ سیِّدُنا سُلیمان بن ابیحَثْمَہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ کو نہیں دیکھا۔بازار تشریف لے گئے، راستے میں سیِّدُنا سُلیَمان رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ کا گھر تھا اُن کی ماں حضرتِ سیِّدَتُناشِفا رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا کے پاس تشریف لے گئے اور فرمایاکہ صُبح کی نَماز میں ، میں نے سُلَیمان کو نہیں پایا! انہُوں نے کہا: رات میں نَماز(یعنی نَفلیں ) پڑھتے رہے پھر نیند آگئی،سیِّدُنا عُمَرفاروقِ اَعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا:صُبح کی نَماز جماعَت سے پڑھوں یہ میرے نزدیک اِس سے بہتر ہے کہ رات میں


 

 



Total Pages: 48

Go To