Book Name:Islami Behno Ki Namaz

مشکبار مَدَنی ماحول  سے وابَستہ تھے)  اِنفرادی کوشش کرتے ہوئے میرے بھائی جان کوبھی دعوتِ اسلامی کے ہفتہ وار سنّتوں  بھرے اجتماع میں   شرکت کی نہ صِرف دعوت دی بلکہ اپنے ساتھ لے جانا شُروع کردیا۔بھائی جان سُنّتوں  بھرے اجتماع سے واپَسی پر اجتماع کی رُوداد سناتے جن میں   سیِّدی اعلیٰ حضرتعَلَیْہِ رَحمَۃُربِّ الْعِزَّۃ کا ذِکرِ خیر سننے کو ملتا جس کی وجہ سے مجھے دعوتِ اسلامی کے مَدَنی ماحول سے اپنائیَّت سی محسو س ہونے لگی۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّا ِسی اپنائیَّت کی سوچ نے مجھے پہلی بار 1985 ء کے سالانہ سنّتوں   بھرے اجتماع کی خُصُوصی نِشَست میں  شرکت پراُبھارا ۔چُنانچِہ میں   بھی اسلامی بہنوں   کے ساتھ اجتماع میں   شریک ہوئی جہاں   ہم نے پردے میں   رَہ کر سنّتوں   بھرے اجتماع میں   ہونے والا بیان سُنا اور رِقّت انگیز دُعا مانگی۔  اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّ  اسی اجتماع میں   شرکت کی برکت سے مجھے گناہوں   سے توبہ کرنے کی سعادت نصیب ہو ئی،فکر آخِرت  ملی ۔جس پر استِقامت پانے کے لیے میں   نے مَدَنی اِنعامات پر عمل کرنا شُروع کر دیا ۔مَدَنی انعامات کی برکت سے اَلْحَمْدُ لِلّٰہعَزَّوَجَلَّ  مجھے چل مدینہ کی سعادت بھی نصیب ہو گئی ۔ ([1])

چل مدینہ وُہی ہو سکے جس کا دل                       گھر میں   رہ کر بھی اکثر مدینے میں   ہے

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                        صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

{15}  بِغیر آپریشن ولادت ہوگئی

           حیدر آباد  ( بابُ الاسلام سندھ)  کے ایک اسلامی بھائی کے بیان کا لُبِّ لُباب ہے:  غالباً 1998ء کا واقِعہ ہے، میری اہلیہ امّید سے تھیں  ، دن بھی  ’’  پورے‘‘  ہو گئے تھے۔ ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ شاید آپریشن کرنا پڑیگا۔تبلیغِ قراٰن وسنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک ، دعوتِ اسلامی کا بینَ الاقوامی تین روزہ سنّتوں   بھرا اجتِماع  (صحرائے مدینہ ملتان)  قریب تھا۔ اجتِماع کے بعد سنّتوں   کی تربیَّت کے30 دن کے  مَدَنی قافِلے میں   عاشِقانِ رسول کے ہمراہ سفر کی میری نیّت تھی۔اجتِماع کیلئے روانگی کے وقت، سامانِ قافِلہ ساتھ لیکر اَسپتال پہنچا ، چونکہ خاندان کے دیگر افراد تعاون کیلئے موجود تھے، اہلیۂ مُحترمہ نے اشکبار آنکھوں   سے مجھے سنّتوں   بھرے اجتِماع  ( ملتان)  کیلئے الوَداع کیا۔

