Book Name:Ijtimai Sunnat e itikaf ka Jadwal

جاتا ہے اور وہ خواب میں اپنے سوہنے اور من موہنے آقا صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کی زیارت  سے بھی مشرف ہو جاتے ہیں،چنانچہ آپ کی ترغیب و تحریص کے لیے دعوتِ اسلامی کے زیرِ اہتمام ہونے والے 30دن کے اِجتماعی اعتکاف کی ایک مَدَنی بہار پیشِ خدمت ہے:

30 دن کے اِجتماعی اعتکاف میں سرکار کا  کرم

      مرکز الاولیا (لاہور)  کے مقیم اسلامی بھائی کے تحریری بیان کالُبِّ لُباب ہے کہ میں نے دعوتِ اسلامی کے تحت رمضانُ المبارک میں ہونے والے 30 روزہ اِجتماعی اعتکاف میں شرکت کی سعادت حاصل کی۔ جدول کے مطابق نمازِ فجرکے بعد کنزالایمان شریف سے تین آیات کا ترجمہ وتفسیر کا حلقہ لگایا گیا ،نمازِ اشراق و چاشت ادا کرتے ہی ہرطرف سے صدا بلند ہونے لگی:”سو جائیے اور مدینے کی یادوں میں کھو جائیے۔“ میں نے مدینہ شریف کا تصوّر کیا اور سنَّت کے مطابق لیٹ گیا، جونہی میری آنکھ لگی میں نے خواب میں دیکھاکہ بالکل فیضانِ مدینہ کی طرح معتکف اسلامی بھائیوں کے حلقے خانہ کعبہ شریف میں لگے ہوئے ہیں۔ہرطرف نور ہی نور ہے، اتنے میں کیا دیکھتا ہوں کہ ہمارے میٹھے میٹھے آقا، مکی مدنی مصطفےٰ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم ایک جانب سے تشریف لا رہے ہیں اور آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کے پیچھے پیچھے شیخِ طریقت، امیرِاہلسنَّتدَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ بھی آ رہے ہیں۔ میٹھے میٹھے آقا صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم ہر حلقے میں تشریف لے جاتے اور اسلامی بھائی اپنے آقا صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کے دیدار کا شربت پیتے۔آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کے لبہائے مبارکہ کوجنبش ہوئی ، پھول جھڑنے لگے، اَلفاظ کچھ یوں ترتیب پائے:”الیاس!تم نے یہ بہت اچھا کام کیا کہ اِن سب کو 30 دن کے لیے یہاں اِکٹھا کیا ہے،اللہ عَزَّوَجَلَّ  تم پرنظرِرحمت فرمائے۔

اَدائے مصطَفٰے کوادا کر لیجیے

     میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!جھوم جائیے اور اِجتماعی اعتکاف کے  فضائل وبرکات کو حاصل کرنے اور سرکار  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کی مبارک ادا کو ادا کرنے کے لیے آپ بھی ہمت کیجیے اور پورے رمضان کا اعتکاف کر لیجیے۔ ہمارے صحابۂ کرام عَلَیْہِمُ الرِّضْوَان پیارے آقا صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم  کی اداؤں کو کیسے ادا کیا کرتے تھے اس کی ایک جھلک ملاحظہ کیجیے چنانچہ حضرتِ سیِّدُنا عبدُ اﷲ ابنِ عمر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا ایک بارکسی مقام پر اونٹنی کے ساتھ پھیرے  لگا رہے تھے یہ دیکھ کر لوگوں کو تعجُّب ہوا۔ پوچھنے پر اِرشاد فرمایا:ایک بار میں نے مدینے کے تاجدار  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کو یہاں اسی طرح کرتے دیکھا تھا لہٰذا آج میں اِس مقام پراُسی ادائے مصطَفٰے کو ادا کر رہا ہوں۔  ([1])

آخِری عَشرے کا سنَّتِ  اعتِکاف

        آقا کی سنّتوں کے دِیوانو!اگر پورے ماہِ مبارک کا اعتکاف نہیں کر سکتے تو ہر برس ورنہ زندگی میں کم از کم ایک بار تو رَمَضان المبارَک کے آخِری عَشرے کا سنتِ  اعتکاف ہی کر لیجیے کہ ہمارے پیارے آقا  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم رمضان المبارک کے آخِری عَشرے کے اعتکاف  کا تو بَہُت زیادہ اہتِمام فرماتے ،یہاں تک کہ” ایک بار کسی خاص عُذرکے تَحت آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم رَمَضانُ الْمبارَک میں اعتِکاف نہ کرسکے تو شَوّالُ المکرَّم کے آخِری عَشرہ میں اعتِکاف فرمایا۔“ ([2])  ایک مرتبہ سفرکی وَجہ سے آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم  کا اعتِکاف رہ گیا تو اگلے رَمَضان شریف میں بیس دن کا اعتِکاف فرمایا۔ ([3])  آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کی اِس سنّتِ کریمہ کو زندہ رکھتے ہوئے اُمَّہاتُ المؤمنینرَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُنَّ بھی اعتِکاف فرماتی رہیں چُنانچِہ اُمّ الْمُؤمنین حضرتِ سَیِّدَتُنا عائِشہ صِدّیقہرَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہَا رِوایت فرماتی ہیں کہ نبیٔ کریم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم رَمضانُ المبارَک کے آخِری عَشَرَہ  (یعنی آخِری دس دن )  کا اِعتِکاف فرمایا کرتے۔ یہاں تک کہ اللہ عَزَّوَجَلَّ  نے آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کو وفات  (ظاہِری) عطا فرمائی۔ پھرآپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کے بعدآپصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ



1     الشفاء، فصل واما ورد عن السلف...الخ ، الجزء: ۲،  ص۱۵

2     بخاری ، کتاب الاعتکاف،  باب الاعتکاف   فی شوال ، ۱ /۶۷۱، حدیث:  ۲۰۴۱

3     ترمذِی، کتاب الصوم، باب ماجاء فی الاعتکاف...الخ ، ۲ /۲۱۲،  حدیث: ۸۰۳



Total Pages: 43

Go To