Book Name:Zoq-e-Naat

 

دن اور رات میں یکساں دیکھنا

        امام بیہقی رَحْمَۃُ اللّٰہِ تَعَالٰی عَلَیْہ نے بروایت حضرت سیدنا ابن عباس  رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا نقل کیا کہ رسول اللّٰہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم اندھیری رات میں روشن دن کی طرح دیکھتے تھے ۔      

         (الخصائص الکبری للسیوطی، ۱ / ۱۰۴، دارالکتب العلمیۃ بیروت)

 

مجرم ہیبت زدہ جب فرد عصیاں لے چلا

مجرمِ ہیبت زَدہ جب فردِ عصیاں لے چلا

لطف شہ تسکین دیتا پیش یزداں لے چلا

 

دل کے آئینہ میں جو تصویر جاناں لے چلا

محفل جنت کی آرائش کا ساماں لے چلا

 

رَہروِ جنت کو طیبہ کا بیاباں لے چلا

دامن دل کھینچتا خارِ مغیلاں لے چلا

 

گل نہ ہو جائے چراغِ زینت گلشن کہیں

اپنے سر میں میں ہوائے دشت جاناں لے چلا

 

رُوئے عالم تاب نے بانٹا جو باڑا نور کا

ماہِ نو کشتی میں پیالا مہر تاباں لے چلا

 

گو نہیں رکھتے زمانہ کی وہ دولت اپنے پاس

پر زمانہ نعمتوں سے بھر کے داماں لے چلا

 

تیری ہیبت سے ملا تاجِ سلاطیں خاک میں

تیری رحمت سے گدا تخت سلیماں لے چلا

 

ایسی شوکت پر کہ اُڑتا ہے پھریرا عرش پر

جس گدا نے آرزو کی ان کو مہماں لے چلا

 

دَبدبہ کس سے بیاں ہو ان کے نام پاک کا

شیر کے مونھ سے سلامت جانِ سلماں لے چلا

 

صدقے اس رحمت کے ان کو روزِ محشر ہر طرف

ناشکیبا شورِ فریادِ اَسیراں لے چلا

 

ساز و سامانِ گدائے کوئے سروَر کیا کہوں

ان کا منگتا سروَری کے ساز و ساماں لے چلا

 

 

 



Total Pages: 158

Go To