Book Name:Islami Behno Ki Namaz

ہیں   صَحابہ کے جُھرمَٹ میں   بدرُالدُّجیٰ

نورہی نور ہر سُو مدینے میں   ہے

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                        صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

 اسلامی بہنوں   میں   مَدَنی انقلاب     

         اسلامی بہنو!دیکھاآپ نے ! دعوتِ اسلامی والوں   پر سرکارِ نامدار،باِذنِ پروردگار دو عالم کے مالِک ومُختار ، شَہَنْشاہِ اَبرار صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کاکتنا بڑا کرم ہے ! اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّ  اسلامی بھائیوں   کے ساتھ ساتھ اسلامی بہنوں   میں   بھی دعوتِ اسلامی کے مَدَنی کاموں   کی ہر طرف دھومیں   ہیں  ۔اَلْحَمْدُ لِلّٰہعَزَّوَجَلَّ لاکھوں  لاکھ اسلامی بہنوں   نے بھی دعوتِ اسلامی کے مَدَنی پیغام کو قَبول کیا، فیشن پرستی سے سَر شار مُعاشَرے میں   پروان چڑھنے والی بے شمار اسلامی بہنیں   گناھوں   کے دَلدَل سے نکل کر اُمَّہاتُ الْمُؤْمِنِین اورشہزادیٔ کونَین بی بی فاطِمہرَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُنَّ کی دیوانیاں   بن گئیں  ۔ گلے میں   دُوپٹّا لٹکا کر شاپنگ سینڑوں   اور مَخلوط تفریح گاہوں   میں   بھٹکنے والیوں   ، نائٹ کلبوں   اور سنیما گھروں   کی زینت بننے والیوں   کو کربلا والی عِفَّت مَآب شہزادیوں   رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُنَّ کی شرم و حیا کے صدقے  وہ بَرَکتیں   نصیب ہوئیں  کہ مَدَنی بُرقَع  اُن کے لباس کا جُزْوِ لایَنْفَک بن گیا۔اَلْحَمْدُ لِلّٰہعَزَّوَجَلَّمَدَنی مُنّیوں   اور اسلامی بہنوں  کو قراٰنِ کریم حِفظ ونا ظِرہ کی مفت تعلیم دینے کیلئے کئی مدارِسُ المدینہاور عالِمہ بنانے کیلئے مُتَعَدِّد، ’’ جامِعاتُ المدینہ ‘‘  قائم ہیں   ۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّ دعوتِ اسلامی میں    ’’  حافِظات  ‘‘  اور  ’’  مَدَنِیّہ عالِمات ‘‘ کی تعداد بڑھتی جا رہی ہے۔بَہرحال اسلامی بھائیوں   سے اسلامی بہنیں   کسی طرح پیچھے نہیں   ہیں  ، ۱۴۲۹ سِنِہِجری کے مَدَنی ماہ جمادی الاُولٰی  (جون 2008) میں   پاکستان کے اندر ہونے والے دعوتِ اسلامی کے مدنی کاموں   کی اسلامی بہنوں   کی ’’  مجلسِ مشاورت ‘‘  کی طرف سے ملنے والی کارکردگی کی ایک جھلک مُلاحَظہ ہو:   {1} اِس ایک مَدَنی ماہ میں   ملک بھر کے اندر روزانہ تقریباً 24228گھر درس ہوئے  {2}  روازنہ لگنے والے مدرسۃُ المدینہ  ( بالِغات)  کی تعداد لگ بھگ 3275 اور اِن سے اِستِفادہ کرنے والیوں   کی تعداد تقریباً 34633 {3}  حلقہ / عَلاقہ سطح کے ہفتہ وار سنّتوں   بھرے اجتِماعات کی تعداد تقریباً 3000ان میں   شریک ہونے والیاں   لگ بھگ136245ایک لاکھ چھتّیس ہزار دو سو پینتالیس {4} ہفتہ وار تربیتی حلقوں   کی تعدادتقریباً26052۔

مِری جس قَدَر ہیں   بہنیں   ، سبھی مَدَنی بُرقع پہنیں

انہیں   نیک تم بنانا مَدَنی مدینے والے

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                        صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

{2} میں   نے مَدَ نی بُرقَع کیسے اپنا یا !

