Book Name:Jahannam Kay Khatrat

         حضرت ابن عباس رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُمَا  روایت کرتے ہیں کہ حضور  صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے فرمایا ہے کہ آخری زمانے میں ایک ایسی قوم ہو گی جو کالے رنگ کا خضاب لگائے گی جو کبوتروں کے سینے کی طرح بالکل کالا ہو گا۔ یہ لوگ جنت کی خوشبو بھی نہیں پائیں گے۔

(مشکوٰۃ المصابیح ، کتاب اللباس، باب الترجل، الفصل الثانی، الحدیث :  ۴۴۵۲، ج۲ ص۴۹۱۔ المسند للامام احمد بن حنبل، مسند عبد  اللہ  بن عباس، الحدیث ۲۴۷۰، ج۱، ص۵۸۶)

حدیث : ۳

        حضرت ابن عمر رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُمَا  سے روایت ہے کہ حضور صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کروم کے جوتے پہنتے تھے اور اپنی داڑھی کو ورس گھاس اور زعفران سے پیلی رنگتے تھے۔ اور حضرت ابن عمر رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُمَا  بھی یہی کرتے تھے۔(سنن ابی داود، کتاب الترجل، باب ماجاء فی خضاب الصفرۃ، الحدیث۴۲۱۰، ج۴، ص۱۱۷)   

حدیث : ۴

      حضرت ابن عباس رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُمَا  سے روایت ہے انہوں نے کہا کہ ایک شخص مہندی کا خضاب لگا کر حضور  صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کے سامنے سے گزرا تو حضور  صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے فرمایا کہ یہ کیا ہی اچھا خضاب ہے۔ پھر دوسرا آدمی گزرا جو مہندی اور کتم (ایک گھاس) کا خضاب لگائے ہوئے تھا تو حضور  صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے فرمایا کہ یہ اس سے زیادہ اچھا ہے پھر ایک تیسرا آدمی گزرا جو پیلا خضاب لگائے ہوئے تھا تو حضور صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے فرمایا کہ یہ ان سب خضابوں سے زیادہ اچھا خضاب ہے۔(سنن ابی داود، کتاب الترجل، باب ماجاء فی خضاب الصفرۃ، الحدیث : ۴۲۱۱، ج۴، ص۱۱۷ )

حدیث : ۵

         حضرت انس رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ سے مروی ہے کہ سب سے پہلے مہندی اور وسمہ کا خضاب حضرت ابراہیم علیہ السلام نے لگایا اور سب سے پہلے کالا خضاب فرعون نے لگایا۔  

(کنزالعمال، کتاب الزینۃ والتجمل، من قسم الاقوال، الخضاب، الحدیث : ۱۷۳۰۹، الجزء السادس، ص۲۸۳ )

حدیث : ۶

         حضرت عامر رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے کہ بے شک   اللہ  تَعَالٰی اس شخص کی طرف قیامت کے دن نظر رحمت نہیں فرمائے گا جو کالا خضاب لگائے گا۔ 

        (کنزالعمال، کتاب الزینۃ والتجمل، من قسم الاقوال، محظورات الخضاب، الحدیث : ۱۷۳۲۷، الجزء السادس، ص۲۸۴)

حدیث : ۷

         حضرت ابو الدرداء  رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ  سے روایت ہے کہ جو شخص کالا خضاب لگائے گا،   اللہ  تَعَالٰی قیامت کے دن اس کا منہ کالا کرے گا۔

(کنزالعمال، کتاب الزینۃ والتجمل، من قسم الاقوال، محظورات الخضاب، الحدیث : ۱۷۳۲۹، الجزء السادس، ص۲۸۴)

مسائل و فوائد

        حضرت علامہ نووی ’’شارح مسلم ‘‘رَحْمَۃُ   اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ نے فرمایا کہ بالوں کی سفیدی بدلنے کیلئے سرخ یا پیلا خضاب لگانا مرد اور عورت دونوں کیلئے مستحب ہے اور کالے رنگ کے خضاب کے بارے میں مختار مذہب یہ ہے کہ یہ مکروہ تحریمی ہے کیوں کہ حضور  صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے فرمایا  ’’ واجتنبوا السواد ‘‘  یعنی کالے خضاب سے بچو۔

(شرح النووی، کتاب اللباس والزینۃ، باب استحباب خضاب الشیب...الخ، ج۲، ص۱۹۹)

(۵۵)  سونے چاندی کے برتن

        سونے چاندی کے برتنوں میں کھانا پینا، یا ان برتنوں میں تیل رکھ کر اس تیل کو سر میں لگانا یا بدن پر مالش کرنا۔ غرض کسی طرح بھی ان برتنوں کو استعمال کرنا شریعت میں ممنوع و حرام اور گناہ ہے۔ حدیثوں میں بکثرت اس کی ممانعت آئی ہے۔

حدیث : ۱

         حضرت ام سلمہ رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہَا سے روایت ہے کہ رسول   اللہ   صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے فرمایا کہ جو شخص چاندی کے برتنوں میں کچھ پیتا ہے تو گویا وہ اپنے پیٹ میں جہنم کی آگ گھونٹ گھونٹ داخل کرتا ہے۔(صحیح مسلم، کتاب اللباس والزینۃ، باب تحریم استعمال أوانی الذھب...الخ، الحدیث : ۲۰۶۵، ص۱۱۴۲)

حدیث : ۲

         حضرت حذیفہ رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ سے مروی ہے کہ میں نے رسول   اللہ   صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کو یہ فرماتے ہوئے سنا کہ تم لوگ باریک اور موٹے ریشمی کپ



Total Pages: 57

Go To