Book Name:Chanday Kay Baray Main Sawal Jawab

رقم سے سنّتوں  کی تربیت کے مَدَنی قافِلے میں  سفر کروا دیا تا کہ وہ مَدَنی ماحول سے قریب ہو جائیں  ۔ ایسی صورت میں  کیا حکمِ شَرعی ہے ؟

جواب :  ایسا کرنے والا ’’ ذمّے دار ‘‘ درحقیقت’’ غیر ذمّے دار‘‘ہے ، اورایسی غلطی کے سبب گُنہگار ہے ، اُسے تاوان بھی دینا ہوگا اور توبہ بھی واجب ۔ ہاں  اگر وہ رقم دینے والا چاہے تو مُعاف کر سکتا ہے اگر وہ معاف نہ کرے تو جتنی رقم غلط استعمال کی اتنی اُس دینے والے ذِمّے دارکو پلّے سے دینی ہو گی یا پلّے سے دی جانے والی رقم نئے سِرے سے خرچ کرنے کی اجازت لینی ہو گی ۔  جب بھی کوئی ایسے موقع پر غریبوں  کی قید لگا کر چندہ پیش کرے تو چندہ قبول کرنے سے پیشتر اُس کو واضِح طور پران لفظوں  میں  کہہ دینا مُفید ہے کہ ’’ آپ ’’غریبوں  ‘‘ کی قید ہٹا کر ہر نیک اور جائز کام میں  خرچ کرنے کے کُلّی اختیارات دے دیجئے کہ اِس رقم سے غریب سفر کرے یا مالدار ، اِس سے کسی کو پورے اَخراجات دیں  گے تو کسی کی حسبِ ضَرورت کمی پوری کریں  گے ، نیز اِس سے مسجِد میں  آئے ہوئے مہمانوں  کی خیر خواہی بھی کی جائے گی وغیرہ ۔ ‘‘(یہاں  بھی یہ بات ذہن میں  رکھئے کہ چندہ پیش کرنے والا اگر خود اُس رقم کا مالک ہے تب تو اُس کا مذکورہ الفاظ سُن کر ہاں  کہنا کار آمد ہو گا اور اگر مالک نہیں  مَثَلاً رقم بھجوانے والے کا بیٹا ، بھائی یا ملازم وغیرہ ہے تو اس چندہ لانے والے ’’وکیل‘‘ کا ہاں  کہنا فضول ہوگا ۔  لہٰذا اصل مالک سے کلّی اختیارات لینے

ہوں گے ۔ ہاں  اگرپہلے ہی سے مالِک نے یہ ساری اجازتیں  دیکر وکیل کو بھیجا ہے تو اب وکیل کااجازت دینا مان لیا جائیگا)

مَدَنی قافِلے کیلئے ملی ہوئی رقم دوسرے دینی کاموں  میں ۔ ۔ ۔ ۔ ؟

سُوال :  مَدَنی قافِلے سفر کروانے کے مَدّ میں  ملا ہوا چندہ دعوتِ اسلامی کے دیگر مَدَنی کاموں  میں  خرچ کیا جاسکتا ہے یا نہیں ؟

جواب :  نہیں  کیا جاسکتا ۔  اُس کو الگ رکھنا ہوگا ، اگر دیگر مَدَنی کاموں  میں  خرچ کر دیا توتاوان و توبہ کی ترکیب بنانی ہو گی ۔ سَہولت اِسی میں  ہے کہ کسی ایک مَدّ میں  چندہ لینے کے بجائے دینے والے کی خدمت میں  ہمیشہ یہ محتاط جملہ ذکر کردینے کی عادت بنالی جائے : برائے کرم! آپ ہمیں  ہر طرح کے نیک اور جائز کام میں  خرچ کرنے کی اجازت عنایت فرما دیجئے ۔

 مالداروں  کو چندہ سے اجتِماع میں  لے جانا کیسا؟

سُوال : کسی اسلامی بھائی نے غریب اسلامی بھائیوں  کوسالانہ بینَ الاقوامی سنّتوں  بھرے اجتِماع( صحرائے مدینہ مدینۃ الاولیاء ملتان شریف)  میں  لے جانے کیلئے رقم پیش کی مگر  ’’ وکیل ‘‘اُس رقم سے اپنے صاحِبِ حیثیَّت دوستوں  کو لے گیا ۔  اب



Total Pages: 50

Go To