Book Name:Gunaho ke Azabat Hissa 1

حلقوں میں یاد کروائی جانے والی دُعا

تیل لگاتے وَقْت کی دُعا

بِسْمِ اللّٰہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ

ترجمہ: اللہ پاک کے نام سے شروع جو بہت مہربان رَحْمت والا ۔

سرکارِ مدینہ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کا فرمانِ عالی شان ہے : جو بغیر بِسْمِ اللہ پڑھے تیل لگائے تو اُس کے ساتھ 70 شیطان تیل لگاتے ہیں ۔ ( [1] )

٭ ٭ ٭ ٭ ٭ ٭

دُرُود شریف کی فضیلت

فرمانِ مصطفے ٰ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم: اے لوگو! بے شک بروزِ قیامت اس کی دَہشتوں ( یعنی گھبراہٹوں )اور حِسَاب کتاب سے جلد نجات پانے والا شَخْص وہ ہوگا جس نے تم میں سے مجھ پر دُنیا کے اندر بکثرت دُرود شریف پڑھے ہوں گے ۔( [2] )

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!                       صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

( 16 )...یَمِیْنِ غَمُوْس ( جھوٹی قسم )

یَمِیْنِ غَمُوْس ( جھوٹی قسم ) کی تَعْرِیْف

کسی گزرے ہوئے یا مَوْجُودہ مُعَامَلے پر جان بوجھ کر جھوٹی قسم کھائے تو اسے یَمِیْنِ غَمُوْس کہیں گے ۔( [3] )

یَمِیْنِ غَمُوْس ( جھوٹی قَسَم ) کی مِثَالیں

٭ کسی نے قَسَم کھائی: ”اللہ پاک کی قَسَم! زید گھر پر ہے “ اور وہ جانتا ہے کہ حقیقت میں زید گھر پر نہیں ہے تو یہ قَسَم غَمُوْس ( یعنی جھوٹی قَسَم ) کہلائے گی ۔  ( [4] ) ٭ اسی طرح اگر کسی نے قَسَم کھائی: ”اللہ پاک کی قسم! زید نے یہ کام نہیں کیا ہے اور وہ جانتا ہے کہ حقیقت میں زید نے یہ کام کیا ہے تو یہ بھی جھوٹی قَسَم ہے ۔

” یَمِیْنِ غَمُوْس ( جھوٹی قَسَم )“ کے  مُتَعَلِّق  مختلف اَحْکَام

( 1 ): جھوٹی قَسَم کھانا حرام اور جہنّم میں لے جانے والا کام ہے ۔  ( [5] ) ( 2 ): جس نے  جھوٹی قسم کھائی وہ سَخْت گنہگار ہوا، اس پر توبہ واِسْتِغفار فَرْض ہے مگر کفّارہ لازِم نہیں ۔( [6] ) اعلیٰ حضرت، امامِ اہلسنت مولانا شاہ احمد رضا خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن فرماتے ہیں: اس ( یعنی جھوٹی قسم ) کا کوئی کفّارہ نہیں اس کی سزا یہ ہے کہ جہنّم کے کھولتے دریا میں غَوْطے دیا جائے گا ۔( [7] )

آیتِ مُبَارَکہ

لَا یُؤَاخِذُكُمُ اللّٰهُ بِاللَّغْوِ فِیْۤ اَیْمَانِكُمْ وَ لٰكِنْ یُّؤَاخِذُكُمْ بِمَا عَقَّدْتُّمُ الْاَیْمَانَۚ- ( پ٧،المائده: ٨٩ )

ترجمهٔ کنزالايمان: اللہ تمہیں نہیں پکڑتا تمہاری غَلَط فہمی کی قسموں پر ہاں ان قسموں پر گِرِفْت فرماتا ہے جنہیں تم نے مضبوط کیا ۔

 



[1]    عمل اليوم والليلة لابن سنى ،  ص١١٦ ،  حديث: ١٧٤ ومدنی پنج سورہ ،  ص۲۱۵.

[2]     مسند الفردوس ،  ٥ / ٢٧٧ ،  الحديث: ٨١٧٥.

[3]    فتاوى الهنديه ،  كتاب الاَيمان ،  الباب الاول فى تفسيرها    الخ ،   ٢ / ٥٨ ،  بتغير قليل.

[4]    نیکی کی دعوت ،  ص۱۶۲.

[5]     تبيين الحقائق ،  كتاب الايمان ،  ٣ / ١٠٨.

[6]    بہارِ شریعت ،  حصہ نہم ،  قسم کا بیان ،   ۲ / ۲۹۹ ،  بتغیر قلیل وفتاوى هندية ،  كتاب الاَيمان ،  الباب الاول فى تفسيرها     الخ ،  ٢ / ٥٨.

[7]     فتاویٰ رضویہ ،  ۱۳ / ۶۱۱.



Total Pages: 42

Go To