Book Name:Zoq-e-Naat

اے دل نہ ڈر ان بلاؤں سے اب

وہ آئی صدائے غوثِ اعظم

 

اے غم جو ستائے اَب تو جانوں

لے دیکھ وہ آئے غوثِ اعظم

 

تارِ نفسِ ملائکہ ہے

ہر تارِ قبائے غوثِ اعظم

 

سب کھول دے عقدہائے مشکل

اے ناخن پائے غوثِ اعظم

 

کیا اُن کی ثنا لکھوں حسنؔ میں

جاں باد فدائے غوثِ اعظم

اسیروں کے مشکل کشا غوثِ اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہ

اَسیروں کے مشکل کشا غوثِ اعظم

فقیروں کے حاجت رَوا غوثِ اعظم

 

گھرا ہے بلاؤں میں بندہ تمہارا

مدد کے لئے آؤ یاغوثِ اعظم

 

تِرے ہاتھ میں ہاتھ میں نے دیا  ہے

تِرے ہاتھ ہے لاج یاغوثِ اعظم

 

مریدوں کو خطرہ نہیں بحر غم سے

کہ بیڑے کے ہیں ناخدا غوثِ اعظم

 

تمہیں دکھ سنو اپنے آفت زَدوں کا

تمہیں دَرد کی دو دَوا غوثِ اعظم

 

بھنور میں پھنسا ہے ہمارا سفینہ

بچا غوثِ اعظم بچا غوثِ اعظم

 

جو دکھ بھر رہا ہوں جو غم سہ رہا ہوں

کہوں کس سے تیرے سوا غوثِ اعظم

 

زمانے کے دُکھ دَرد کی رَنج و غم کی

تِرے ہاتھ میں ہے دَوا غوثِ اعظم

 

 



Total Pages: 158

Go To