Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 02

جواب     شرک و کفر کبھی نہ بخشے جائیں گے یعنی جس کی موت کفر و شرک پر ہو اس کی ہرگز مغفرت نہ ہوگی ۔  ان کے سوااللہ تعالیٰ جس گناہ کو چاہے گا اپنے محبوب بندوں کی شفاعت سے یا محض اپنے کرم سے بخش دے گا ۔  (  [1])

سوال      کیا دل میں کسی کُفرِیہ بات کا خیال آنے سے انسان کافر ہوجاتا ہے ؟

جواب     کُفرِیہ بات کا دل میں خیال پیدا ہوا اور زبان سے بولنا بُرا جانتا ہے تو یہ کفر نہیں بلکہ خاص ایمان کی علامت ہے کہ دل میں ایمان نہ ہوتا تو اسے بُرا کیوں جانتا ۔  (  [2])

سوال      زبان پھسلنے کے سبب کُفرِیہ بات منہ سے نکل گئی تو کیا حکم ہے ؟

جواب     کہنا کچھ چاہتا تھا اور زبان سے کفر کی بات نکل گئی تو کافر نہ ہوا یعنی جبکہ اس اَمر سے اظہارِ نفرت کرے کہ سننے والوں کو بھی معلوم ہو جائے کہ غلطی سے یہ لفظ نکلا ہے اور اگر بات کی پَچْ کی (  یعنی بات پر اَڑگیا) تو اب کافر ہو گیا کہ کفر کی تائید کرتا ہے ۔  (  [3])

سوال      کسی شخص کو اپنے ایمان میں شک ہو تو ایسے کے بار ے میں کیا حکم ہے ؟

جواب     جس شخص کو اپنے ایمان میں شک ہو یعنی کہتاہے کہ مجھے اپنے مومن ہونے کا یقین نہیں یا کہتا ہے معلوم نہیں میں مومن ہوں یا کافر وہ کافر ہے  ۔ ہاں اگر اُس کا مطلب یہ ہو کہ معلوم نہیں میرا خاتمہ ایمان پر ہوگا یا نہیں تو کافر نہیں ۔  جو شخص ایمان و کفر کو ایک سمجھے یعنی کہتا ہے کہ سب ٹھیک ہے خدا کو سب پسند ہے وہ کافر ہے ۔  یونہی جو شخص ایمان پر راضی نہیں یا کفر پر راضی ہے وہ بھی کافر ہے ۔  (  [4])

سوال      کسی کافر کو مسلمان کرنے کا طریقہ بتائیے ؟

جواب     کافِر کو مسلمان کرنے کے لئے پہلے اُ سے اُس کے باطِل مذہب سے توبہ کروائی جائے مَثَلاً مسلمان ہونے کا خواہش مندکرسچین ہے تو اُس سے کہئے کہ کہو :  ”میں کرسچین مذہب سے توبہ کرتا ہوں ۔ “جب وہ یہ کہہ لے پھر اُسے کلمہ طیِّبہ یا کلمۂ شہادت پڑھائیے اگر عَرَبی نہیں جانتا تو جو بھی زَبان سمجھتا ہو اُسی زبان میں ترجَمہ بھی کہلوا لیجئے اگر وہ عَرَبی کلمہ نہیں پڑھ پارہا تو اُسی کی زَبان میں اُس سے شَھادَتَیْن کا اِقرار باآواز کروالیجئے یعنی وہ کہہ دے کہ اللہ عَزَّ  وَجَلَّ کے سوا کوئی بھی عبادت کے لائِق نہیں ، محمّد صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم اللہ عَزَّ  وَجَلَّکے رسول ہیں ۔ اِس طرح سے وہ شخص مسلمان ہو جائے گا ۔  (  [5])

ولایت

سوال      اللہ عَزَّ  وَجَلَّ نے اولیاء کرام کی کیا شان بیان فرمائی ہے ؟

جواب       ارشادِ باری تعالیٰ ہے : )اَلَاۤ اِنَّ اَوْلِیَآءَ اللّٰهِ لَا خَوْفٌ عَلَیْهِمْ وَ لَا هُمْ یَحْزَنُوْنَۚۖ(۶۲)(  (  پ۱۱ ، یونس :  ۶۲) ترجَمۂ کنز الایمان : سن لو بے شکاللہکے ولیوں پر نہ کچھ خوف ہے نہ کچھ غم ۔

سوال      اولیائے کرام سے عداوت رکھنے والوں کے لیے حدیث میں کیا وعید آئی ہے ؟

جواب     حضرت ابو ہریرہرَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ سے مروی ہے کہ حضورِ اقدس صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے ارشاد فرمایا کہ اللہ تعالیٰ ارشاد فرماتا ہے : ’’جو میرے کسی ولی سے دشمنی کرے ، میرا اُس کے ساتھ اعلانِ جنگ ہے  ۔ “[6])

سوال      ولی کی علامت کیا ہے ؟

جواب     حدیثِ پاک  میں ہے  : ولی وہ ہے جس کو دیکھنے سے اللہ عَزَّ  وَجَلَّ یاد آئے ۔  (  [7])

سوال      خاص ولایت کن لوگوں کو حاصل ہے ؟

جواب     خاص ولایت (  اہلِ طریقت میں) ان لوگوں کے لئے مخصوص ہے جو فنا فِی الشیخ کے ذریعے فنافِی الرَّسول صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم ہو کر فنا فِی اللہہوگئے ۔  (  [8])

سوال      قرآنِ کریم سے اولیاءِ کرام کی کرامات بیان کیجئے ؟

جواب   قرآنِ پاک میں ولیوں کی کرامات کاذکر موجودہے ، مثلاً حضرت سیدتنا مریم رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہَاکے پاس بے موسم کے پھل آنے والا واقعہ ۔  (  [9]) حضرت سیدتنامریم رَحْمَۃُ اللہِ



[1]     پ۵ ، النساء : ۴۸ ، بنیادی عقائد اور معمولات اہلسنت ، ص۵۳ ، فتاوی رضویہ ، ۳۰ / ۷۹ ، ملتقطاً ۔

[2]     بنیادی عقائد اور معمولاتِ اہلسنّت ، ص۶۳ ۔

[3]     بنیادی عقائد اور معمولات اہلسنت ، ص۶۳ ۔

[4]     بنیادی عقائد اور معمولات اہلسنت ، ص۶۵ ۔

[5]     کفریہ کلمات کے بارے میں سوال جواب ، ص۵۵۱ ۔

[6]     بخاری ، کتاب الرقاق ، باب التواضع ، ۴ /  ۲۴۸ ، حدیث : ۶۵۰۲ ۔

[7]     مسند امام احمد ، من حدیث اسماءابنة یزید ، ۱۰ /  ۴۴۲ ، حدیث : ۲۷۶۷۰  ۔

[8]     آداب مرشد کامل ، ص ۱۲۵ ۔

[9]     پ۳ ، اٰل عمران : ۳۷ ۔



Total Pages: 122

Go To