             بابُ المدینہ) کراچی  ( کی ایک اسلامی بہن کے بیان کالُبِّ لُبا ب ہے کہ دعوتِ اسلامی کے مَدَنی ماحول سے وابَستہ ہونے سے پہلے میں  بہت زیادہ فیشن اَیبل تھی ، فون کے ذریعے غیر مردوں  سے دوستی کرنے میں   بڑا لُطف آتا،  پڑوس کی شادیوں   میں   رسمِ مہندی وغیرہ کے موقع پَر مجھے خاص طور پر بُلایا جاتا، وہاں   میں   نہ صِرف خُود رَقص کرتی بلکہ دوسری لڑکیوں   کوبھی  ڈانڈیاراسسکھاکر اپنے ساتھ نچواتی،لاتعداد گانے مجھے زَبانی یا د تھے، آواز چونکہ اچھی تھی اس لئے میری سہیلیاں   مجھ سے اکثر گانا سنانے کی فرمائش کیا کرتیں  ۔بدقسمتی سے گھر میں   T.V بَہُت دیکھا جاتا تھا،اس کے بیہودہ پروگراموں   کا میری تباہی میں   بَہُت اہم کردار تھا۔  رَبِیْعُ النُّور شریف کی ایک سہانی شام تھی ،نَمازِ مغرِب کے بعد میرے بڑے بھائی گھر آئے توان کے ہاتھ میں   مکتبۃ المدینہ کے جاری کردہ سنّتوں   بھرے بیانات کی تین کیسٹیں   تھیں  ،ان میں   سے ایک بیان کا نام  ’’ قبر کی پہلی رات ‘‘  تھاخوش قسمتی سے یہ کیسٹ سننے کی میں   نے سعادت حاصِل کی ،قبر کا مرحلہ کس قَدَر کٹھن ہے ،اس کا احساس مجھے یہ بیان سن کر ہوا ۔ مگر افسوس ! میرے دل پر گناہوں   کی لَذّت کااس قَدَرغَلَبہ تھا کہ مجھ میں   کوئی خاص تبدیلی نہ آئی ۔ ہاں  !اتنا فرق ضَرور پڑا کہ اب مجھے گناہوں   کا احساس ہونے لگا ۔ کچھ ہی دن بعد پڑوس میں   دعوتِ اسلامی کی ذِمے دار اسلامی بہنوں   نے بسلسلۂ  ’’ گیارہویں   شریف ‘‘  اجتماعِ ذکرو نعت کا اہتمام کیا۔مجھے بھی شرکت کی دعوت دی گئی ۔ ’’ قبر کی پہلی رات ‘‘  سن کر میرا دل پہلے ہی چوٹ کھاچکاتھا ،چُنانچِہ میں   نے زندگی میں   پہلی باراجتماعِ ذکرو نعت میں   جانے کا ارادہ کیا ۔ مگرمیری حَماقت کہ  خوب میک اپ کر کے جدید فیشن کا لباس پہن کر اجتماع میں   گئی،ایک اسلامی بہن نے وہاں   سنّتوں   بھرا بیان فرمایا،جسے سُن کر میرے دل کی دُنیا زَیر وزَبَر ہوگئی ۔ بیان کے بعدجب منقبت  ’’ یاغوث بلاؤ مجھے بغداد بلاؤ ‘‘  پڑھی گئی، اِس نے گویا گرم لوہے پر ہتھوڑے کا کام کیا ! یوں   میں   دعوتِ اسلامی کے سنّتوں   بھرے اجتماعات میں   شریک ہونے لگی ۔مدنی آقا کی دیوانیوں   کی صحبتوں   کی بَرَکت سے میرے دل میں  گناہوں   سے نفرت پیدا ہوئی، توبہ



Total Pages: 92

Go To