Book Name:Ummahatul Momineen

                آپ صلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلمپر آثار وحی ظاہرہوئے چند لمحے بعد مسکراتے ہوئے سرکار دو عالم صلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلم  نے فرمایا :کون ہے جو زینب رضی اللہ تعالیٰ عنہا کے پاس جائے اور انہیں بشارت دے کہ حق تعالیٰ نے ان کو میری زوجیت میں دے دیا ہے اور نازل شدہ آیت تلاوت فرمائی۔

          حضور اکرم صلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلم  کی خادمہ حضرت سلمی رضی اللہ تعالیٰ عنہا دوڑیں اور سیدہ زینب رضی اللہ تعالیٰ عنہا کو بشارت دی اور انہوں نے یہ خوشخبری سنانے پر اپنے زیورات اتار کر حضرت سلمی رضی اللہ تعالیٰ عنہا کو عطا کردیئے اور سجدہ شکر بجا لائیں اور دو ماہ روزہ سے رہنے کی نذر مانی۔

   (مدارج النبوت،قسم پنجم،باب دوم،درذکر ازواج مطہرات وی،ج۲،ص۴۷۷)

انفاق فی سبیل اللہ

          ام المؤمنین سیدہ عائشہ صدیقہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا فرماتی ہیں :میں نے کوئی عورت حضرت زینب رضی اللہ تعالیٰ عنہا سے زیادہ نیک اعمال کرنے والی،صدقہ و خیرات کرنے والی، صلہ رحمی کرنے والی،اور اپنے نفس کوہرعبادت وتقرب کے کام میں مشغول رکھنے والی نہیں دیکھی۔

   (مدارج النبوت،قسم پنجم،باب دوم درذکر ازواج مطہرات وی،،ج۲،ص۴۷۸)

          حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے صحت کے ساتھ مروی ہے کہ ایک دن رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلم  نے اپنی ازواج مطہرات سے فرمایا: ’’ تم میں سے جس کے ہاتھ دراز ہیں وہ مجھ سے ملنے میں تم سب پرسبقت کرنے والی ہے۔‘‘ اس کے بعد ازواج مطہرات نے اپنے اپنے ہاتھوں کو بانس کا ٹکڑالے کر ناپنا شروع کردیا


 

 



Total Pages: 58

Go To