            میرا ذِہن یہ بنا ہوا تھا کہ اب تو مجھے بینَ الاقوامی سنّتوں   بھرے اجتِماع اور پھر وہاں   سے 30 دن کے مَدَنی قافِلے میں   ضَرور سفر کرنا ہے کہ کاش! اس کی بَرَکت سے عافیّت کے ساتھ وِلادت ہو جائے۔ مجھ غریب کے پاس تو آپریشن کے اَخراجات بھی نہیں   تھے! بَہَر حال میں   مدینۃ الاولیا ملتان شریف حاضِر ہو گیا۔ سنّتوں   بھرے اجتِماع میں   گڑ گڑا کر خوب دعائیں   مانگیں  ۔ اجتماع کی اِختِتامی رِقّت انگیز دُعاء کے بعد میں   نے گھر پرفون کیا تو میری امّی جان نے فرمایا: مبارَک ہو! گزَشتہ رات ربِّ کائنات عزوجل نے بِغیر آپریشن کے تمہیں   چاند سی مَدَنی مُنّی عطا فرمائی ہے۔ میں   نے خوشی سے جھومتے ہوئے عرض کی، امّی جان! میرے  لئے کیا حکم ہے؟آ جاؤں   یا30 دن کیلئے مَدَنی قافِلے کا مسافِر بنوں  ؟ امّی جان نے فرمایا،  ’’ بیٹا !بے فِکر ہو کر مَدَنی قافِلے میں   سفر کرو۔ ‘‘

             اپنی مَدَنی مُنّیکی زیارت کی حسرت دل میں   دبائے اَلْحَمْدُ لِلّٰہعَزَّوَجَلَّ میں   30 دن کے مَدَنی قافِلے میں   عاشِقانِ رسول  کے ساتھ روانہ ہوگیا۔اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّمَدَنی قافِلے میں   سفر کی نیّت کی بَرَکت سے میری مُشکِل آسان ہو گئی تھی مَدَنی قافِلوں   کی بہاروں   کی بَرَکت کے سبب گھر والوں   کا بَہُت زبردست مَدَنی ذِہن بن گیا، حتّٰی کہ میرے بچوں   کی امّی کا کہنا ہے، جب آپ مَدَنی قافِلے کے مسافِر ہوتے ہیں   میں   بچّوں   سمیت اپنے آپ کو محفوظ تصوُّر کرتی ہوں  ۔

زچگی آسان ہو،خوب فیضان ہو                       بیوی بچّے سبھی،خوب پائیں   خوشی

غم کے سائے ڈھلیں  ،قافِلے میں  چلو     خیریت سے رہیں  ،قافِلے میں  چلو

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

 {16} گھر والوں   پر انفرادی کوشِش کیجئے

        اسلامی بہنو! یہ مَدَنی بہاراپنے اندر اسلامی بھائیوں   اور اسلامی بہنوں   سبھی کیلئے رَحمت کے مہکتے مَدَنی پھول لئے ہوئے ہے، اسلامی بہنوں   کو چاہئے کہ وہ اپنے بچّوں   ، ان کے ابّو ،اپنے والِد صاحِب ،بھائیوں   ،وغیرہمَحارِم پر خوب انفِرادی کوشِش کریں  ، اتنی کریں   اتنی کریں   اور اتنی کریں   کہ وہ سب کے سب پکے نَمازی ،سنّتوں   کے عادی ، ہفتہ وار سنّتوں   بھرے اجتِماع کے پابند، مَدَنی انعامات کے عامل ،ہر ماہ تین دن کے  مَدَنی قافلِوں   کے مسافر اور دعوتِ اسلامی کے باعمل مبلِّغ بن جائیں   ۔اس طرح اِنْ شَآءَاللہ عزوجل آپ کے لئے ثواب کا انبار لگ جائے گا۔ سنّتیں   سکھانے اور نیکیوں   کی ترغیب دلانے کا عظیم الشّان ثواب کمانے کے لئے کیا



[1]    امیر اہلسنت دامت برکاتہم العالیہ کے قافلے کے ساتھ حج وزیارت مدینہ       سے مشرف ہونا دعوت اسلامی کے مدنی ماحول میں "چل مدینہ" کی سعادت پانا کہلاتا ہے) مجلس مکتبۃ المدینہ۔



Total Pages: 92

Go To