Book Name:Sharah Shajra Shareef

امیراہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکے عطاکردہ رسالے’’ شجرہ قادریہ رضویہ ضیائیہ عطّاریہ ‘‘سے  شجرۂ عالیہ پڑھااوراس سلسلے کے تمام بزرگانِ دین رحمہم اللہ   تَعَالٰیعلیہم اجمعین کو ایصال ثواب کر کے ان کے وسیلے سے دعا مانگی۔اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ  ! کا ایسا کرم ہوا کہ ہمارے برابر والوں نے ہمیں بخوشی اپنا مکان رہنے کے لئے دے دیا ۔ یوں  شجرۂ عالیہ قادریہ رضویہ عطاریہ کے وسیلے سے ہمارا یہ مسئلہ حل ہو گیا۔   

        اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  عَزَّوَجَلَّ  شجرۂ عالیہ کی برکتیں اپنی آنکھوں سے دیکھنے کے بعد   شجرۂ عطّاریہ میں موجود اَوراد و وظائف روزانہ باقاعدگی سے پڑھنے کا معمول بنا چکی ہوں ۔اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  عَزَّوَجَل  شجرۂ عالیہ کی برکت سے میرے بگڑے کام بن جاتے ہیں ۔

شجرۂ عطاریہ سے ہمیں تو پیار ہے

ان شآء اللّٰہدو جہاں میں اپنا بیڑا پار ہے

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !   صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(11)مسجد دوبارہ آباد ہوگئی

        بابُ المدینہ(کراچی ) میں مقیم صوبہ سرحد کی ایک عطّاریہ اسلامی بہن کے حلفیہ بیان کا خُلاصہ ہے کہ سرحدی علاقے میں ہماری کچھ زمین ہے ۔جس میں ہم نے ایک مسجد اور مدرسہ بھی بنایا۔ جب وادی میں اذان کی آواز گونجتی تو اس سے پہلے سرکارِ مدینہ ، سُرورِ قلب وسینہ  صَلَّی اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَکی ذات اقدس پردُرود وسلام بھی پڑھا جاتا جس سے فضا مہک اٹھتی ۔ مگر افسوس کہ وہاں پرکچھ لوگوں کو’’ یارسول اللہ  ‘‘کہنا ایک آنکھ نہ بھاتا تھا ۔چنانچہ انہوں نے زبردستی ہماری زمینوں پر قبضہ کر لیا اور میرے بھائی کو اذان سے پہلے دُرودِ پاک پڑھتے ہوئے شہید کرڈالا ۔ان کے تین چھوٹے چھوٹے بچے یتیم ہوگئے۔ اس کے بعد مدرسہ بھی بند ہوگیا اور مسجد میں نمازوں کی ادائیگی کا سلسلہ بھی رک گیا ۔ ہم بہت پریشان تھے کہ اب اس وادی میں سنّتوں کی خدمت کیونکر ہوسکے گی۔ہم نے پیرومُرشد شیخِ طریقت امیرِ اہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کے عطاکردہ  شجرہ عالیہ قادریہ رضویہ عطاریہ کے دُعائیہ اشعار کو اپنا وظیفہ بنا لیا ۔ اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  عَزَّوَجَلَّ   شجرہ عالیہ پڑھنے کی برکت سے ایسی غیبی مدد نصیب ہوئی کہ  مدرسہ بھی دوبارہ کھُل چکا ہے اور مسجد میں نمازوں کا سلسلہ پھر سے شروع ہوگیا اور وادی کی فضاؤں میں اذان سے پہلے دُرُود وسلام کے نغمے بھی گونجنے لگے۔

اللہ  کرم ایسا کرے تجھ پہ جہاں میں

اے دعوت اسلامی تیری دھوم مچی ہو

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !     صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(12)جنّ بھاگ کھڑا ہوا

        بابُ المدینہ (کراچی) کے ایک مَدَنی اسلامی بھائی(دعوتِ اسلامی کے جامعۃ المدینہ سے فارغ التحصیل ہونے والے اسلامی بھائی کومَدَنی کہتے ہیں ) نے بتایا کہ مریم مسجد میں مَدَنی قافِلہ ٹھہرا ہوا تھا۔ شرکائِ قافلہ میں سے ایک اسلامی بھائی عرصۂ دراز سے آسیب زدہ تھے۔اُن پر مسلّط جِنّ ایک روز انہیں تنگ کرنے لگا۔ طبیعت زیادہ خراب ہونے کی بِنا پر شرکائے قافِلہ پریشان ہورہے تھے۔ مَدَنی اسلامی بھائی نے بُلند آوازسے جُونہی شجرۂ عالیہ قادریہ رضویہ عطّاریہ کے دعائیہ اشعار پڑھنے شروع کئے تو جس اسلامی بھائی پر جِنّ تھا وہ چیخنے لگے اور اِدھر ُادھر ہاتھ پاؤں مارنے لگے۔ مگرپڑھنے والے نے شجرۂ عالِیہ پڑھنے کا سلسلہ جاری رکھا۔ اَلْحَمْدُلِلّٰہِ   عَزَّوَجَلَّ  اس کی بَرَکت سے کچھ ہی دیر میں ان کی حالت بہتر ہونے لگی۔شجرۂ عالِیہ پڑھنے والے مَدَنی اسلامی بھائی کا حَلَفِیہ بیان ہے کہ میں نے سرکی آنکھوں سے یہ ناقابلِ فراموش منظر دیکھا کہ قبلہ شیخِ طریقتامیرِ اہلسنت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ وہاں تشریف لے آئے ۔آپ دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کے ہاتھ مبارک میں ’’عصا‘‘ہے اورآپ کے آگے آگے ایک عجیبُ الخلقت شخص(جو غالباً وہی جن تھا جو اسلامی بھائی کو تنگ کر رہا تھا )ّ بدحواسی کے عالم میں بھاگ رہا ہے ۔ یہاں تک کہ وہ جِنّ مسجد سے باہَر نکل کر بھاگ گیا اوراَلْحَمْدُ لِلّٰہعَزَّوَجَلَّ  اُس اسلامی بھائی کی طبیعت سنبھل گئی۔(قوم جنات، ص۲۰۴)

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !   صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(13)صحت یابی مل گئی

         بابُ المدینہ (کراچی) کی ایک اسلامی بہن نے کچھ اس طرح بتایا کہ میری چھوٹی بہن کی طبیعت مسلسل خراب رہتی تھی۔ڈاکٹروں سے بہت علاج کروایا مگر ’’ مرض بڑھتا گیا جوں جوں دوا کی‘‘کے مصداق کچھ افاقہ نہ ہوا۔ان کی بیماری سے سب گھر والے بہت پریشان تھے۔اسی پریشانی کے عالم میں ہم نے امیراہلسنّتدَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکے عطاکردہ رسالے’’ شجرہ قادریہ رضویہ عطّاریہ ‘‘ میں دیا گیا  شجرۂ عالیہ پڑھا۔اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  عَزَّوَجَلَّ  شجرہ ٔ عالیہ پڑھنے کی برکت سے میری بہن کچھ ہی دنوں میں مکمل طورپر صحت یاب ہو گئی۔

آپ جیسا پیر ہوتے کیا غرض دردر پھروں

آپ سے سب کچھ ملا یا غوثِ اعظم دستگیر

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !      صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد   

 



Total Pages: 64

Go To