Book Name:Gunaho ke Azabat Hissa 1

حلقوں میں یاد کروائی جانے والی دُعا

آئینہ دیکھتے وَقْت کی دُعا

اَللّٰہُمَّ اَنْتَ حَسَّنْتَ خَلْقِیْ فَحَسِّنْ خُلُقِیْ

ترجمہ: يا اللہ! تُو نے میری صورت تَو اچھی بنائی ہے میرے اَخْلَاق بھی اچھے کر دے ۔( [1] )

دُرُود شریف کی فضیلت

فرمانِ مصطفے ٰ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم: جس نے دن اور رات میں میری طرف شَوق و مَحَبَّت کی وجہ سے تین۳ تین۳ مرتبہ دُرُودِ پاک پڑھا اللہ پاک پر حق ہے کہ اُس کے اُس دن اور اُس رات کے گُناہ بَخْش دے ۔( [2] )

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!                       صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

( 10 )...حَسَد

”حَسَد کی تَعْرِیف

کسی کی دِینی یا دُنیاوی نِعْمَت کے زَوال ( یعنی چھن جانے ) کی تمنَّا کرنا یا یہ خَواہِش کرنا کہ فُلاں شَخْص کو یہ نِعْمَت نہ ملے ، حَسَد ہے ۔( [3] ) حَسَد کرنے والے کو حَاسِد اور جس سے حَسَد کیا جائے اسے مَحْسُود کہتے ہیں ۔

”حَسَد کی مثالَیں

٭ کسی کو مالی طور پر خوش حال دیکھ کر یہ تمنَّا کرنا کہ اس سے یہ نِعْمَت چھن کر مجھے مِل جائے ۔ ٭ خوش اِلْحَان ( خوبصورت آواز والے ) نعت خوان کے بارے میں یہ خواہش کرنا کہ اس کی آواز خراب ہو جائے ٭ ایک شَخْص دِینی یا دُنْیَوی اِعْتِبار سے کسی منصب پر فائِز ہے اس کے بارے میں تمنَّا کرنا کہ یہ مَقام ومَرْتَبہ اس سے چھن جائے ۔

”حَسَد “ کے مُتَعَلِّق  مختلف اَحْکَام

( 1 ): حَسَد حرام ہے ۔( [4] ) ( 2 ): اگر غیر اِخْتِیَاری طور پر دل میں کسی کے بارے میں حَسَد آیا اور یہ اس کو بُرا جانتا ہے تو اس پر گُنَاہ نہیں ( جب تک کہ اَعْضَا سے اس کا اَثَر ظاہِر نہ ہو ) ۔( [5] )

آیتِ مُبَارَکہ

وَ لَا تَتَمَنَّوْا مَا فَضَّلَ اللّٰهُ بِهٖ بَعْضَكُمْ عَلٰى بَعْضٍؕ- ( پ٥، النساء: ٣٢ )

ترجمۂ کنزالایمان: اور اس کی آرزو نہ کرو جس سے اللہ نے تم میں ایک کو دوسرے پر بڑائی دی ۔

فرمانِ مصطفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

حَسَد سے بَچَو! بے شک حَسَد نیکیوں کو ایسے کھا جاتا ہے جیسے آگ لکڑی کو کھاتی ہے ۔( [6] )

حَسَد کے گُنَاہ میں مبتلا ہونے کے بَعْض اَسْبَاب

( 1 ): بُغْض وکینہ( 2 ): خود پر دوسرے کی بَرتَرِی بَرداشْت نہ کرنا ( 3 ): تکبُّر ( 4 ): اِحْسَاسِ کمتری ( 5 ): حُبِّ جاہ ۔

 



[1]    الحصن الحصين ،  فيما يتعلق بالامور العلوية    الخ ،  ص١٠٢ ومدنی پنج سورہ ،  ص۲۰۶.

[2]     معجم كبير ،  ٨ / ٦٩ ،  حديث: ١٥٣١٦.

[3]    الحديقة الندية ،  الباب الثانى ،  الخلق الخامس عشر الحسد ،  المبحث الاول ،   ٣ / ٣٤ ،  ملتقطًا.

[4]    فتاویٰ رضویہ ،  ۱۳ / ۶۴۸ ۔

[5]    الحديقة الندية ،  الباب الثانى ،  الخلق الخامس عشر الحسد ،  المبحث الاول ،   ٣ / ٣٤ ،  بتغیر قلیل.

[6]    ابو داود ،  كتاب الادب ،  باب فى الحسد ،  ص٧٦٨ ،  حديث: ٤٩٠٣.



Total Pages: 42

Go To