Book Name:Jannat ki Tayyari

(قَبالۂ بخشش از خلیفہ اعلیٰ حضرت جمیل الرحمن قادری رضوی علیہ ر حمۃ اللہ  القوی)

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !            صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

پَردہ پوشی

         حضرت ِ سَیِّدُنا عقبہ بن عامر رَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ  سے رِوَایت ہے کہ حُضُور سراپا نور، شاہِ غَیُور صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے فرمایا کہ’’ جو اپنے کسی بھائی کے کسی عیب کو دیکھ لے او راُس کی پردہ پوشی کرے تو اللّٰہ   عَزَّ وَجَلَّ   اُسے اُس پردہ پوشی کی وجہ سے جنت میں داخل فرمائے گا۔‘‘ (المعجم الکبیر مسند عُقْبَۃ بن عامر، حدیث ۷۹۵، ج۱۷، ص ۲۸۸)

داخلِ خُلْد کئے جائیں گے اہلِ عِصیاں

جوش پر آئیگی جب شانِ رسولِ عربی

            (قَبالۂ بخشش از خلیفہ اعلیٰ حضرت جمیل الرحمن قادری رضوی علیہ ر حمۃ اللہ  القوی)

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !                 صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

        حضرت ِ ِ سَیِّدُنا ابن عباس رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا سے روایت ہے کہ سرکارِ مَدینہ، فَیْض گنْجِیْنَہصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے فرمایا کہ’’ جو اپنے بھائی کی پردہ پوشی کرے گا اللّٰہ  عَزَّ وَجَلَّ  قِیامت کے دن اُس کی پردہ پوشی فرمائے گا اور جو اپنے بھائی کے را ز کھو لے گا اللّٰہ   عَزَّ وَجَلَّ   اُس کا راز ظاہِرکردے گا یہا ں تک کہ وہ اپنے گھر ہی میں رُسوا ہوجائے گا۔‘‘

(سنن ابن ماجہ، کتاب الحدود ، باب الستر علی المومن ، حدیث ۲۵۴۶، ج۳ ، ص ۲۱۹)

کیوں روکتے ہو خُلْد سے مجھ کو ملائکہ

اچھا چلو تو شافِعِ محشر کے سامنے

(قَبالۂ بخشش از خلیفہ اعلیٰ حضرت جمیل الرحمن قادری رضوی علیہ ر حمۃ اللہ  القوی)

   

            میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!اے کاش!اللہ  تبارک و تَعَالٰی ہمارے عیبوں پر اپنی ستّاری کی چادر ڈال کر بروزِ قیامت ساری مخلوق کے سامنے ہمیں رُسوائی سے بچا لے اور محض اپنے فضل و کرم سے اپنیجَنّتمیں داخل فرما دے۔

اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الاَمِیْن صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ

        عالمِ شریعت، امیر ِاہلسنّت   دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ   ہمیں گُناہوں کے مَرَض سے نَجات دِلا کر نیک بنانا چاہتے ہیں چنانچہمدنی انعام نمبر 42میں ارشادفرماتے ہیں : آج آپ نے کسی مسلمان کے عُیوب پر مطلع ہو جانے پر اِس کی پردہ پوشی فرمائی یا (بِلا مصلحتِ شرعی)اُس کا عیب ظاہرکر دیا؟نیز کسی کی راز کی بات(بغیر اُس کی اجازت)دوسرے کو بتا کر خیانت  تو نہیں کی؟

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !            صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

اللّٰہ  عَزَّ وَجَلَّ   کے لئے مَحَبَّتْ

          حضرتِ سَیِّدُناعبداللہ  بن عَمْرو رَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ  سے رِوَایت ہے کہ میٹھے میٹھے مُصْطفٰی، سُلْطَانِ اَنْبِیائ، حَبِیْبِ کِبْرِیا صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے فرمایا کہ ’’جواللّٰہ    عَزَّ وَجَلَّ    کے لئے کسی سے محبت کرے اور اُسے بتادے کہ میں تجھ سے اللّٰہ   عَزَّ وَجَلَّ   کے لئے محبت کرتا ہوں تو وہ دونوں جنت میں داخل ہوں گے پھر اگر محبت کرنے والا بلند مرتبہ میں ہوگاتو جس سے وہ اللّٰہ   عَزَّ وَجَلَّ    کے لئے محبت کرتا تھا اُسے اُس کے ساتھ مِلادیاجائے گا ۔‘‘(مجمع الزوائد، کتاب الزھد، باب المتحابین فی اللہ  ، حدیث ۱۸۰۱۵، ج۱۰، ص ۴۹۶)

زہے قسمت اشارہ پاکے اُن کی چشمِ رحمت کا

غلاموں کو لُبھا کرلے چلی جنَّت محمد کی

(قَبالۂ بخشش از خلیفہ اعلیٰ حضرت جمیل الرحمن قادری رضوی علیہ ر حمۃ اللہ  القوی)

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !        صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

سلام عام کرنا

         حضرت ِ ِ ِ سَیِّدُناعبداللہ  بن عَمْرورَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ  سے روایت ہے کہ اللّٰہ  کے حبَیِب، حَبِیْبِ لَبِیْب صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے فرمایاکہ ’’رحمن    عَزَّ وَجَلَّ   کی عِبادت کرو اور سَلام کو عام کرو اور کھانا کِھلاؤ جنت میں داخل ہوجاؤ گے۔‘‘                                                  (الاحسان بترتیب ابن حبان ، کتاب البر والاحسان ، باب افشاء السلام ، حدیث ۴۸۹ ، ج۱، ص ۳۵۶)

نبی کے نام لیوا آنے والے ہیں تھکے ہارے

سجائی جاتی ہے اِس واسِطے جنَّت محمد کی

                                                                                                                                                                  (قَبالۂ بخشش از خلیفہ اعلیٰ حضرت جمیل الرحمن قادری رضوی علیہ ر حمۃ اللہ  القوی)

صَلُّو ا عَلَی الْحَبِیب !                  صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد   

گھر میں  بھی سلام کرنا

         حضرتِ سَیِّدُنا ابو اُما مَہ باہِلی رَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ  فرماتے ہیں کہ سرکارِ والا تَبار، ہم بے کسوں کے مددگار، شفیعِ روزِ شُمار، دو عالَم کے مالک و مختار، حبیبِ پروردگارصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ    نے



Total Pages: 31

Go To